ریکارڈ 812متاثر ، 6فوت

متوفین کی مجموعی تعداد 1273، جموں صوبے میں اچانک بڑا اچھال

تاریخ    8 اپریل 2021 (00 : 01 AM)   


پرویز احمد
 سرینگر //جموں و کشمیر میں کورونا وائرس کی دوسری لہر میں انتہائی تشویشناک حد تک شدت آرہی ہے اور متاثرین میں نا قابل یقین اضافہ ہورہا ہے۔پچھلے 24گھنٹوں کے دوران جموں و کشمیر میں  اب تک کا سب سے بڑا اچھال دیکھنے کو ملا جب متاثرین میں ایک دم سے812کا اضافہ ہوا اور اس دوران 6اموات بھی واقع ہوئیں۔متاثرین میں257سفر کرنے والے بھی شامل ہیں۔گذشتہ سال2020میں 6ماہ بعد 11ستمبر کو وائرس سے 875افراد متاثر ہوئے تھے جبکہ 9افراد جان گنوابیٹھے تھے لیکن بدھ کو اس سال میں پہلی مرتبہ متاثرین کی تعداد نے 800کا ہندسہ پارکیا ہے۔ اس دوران  43ہزار 875تشخیصی ٹیسٹ کئے گئے ۔ مثبت قرار دئے گئے 812افراد میں 465کشمیر جبکہ جموں صوبے میں اچانک بڑے اچھال کی وجہ سے بدھ کو وہاں 347افراد کی رپورٹیں مثبت آئیں ۔ کشمیر میں مثبت قرار دئے گئے  465افراد میں سے 377مقامی سطح پر جبکہ 88  سفر سے لوٹے ہیں۔ اس دوران  2افراد فوت ہوگئے۔ صوبے میں متوفین کی مجموعی تعداد 1273 جبکہ متاثرین کی تعداد 80ہزار774تک پہنچ گئی۔وادی میں مثبت قرار دیئے گئے465میں سرینگر کے 239  بارہمولہ میں78، بڈگام میں42، پلوامہ میں11، کپوارہ میں23، اننت ناگ میں 27،بانڈی پورہ میں17، گاندربل میں 11، کولگام میں8 اورشوپیان میں 9افراد شامل ہیں۔ جموں صوبے میں بدھ کو اچانک متاثرین کی تعداد میں بڑا اچھال آیا اور یہاں 24گھنٹوں کے دوران 347افراد متاثر ہوئے جن میں 178مقامی سطح پر جبکہ 169افراد مختلف ریاستوں اور ممالک سے جموں پہنچے تھے۔ جموں صوبے میں متاثرین کی تعداد 54ہزار کا ہندسہ پار کرکے 54ہزار 53ہوگئی ہے جن میں سے 745افراد فوت ہوئے ہیں۔ جموں صوبے کے54ہزار 53 میں1430سرگرم معاملات بھی شامل ہیں۔ جموں صوبے میں 347نئے معاملات درج ہونے والوں میں جموں میں138، ادھمپور میں 79، راجوری میں4، ڈوڈہ میں7، کٹھوعہ میں 29، سانبہ میں 11، کشتواڑ میں9، پونچھ میں 4، رام بن میں4 اور ریاسی میں62شامل ہیں۔ جموں و کشمیر میں متاثرین کی مجموعی تعداد 134827ہوگئی ہے جن میں 2018 فوت ہوگئے ہیں۔
 
 

