تازہ ترین

سکمز کے 4000ملازمین میں سے صرف 800نے ویکسین لیا

وائرس کے اثرات ختم کرنیکا واحد طریقہ علاج ویکسین: ڈاکٹر آہنگر

تاریخ    8 اپریل 2021 (00 : 01 AM)   


پرویز احمد
 سرینگر //شیر کشمیر انسٹی ٹیوٹ آف میڈیکل سائنسز صورہ کے ڈائریکٹر ڈاکٹر اے جی آہنگر نے کہا کہ کورونا وائرس کی دوسری لہر لوگوں کو کافی تیزی سے اپنا نشانہ بنارہی ہے اور اس سے بچنے کا واحد طریقہ کورونا مخالف ویکسین لینا ہے۔ ڈاکٹر آہنگر نے کہا کہ ویکسین کورونا وائرس کے اثرات کو کافی حدتک ختم کرتا ہے۔ عالمی یوم صحت کے موقع پر سکمز میں منعقد کی گئی تقریب پر ڈاکٹرآہنگر نے کہا کہ پچھلے ایک ماہ سے ایک مرتبہ پھر ایک سنگین صورتحال پیدا ہوئی ہے اور لوگ تیزی سے وائرس سے متاثر ہورہے ہیں۔ انہوں نے کہا ’’ گزشتہ سال کے آخر میں کورونا متاثرین کی تعداد میں کمی آئی لیکن لوگوں نے احتیاطی تدابیر کو اپنانے میں کوتاہی ، ماسک کے استعمال میں کمی اور سماجی دوری کو نظر انداز کیا ‘‘۔ڈاکٹر آہنگر کا کہنا تھا کہ ایسا محسوس ہورہا ہے کہ ایڈس، ٹی بی اور دیگروبائی بیماریوں کی طرح کورونا وائرس بھی ختم نہیں ہوگا،اسلئے ہم سب کو اس وائرس کے ساتھ  ہی جینا ہوگا‘‘۔ انہوں نے کہا ’’ کورونا مخالف ٹیکہ لگا کر ہم نہ صرف خود کو محفوظ رکھ سکتے ہیں بلکہ ہم اپنے دوستوں اور رشتہ داروں کو بھی وائرس سے پاک زندگی گزارنے میں مدد کرسکتے ہیں‘‘۔ انہوں نے لوگوں سے اپیل کی کہ وہ ویکسین لگا کر خود کو محفوظ رکھنے کے علاوہ احتیاطی تدابیر ماسک لگانا ، ہاتھ صاف کرنا اور سماجی دوری کو اپنے زندگی کا حصہ بنائیں کیونکہ اسی سے ہم وائرس کو شکست دے سکتے ہیں۔ اس موقع پر بتایا گیا کہ میڈیکل سائنسز صورہ کے 4000ملازمین میں سے صرف 800نے کورونا مخالف ویکسین لیا ہے‘‘۔ انہوں نے کہا کہ کورونا کی دوسری لہر کافی تیزی سے اس لئے سکمز میں کام کرنے والے ہر ملازم کو  ویکسین لگانا چاہئے کیونکہ یہ خود کو محفوظ رکھنے کا بہترین طریقہ ہے۔