سلیب

افسانچہ

تاریخ    7 مارچ 2021 (00 : 01 AM)   


الیاس مضمر متوی
"اکبربھائی مجھے کچھ مزدوروں کی ضرورت تھی۔ کیا آپ کچھ مزدور لا سکتے ہو، کافی دن ہوئی کوئی مانتا نہیں"
"جی میں کوشش کروں گا آج کل بہت زیادہ کام ہے اس لئے مزدور نہیں ملتے ہیں اگر کچھ انتظام ہوا تو میں بعد جمعہ لے کر آتا ہوں کیوں کہ جمعہ کے دن کوئی کام نہیں کرتا ہے"
"ٹھیک ہے اکبربھائی کچھ کیجئے میرے مکان کا سیلب رہ گیا۔ آگے موسم بھی خراب ہوگا اور بارشیں بھی ہونے والی ہیں"
دو روز بعد اکبر مزدروں کو لے کر حاضر ہوا۔
"جناب مزدور بڑی مشکل سے ملے۔ کافی منت سماجت کرنا پڑا۔ پانچ سو روپے دینے پڑے اور  ان کو میں نے وعدہ کیا ہے کہ سیلب کی تعمیر کے دوران چائے اور دن کا کھانا بھی دے دینگے۔ یہ ان کا ہیڑ ہے ان کو چائے پانی دیجئے اورمجھے بھی چائے پانی دیجئے"
"ٹھیک ہے اکبر بھائی آئندہ تو پہلے چائے پانی کا حساب کرنا پڑ گا، پھر اگر کچھ بچتا ہے تو آگے کا سوچنا پڑے گا"
شکیل کو اپنے آپ پر بہت غصہ آ رہا تھا کہ بنیاد سے لے کر سلیب میں آتے آتے وہ چائے پانی کو کیوں بھول گیا تھاجس کے بغیر کوئی کام نہیں ہوتا۔
 
 
 
 
موبائل نمبر؛ 9469732903
 

 

تازہ ترین