بھارت میں کورونا کا قہر،ایک لاکھ 16ہزار مثبت

۔24گھنٹوں میں 630فوت

یو این آئی
 
نئی دہلی// بھارت میںگذشتہ 24 گھنٹوں کے دوران 1لاکھ  15ہزار 736افراد وائرس سے متاثر ہوئے ہیں جبکہ اس دوران مزید 630افراد فوت ہوگئے۔ یہ مارچ 2020کے بعد سب سے بڑی تعداد ہے جو 24گھنٹوں میں ریکارڈ کی گئی ہے۔ مرکزی وزارت صحت کے جاری کردہ اعداد و شمار کے مطابق ، ملک میں 1لاکھ15ہزار736 نئے کیس درج ہوئے ۔ اس کے بعد ، متاثرہ افراد کی کل تعداد ایک کروڑ 28 لاکھ ایک ہزار 785 ہوگئی ہے ۔ اس عرصے کے دوران 59ہزار856 مریض صحت مند ہوچکے ہیں ، اور اسطرح صحتیاب ہونے والے افراد کی کل تعداد 1لاکھ17لاکھ92ہزار135 مریض شامل ہیں جو ابھی تک اس بیماری سے شفایاب ہوچکے ہیں۔ فعال معاملات تقریباً 55ہزار250 کے اضافے کے بعد 8لاکھ43ہزار473 ہوگئے ہیں۔ اس عرصے میں ، اس بیماری سے مرنے والے افراد کی تعداد بڑھ کر 1،66،177 ہوگئی ہے ، اور مزید 630 مریضوں کی موت ہوگئی ہے ۔ مہاراشٹرا کورونا کے فعال مقدمات میں سرفہرست ہے اور گذشتہ 24 گھنٹوں کے دوران ریاست میں 20ہزار916 اضافے سے 473693 فعال واقعات ہوئے ہیں۔ اس عرصے کے دوران ، ریاست میں 34256 مزید مریض صحت مند ہوگئے  جنہوں نے مل کر کورونا کو شکست دینے والوں کی تعداد 2583331 تک پہنچ چکی ہے ، جبکہ 297 مزید مریضوں کی اموات کی تعداد بڑھ کر 56330 ہوگئی ہے ۔
 

 

ڈاکٹر فاروق سکمز سے رخصت

 عمر عبداللہ نے کورونا مخالف ویکسین لی 

پرویز احمد
 
سرینگر//نیشنل کانفرنس صدر ڈاکٹر فاروق عبداللہ کا کورونا ٹیسٹ دوسری بار مثبت آیا لیکن ڈاکٹروں نے انہیں صورہ اسپتال سے 5روز بعد گھر رخصت کیا۔ادھر عمر عبداللہ نے بھی سکمز میں کورونا مخالف ویکسین لی ۔ ڈاکٹر فاروق کا کورونا ٹیسٹ بدھ کو ایک بار پھر کیا گیا جو مثبت آیا۔سکمز صورہ میں نوڈل آفیسر ڈاکٹر غلام حسن یتو نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا ’’ انکی دوسری رپورٹ بھی مثبت ہے لیکن حالت مستحکم ہونے کی وجہ سے انہیں گھر روانہ کیا گیا ‘‘۔ انہوں نے کہا کہ کورونا رپورٹ کے بغیر انکے تمام ٹیسٹ ٹھیک ہیں، وہ گھر میں ہی قرنطین میں رہیں گے۔ ادھر   عمر عبداللہ نے سماجی رابطوں کی ویب گاہ پر ایک ٹیوٹ میں کہا’’ میں نے آج صبح کورونا ویکسین کی پہلی خوراک لی، میں اس کے لئے سکمز سے وابستہ تمام عملے کا مشکور ہوں‘‘۔
 

سرگرم معاملات 5000کے پار

وادی میں 224اور جموں میں 139اسپتالوں میں داخل

پرویز احمد 
 
 سرینگر //جموں و کشمیر میں پچھلے 12روز کے دوران سرگرم معاملات کی شرح میں 200فیصد سے زائد اضافہ ہوا ہے۔  25مارچ کو سرگرم معاملات کی تعداد 1593تھی، جن میں 1209کشمیر جبکہ 384جموں صوبے سے تعلق رکھتے تھے۔ مزید 3442افرادکے اضافہ کے ساتھ یہ تعداد 5000کا ہندسہ پار کرکے 5035تک پہنچ گئی ہے جن میں 1430معاملات جموں جبکہ 3605کشمیر میں سرگرم ہے۔ کشمیر کے سرگرم معاملات میں سرینگر میں 1817، بارہمولہ میں 665، بڈگام میں 361، پلوامہ میں 121، کپوارہ میں 113، اننت ناگ میں 119،بانڈی پورہ میں 94، گاندربل میں 70، کولگام میں 198 اورشوپیان میں 47افراد زیر علاج ہیں۔جموں صوبے کے 1430سرگرم معاملات میں ضلع جموں میں 874، ادھمپور میں 162، راجوری میں 41، ڈوڈہ میں 23، کٹھوعہ میں 109، سانبہ میں 51، کشتواڑ میں 10، پونچھ میں 30، رام بن میں27 اور ریاسی میں 103افرادشامل ہیں ۔ان سرگرم معاملات میں سے جموں میں 139جبکہ وادی میں 224افراد مختلف اسپتالوں میں زیر علاج ہیں۔سرینگر ضلع میں سب سے زیادہ تعداد ہے جو180ہے۔
 

تازہ ترین