کیاجنگجویت کاخاتمہ ہوا ہے؟ | فاروق عبداللہ بنام لیفٹنٹ گورنروپولیس سربراہ

تاریخ    1 مارچ 2021 (34 : 12 AM)   


سیدامجدشاہ
جموں//سابق وزیراعلیٰ اور نیشنل کانفرنس کے صدرڈاکٹر فاروق عبداللہ نے اتوار کو لیفٹینٹ گورنر اور پولیس سربراہ سے سوال کیا کہ کیاجموں کشمیرمیں جنگجویت کاخاتمہ ہواہے؟مائیگرنٹ پنڈتوں کی طرف سے تالاب تلو میں منعقدہ ’شیوراتری ملن‘ تقریب کے حاشیہ پرصحافیوں سے بات کرتے ہوئے انہوں نے درگا ناگ مندر کے قریب ایک ڈھابا والے کے بیٹے کی ہلاکت سے متعلق پوچھے گئے ایک سوال کے جواب میں کہا،’’جو لوگ  پہاڑ کی چوٹی سے چیخ چیخ کرکہہ رہے ہیں کہ یہاں سب کچھ ٹھیک ٹھاک ہے اور یہاں سفیروں کو لاکر انہیں دکھایا کہ یہاں سب کچھ کیسا اچھا ہے،انہیں اس کا جواب دینا چاہیے ،نہ کہ فاروق عبداللہ کو‘‘۔انہوں نے مزیدکہا،’’یہ لیفٹینٹ گورنر کوجواب دینا ہوگاکہ کیایہاں جنگجویت کاخاتمہ ہوا ہے اور پولیس سربراہ کو جواب دیناچاہیے جوروزیہ کہہ رہے ہیں کہ یہ سب ختم ہوا ہے۔یہ فاروق عبداللہ نہیں جویہ کہہ رہا ہے‘‘۔چن چن کر ہلاکتوں کے بارے میں فاروق عبداللہ نے کہا،’’وہ ایساکرتے رہیں گے ۔یہ ختم ہونے والانہیں ہے کیوں کہ آپ اور میں کہہ رہے ہیں کہ یہ ختم ہونا چاہیے ۔یہ ختم نہیں ہوگا۔انہیں اس کی وجوہات کا پتہ لگانا چاہیے کہ یہ کیوں ہورہا ہے؟‘‘ایک سوال کا جواب دیتے ہوئے انہوں نے مزیدکہا کہ انہیں کوشش کرکے اس کے وجوہات کا علاج کرنا چاہیے ۔یہ ایک مریض ہے ۔میں کیسے  مریض کو دوادیئے بغیرکہہ سکتا ہوں کہ تم ٹھیک ہوجائوگے؟۔اس کا علاج یہ ہے کہ تم بیٹھو اور علاج ڈھونڈو،نہ کہ فاروق عبداللہ‘‘۔فاروق عبداللہ نے کہا کہ وہ کانگریس کو مضبوط دیکھنا چاہتے ہیں اور ملک میں تقسیمی عناصر کے خلاف متحد ہوکرجدوجہد کرتے دیکھنا چاہتے ہیں۔کانگریس پارٹی کو متحد ہوکرمضبوط ہوناچاہیے ۔لوگ کانگریس کی طرف دیکھ رہے ہیں۔
 

تازہ ترین