تازہ ترین

دنیا میں13کروڑ 51لاکھ لوگ کورونا سے متاثر

تاریخ    12 اپریل 2021 (00 : 12 AM)   


یو این آئی
واشنگٹن / /( یواین آئی ) دنیا میں کورونا وائرس ( کووڈ -19) کا قہر تھمنے کا نام نہیں لے رہا ہے۔ دنیا میں اس وبا سے 13.51 کروڑ سے زیادہ افراد متاثر ہوئے ہیں۔ امریکہ کی جان ہاپکنز یونیورسٹی کے سائنس اور انجینئرنگ سنٹر (سی ایس ایس ای) کی جانب  سے جاری تازہ ترین اعداد و شمار کے مطابق  دنیا کے 192 ممالک میں متاثرہ افراد کی تعداد بڑھ کر13.51 کروڑ سے زیادہ ہو گئی ہے جبکہ ابھی تک کورونا سے 29.26 لاکھ سے زیادہ افراد ہلاک ہوچکے ہیں۔ امریکہ میں کورونا وائرس کا قہر مسلسل ہولنکا ہوتا جا رہا ہے، یہاں متاثرہ افراد کی تعداد تین کروڑ 11 لاکھ سے تجاوز کر گئی ہے جبکہ پانچ لاکھ 61 ہزار 74 مریض 780 مریضوں کی موت ہو چکی ہے۔دنیا میں ایک کروڑ سے زیادہ کورونا  کیسز والے تین ممالک  میں شامل  برازیل  دوسرے نمبر پر ہے۔ یہاں 1,34,45,006 افراد کورونا وائرس سے متاثر ہوئے ہیں  اور تین لاکھ 51 ہزار 334 مریض اس وبا سے  ہلاک ہو چکے ہیں۔ فرانس انفیکشن کے معاملے میں چوتھے نمبر پر ہے۔ یہاں کورونا وائرس سے اب تک 50 لاکھ سے زیادہ افراد متاثر ہوچکے ہیں جبکہ 98,213 مریض فوت ہوچکے ہیں۔ اس کے بعد روس میں تقریباً 45.80 لاکھ افراد کورونا وائرس سے متاثر ہوچکے ہیں اور 100,949 افراد لقمہ اجل بن چکے ہیں۔برطانیہ میں کورونا وائرس سے متاثروں کی  مجموعی تعداد 43.82 لاکھ سے زیادہ ہوگئی ہے اور 1,27,324 افراد ہلاک ہوچکے ہیں۔ اٹلی میں متاثرہ افراد کی تعداد 37.54 لاکھ سے تجاوز کرچکی ہے اور 113,923 افراد لقمہ اجل بن چکے ہیں۔ترکی میں اب تک تقریبا 37.98 لاکھ افراد کورونا وائرس سے متاثر ہوچکے ہیں اور 33,702 افراد اپنی زندگی سے ہاتھ دھو بیٹھے ہیں۔ ابھی تک اسپین میں اس وبا سے 33.47 لاکھ سے زیادہ افراد متاثر ہوچکے ہیں اور 76,328 افراد لقمہ اجل بن چکے ہیں۔ جرمنی میں کورونا وائرس سے متاثرہ افراد کی تعداد 29.96 لاکھ ہوگئی ہے۔
 
 

چین : سنکیانگ کان میں سیلاب | 21کان کنوں کے پھنسنے کی اطلاع

بیجنگ //چین کے سنکیانگ علاقے میں تقریبا  1.2 کلومیٹر کی گہرائی میں واقع کوئلے کی کان میں 21 کان کنوں کے پھنسنے کی اطلاعات  ہیں۔ 29 کان مزدور ہفتے کے روز خودمختار خطے کے شمال میں چنگی کی کوئلے کی ایک کان میں کام میں مصروف تھے کہ اچانک کان میں سیلاب کا پانی بھر گیا۔ کان میں آنے والے سیلاب کے پانی میں اب بھی  21 کانکن پھنسے ہوئے  جبکہ  8 افراد بحفاظت نکال لئے گئے۔میڈیا نے مقامی ایمرجنسی سروسز کے حوالے سے بتایا ہے کہ امدادی کام جاری ہے۔ کان سے پمپ سیٹ کے ذریعے پانی نکالا جارہا ہے۔
 
 
 

ہسپتالوں میں داخل ہونے والوں میں |  مردوں کی نسبت خواتین کی تعداد زیادہ

لندن //کوویڈ - 19 سے متاثر ہو کر ہسپتالوں میں داخل ہونے والے 20 سے 39 سال عمر کے گروپ میں مردوں کی نسبت خواتین کی تعداد زیادہ تھی۔ سائنسی ایڈوائزری گروپ برائے ایمرجنسیز (سیج) کے تحت جمعہ کے روز شائع ہونے والی دستاویزات کے ایک مجموعے میں ماہرین نے بتایا کہ ہسپتال میں خواتین کی تعداد میں اضافے کا سبب کوویڈ -19 کے لئے بھی مثبت جانچ بشمول پیدائش اور حمل سے متعلق پیچیدگیاں بھی ہو سکتی ہیں۔  آکسفورڈ، ایڈنبرا اور لیورپول یونیورسٹیزکے ماہرین پر مشتمل سائنس دانوں نے یہ بھی کہا کہ وبا کے دوران برطانیہ میں زچگی کی شرح اموات میں اضافہ ہوا ہے، حالانکہ انھوں نے زور دے کر کہا ہے کہ کوویڈ۔ 19 ہی اس اضافہ کی واحد وجہ نہیں ہوسکتی۔ انہوں نے مزید کہا کہ مارچ 2020 تا فروری 2021 میں مائوں سے ہونے والی اموات کی شرح پچھلے حالیہ برسوں کے مقابلے میں کم از کم 20 فیصد زیادہ ہوسکتی ہے۔ ان میں بالواسطہ اموات بشمول خواتین کی ہسپتال جانے میں تاخیر یا حمل چھپانا شامل ہیں۔ یوکے اوبسٹیٹرک سرویلنس سسٹم (یوکے او ایس ایس) کا استعمال کرتے ہوئے مرتب کردہ ایک دستاویز، جس کے ذریعے حمل کی پیچیدگیوں کا قومی مشاہدہ ممکن ہوتا ہے۔