پروفیسر طلعت کی مختلف شعبوں کے سربراہوں کے ساتھ میٹنگ

تعلیمی اور تحقیقی سرگرمیوں کا جائزہ لیا

تاریخ    5 مارچ 2021 (00 : 01 AM)   


سرینگر // کشمیر یونیورسٹی کے وائس چانسلر پروفیسر طلعت احمد نے جمعرات کو یونیورسٹی میں جاری تعلیمی اور تحقیقی سرگرمیوں کا جائزہ لینے کیلئے تدریسی شعبوں کے سربراہان کے ایک اجلاس کی صدارت کی۔ انہوں کہا کہ کوڈ -19 کو پھیلنے کے بعد یونیورسٹی آن لائن طریقہ سے تدریس کی طرف راغب ہونے میں بہت تیزی سے کام کررہی ہے ۔پروفیسر طلعت نے کہا کہ انہیں یہ دیکھ کر خوشی ہوئی کہ زیادہ تر امتحانات پہلے ہی ہو چکے ہیں جبکہ دوسرے سمسٹروں میں کلاس ورک جاری ہے۔پروفیسر طلعت نے حال ہی میں تدریسی محکموں کے ذریعہ ہونے والے امتحانات کے ساتھ ساتھ آف لائن / آن لائن کلاسوں کی حیثیت کا بھی جائزہ لیا۔انہوں نے محکموں کے سربراہان کو ہدایت کی کہ وہ سیمیسٹر وار امتحانات / کلاسز کی تازہ ترین صورتحال کو ڈیوڈ آف اکیڈمک افیئر کے پاس جمع کروائیں تاکہ دوسرے سیمسٹروں کے لئے آف لائن ٹیچنگ کو دوبارہ شروع کرنے کے بارے میں کوئی فیصلہ لیا جا سکے ۔پروفیسر طلعت نے کہا کہ یونیورسٹی نے حال ہی میں یونیورسٹی ریسرچ اینڈ سائنسی ایکسی لینس (پرسیو) آف پروموشن آف پروگرام کے تحت پہلی بار 10 کروڑ روپے کی گرانٹ حاصل کی ہے۔ وائس چانسلر نے نیشنل ایجوکیشن پالیسی -2020 کی کلیدی دفعات پر بروقت عمل درآمد کی ہدایت بھی کی ، جس میں تعلیم اور تحقیق کے لئے بین الضابطہ اور مربوط طریقوں پر بہت زیادہ زور دیا گیا ہے۔ڈین آف اکیڈمک امور پروفیسر شبیر احمد بٹ نے اپنے ابتدائی ریمارکس میں کہا کہ یونیورسٹی کے اساتذہ اور طلباء کوویڈ 19 کی وجہ سے رکاوٹوں کے باوجود ، علمی اور تحقیقی سرگرمیوں کو جاری رکھے ہوئے ہیں ۔ڈین آف ریسرچ پروفیسر شکیل احمد رامشو نے یونیورسٹی میں جموں و کشمیر UT کے اندر اور اس سے باہر معاشرتی اور ماحولیاتی چیلنجوں سے نمٹنے کیلئے یونیورسٹی ریسرچ اورمختلف نئے اقدامات کی نشاندہی کی۔

تازہ ترین