تازہ ترین

پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافہ تشویشناک:ساگر

تاریخ    28 فروری 2021 (00 : 01 AM)   


 سرینگر// نیشنل کانفرنس نے پیٹرولیم مصنوعات اور رسوئی گیس کی قیمتوں میں مسلسل ہورہے بے تحاشہ اضافہ پر شدید برہمی کا اظہار کیا ہے اور مرکزی حکومت کو ہدف تنقید بناتے ہوئے کہا کہ اپوزیشن میں رہنے کے دوران جس بھاجپا کے لیڈران آئے روز پیٹرول ، ڈیزل اور رسوئی گیس کی قیمتوں کولیکر سڑکوں پر احتجاجی مظاہرے کرتے پھرتے تھے ،وہیں لیڈران آج حکومت میں بڑے بڑے عہدوں پر فائز رہ کر پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے کی رہنمائی کررہے ہیں، جو بھاجپا کی دوغلی پالیسی کا عکاس ہے۔ پارٹی کے جنرل سکریٹری علی محمد ساگر نے ایک بیان میں کہا کہ حکومت کی بے حسی اور عوام کش پالیسی کا اندازہ  اس بات سے لگایا جاسکتا ہے کہ رسوئی گیس کی قیمتوں میں ایک ماہ میں 3بار اضافہ کرکے 100روپے کی قیمت بڑھائی گئی اور ایسے ہی مسلسل پیٹرول اور ڈیزل کی قیمتیں بڑھائی جارہی ہیں، جو زمینی سطح پر مہنگائی کا سبب بن کر عوام کیلئے وبالِ جان بن رہی ہے۔انہوں نے کہا کہ حکومت لوگوں کی راحت رسانی اور غربت کے خاتمے کیلئے جوبلند بانگ دعوے کررہی ہیں لیکن حکومتی پالیسی کو دیکھ کر معلوم ہوتا ہے کہ حکمران جماعت لوگوں سے پیسہ اینٹھ کر انہیں دو روٹی سے بھی محروم کرنے پر تلی ہوئی ہے۔ بھاجپا کی حکومت پیٹرولیم مصنوعات اور رسوئی گیس میں ایک ایسے وقت میں اضافہ کررہی ہے جب لوگوں کو راحت کی ضرورت تھی۔ جہاں ملک کے عوام خصوصاً خط افلاس سے نیچے زندگی بسر کرنے والے کووِڈ19 لاک ڈائون سے معیشی بدحالی کا شکار ہوئے ،وہیں جموںو کشمیر کو 5اگست2019کے بعد دوہرے لاک ڈائون اور سخت ترین کرفیو سے بہت زیادہ نقصان جھیلنا پڑا اور اس دوران یہاں کا ہر طبقہ بری طرح متاثر ہوا۔ علی محمد ساگر نے کہا کہ پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے کا براہ راست اثر غریب عوام پر پڑتا ہے اور پیٹرول، ڈیزل و رسوئی گیس کی قیمتوں میں اضافہ لوگوں کیلئے مشکلات کا سبب بن رہا ہے۔ 
 

تازہ ترین