نئی دہلی میں باغات کے نوجوان کی ہلاکت

لواحقین کا قتل کرنے کا الزام، انصاف دلانے کی مانگ

تاریخ    5 مارچ 2021 (00 : 01 AM)   


ارشاد احمد
سرینگر//نئی دہلی میں باغات سرینگر کے نوجوان کی ہلاکت کو قتل قرار دیتے ہوئے اہل خانہ نے غیر جانبدارانہ تحقیق کا مطالبہ کیا ہے۔ باغات سرینگر کے 28سالہ نوجوان عاقب رشید بٹ کی جنک پورہ نئی دہلی میں 2مارچ2021 کو پر اسرار موت واقع ہوئی تھی تاہم اہل خانہ کا کہنا ہے کہ عاقب کو قتل کر دیا گیا ۔ لواحقین نے عاقب کی ہلاکت کے خلاف احتجاج کرتے ہوئے مطالبہ کیا کہ قتل میں ملوث افراد کی جلد از جلد نشاندہی کرکے ان کے خلاف کارورائی کی جائے۔احتجاج میں شامل عاقب احمد بٹ کے اہل خانہ نے نئی دہلی کے پولیس کمشنر اور انسپکٹر جنرل پولیس کشمیر سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ اس معاملے میں ذاتی مداخلت کرکے قتل میں ملوث افراد کی جلد از جلد نشاندہی کرکے ان کے خلاف قانونی کارروائی عمل میں لائی جائے تاکہ انہیں انصاف مل سکے اور قتل میںملوث افراد کے خلاف کارروائی کی جائے۔ انہوں نے کہا کہ قتل میں ملوث افراد کی نشاندہی کرنی ضروری ہے تاکہ آئندہ ایسے واقعا ت پیش نہ آئیں۔ 
 

 الطاف بخاری کا اظہار تعزیت

 
سرینگر//اپنی پارٹی صدر سید محمد الطاف بخاری نے عاقب بٹ ولد عبدالرشید بٹ ساکن برزلہ باغات جونئی دہلی کے جنگ پورہ علاقہ میں مردہ پایاگیا، کی وفات پر گہرے دکھ اور صدمے کا اظہار کیا ہے۔بیان کے مطابق متوفی پارٹی کے سینئرورکر عبدالمجید بٹ کا بھتیجا تھا۔بخاری نے غمزدہ کنبے کے ساتھ ہمدردی کا اظہار کرتے ہوئے مرحوم کے ایصال ِ ثواب کیلئے دعا کی۔ الطاف بخاری کی ہدایت پر پارٹی لیڈر اور سرینگر میونسپل کارپوریشن کے کارپوریٹر راولپورہ محمد اشرف نے سوگوار کنبہ کے گھر جاکر پارٹی لیڈر شپ کی طرف سے تعزیت پرسی کی ۔ دریں اثناء الطاف بخاری نے پارٹی یوتھ لیڈر ظہور احمد میر کا رہامہ رفیع آبادکی وفات پر صدمے کا اظہار کیا ہے۔ متوفی پارٹی کے سینئرلیڈر محمد دلاور میر کا بھانجا تھا ۔ اُن کی موت کو ذاتی نقصان قرار دیتے ہوئے بخاری نے کہاکہ موصوف ایک شریف النفس شخص اور پارٹی کا قیمتی اثاثہ تھا۔ 
 

تازہ ترین