میرواعظ کی ممکنہ رہائی کا سیاسی و مذہبی جماعتوں کا خیر مقدم

تاریخ    5 مارچ 2021 (00 : 01 AM)   


سرینگر//اپنی پارٹی صدر سید محمد الطاف بخاری ، عوامی نیشنل کانفرنس کی صدر بیگم خالدہ شاہ ،  انجمن شرعی شیعیان صدرآغا سید حسن اور فریڈم پارٹی نے میر وعظ عمر فاروق کی رہائی کا خیر مقدم کیا ہے۔ ایک بیان میں الطاف بخاری نے کہاکہ دیر آئد درست آئد میر واعظ کی رہائی ایک اہم پیش رفت ہے جوکہ حالات کو مزید سازگار بنانے میں مدد دے گی۔ انہوں نے مانگ کی کہ وہ سیاسی کارکنان ،جو اس وقت جموں وکشمیر سے باہر کی جیلوں میں نظر بند ہیں خاص طور سے کورونا بحران کے پیش نظر ، اُنہیں آزاد کیاجائے۔ انہوں نے کہاکہ ’’یہ ہماری طویل عرصہ سے مانگ رہی ہے کہ تمام سیاسی کارکنان اور لیڈران کو بلا لحاظ سیاسی نظریات رہاکیاجائے تاکہ لوگوں کی مشکلات کم ہوں۔ اُن کی رہائی کورونا وبا کے پیش نظر مزید اہمیت کی حامل ہے جس سے اُن کے اہل خانہ کی مشکلات دوگنا کر دی ہیں۔ انہوں نے کہاکہ کویڈ19بحران نے بُری طرح سے سیاسی نظربندوں کے بنیادی انسانی حقوق کو متاثر کیا ہے جنہیں بغیر جرم یا ٹرائل کے محض شک کی بنا پر قید کیاگیاہے۔ ادھر بیگم خالدہ شاہ نے تمام سیاسی قیدیوں کو رہائی کا مودی سرکار سے اپیل کرتے ہوئے مزید کہا کہ جموں و کشمیر اور باہر کی جیلوں میں قید نظربندوں کو رہا کیاجائے ۔اس دوران  آغا سید حسن نے متحدہ مجلس علما ء کے صدر میر واعظ کشمیرعمر فاروق کی طویل نظر بندی کے خاتمے کا خیر مقدم کرتے ہوئے مطالبہ کیا کہ گزشتہ دو سال سے جن دینی اور حریت پسند جماعتوں پر قدغن عائد کی گئی ہے ،ان پر لگی پابندیوں کوبھی فوری طور پر ہٹایا جائے ۔ انہوںنے میر واعظ کشمیر کی طویل ترین خانہ نظر بندی کو مذہبی آزادی اور جمہوری اقدار کی بیخ کنی کی مثال قرار دیا۔دریں اثناء ڈیمو کریٹک فریڈم پارٹی نے سبھی سیاسی قیدیوں بشمول پارٹی کے محبوس چیئر مین شبیر شاہ کی فوری رہائی پر زور دیا ۔ ایک بیان میں فریڈم پارٹی کے قائمقام چیئر مین محمود احمد ساغر نے کہا کہ میرواعظ کی رہائی بے شک ایک ایسا اقدام ہے جس سے کشمیری عوام کو اطمینان حاصل ہوجائے گا۔
 

تازہ ترین