تازہ ترین

چلہ بچہ جاتے جاتے برف و باراں دے گیا

چلوں کا موسم ایک سال کیلئے رخصت

تاریخ    28 فروری 2021 (00 : 01 AM)   


بلال فرقانی

 امسال چلہ کلان نے سردی کا 30سالہ ریکارڈ توڑا، چلہ خورد میں 13 سال بعد گرمی کا اضافہ

 سرینگر//وادی میں70دنوں پر محیط سلسلہ چلہ خاندان کا اقتدار آج ختم  ہوگیا ہے۔تاہم چلہ بچہ حسب روایت برف و باراںکیساتھ رخصت ہوا۔ ہر سال دسمبر کی 21تاریخ کو شرو ع ہونے والا 70روزہ چلوں کا سلسلہ رخصت ہوگیا ہے۔امسال کے چلہ کلاں نے 30برسوں کی سردی کا ریکارڈ توڑ دیا اور اس قدر سردی کا زور رہا کہ کئی کئی روز تک پینے کا پانی دستیاب نہیں ہوا کیونکہ پائپیں پھٹ گئیں، نل جم گئے، سردی کی لہر میں اضافہ ہوتا گیا،سورج بادلوں کی اوٹ میں چھپ گیا اور لوگ ٹھٹھرنے پر مجبور ہوئے۔ اتنا ہی نہیں بلکہ سرینگر میں پونے دو فٹ برف گری، جبکہ جنوبی کشمیر کے دیگر قصبوں میں 5فٹ تک برف پڑی اور بالائی علاقوں میں ریکارڈ توڑ برفباری ہوئی۔برفباری کے فوراً بعد 7جنوری سے وادی میں سردی کا قہر شروع ہوا جو 3فروری تک جاری رہا۔چلہ کلاں کے ابتدائی ایام میں خشک موسم ، درمیانی ایام میں بھاری برفباری و شدید ترین ٹھنڈ اور آخری ایام میںہلکی دھوپ کا جلوہ دکھانے کے بعد 70دنوں پر محیط ’ چلہ ایک سال کیلئے اختتام پذیرہوگیا ۔سرد موسم کا شہنشاہ کہلائے جانے والے چلہ نے اس مرتبہ اہل کشمیر کو ایسے پاپڑ جھیلنے پر مجبور کردیا جس کی عادت اب عام لوگوں کو نہیں تھی کیونکہ تقریباً ایک دہائی بعد شہر سرینگر اور وادی کے دوسرے تمام علاقوں میں لوگوںکو انتہائی شدید ترین سردی کے ساتھ ساتھ کہرے اور یخ بستہ ہوائوں کا سامنا بھی کرنا پڑاجبکہ برسوں بعد مشہور زمانہ جھیل ڈل ، نگین اور ولر کے ساتھ ساتھ دیگر آب گاہیں منجمد ہوئیں ۔ چلہ کلان کے 40دنوں کے دوران وادی میں بھاری برف باری ہونے کے نتیجے میں عام آدمی کو یخ بستہ ہوائوں اور ٹھنڈ کے ساتھ ساتھ روز مرہ چیزوں کی قلت کا سامنا بھی کرنا پڑا ۔جنوری کے مہینے میں چلہ کلاں کے دورانیہ میں درجہ حرارت منفی 8.8تک پہنچ گئی اور سردی کا30سالہ ریکارڈ ٹوٹ گیا۔یک فروری سے موسم یکسر تبدیل ہوا اور چلہ خورد دن میں کھلی دھوپ کی وجہ سے راحت کا سامان لیکر آیا۔ اس بار فروری کے مہینہ میں گرمی کا احسا س بھی ہوا اور گزشتہ13برسوں میں سب سے زیادہ گرمی فروری میں دیکھنے کو ملی ۔20دونوں پر محیط چلہ خورد بہترین اور خوشگوار انداز میں رخصت ہوا اور اب چلہ بچہ نے آخری روز رخصت ہونے سے قبل بالائی علاقوں کو دوبارہ سفید کیا اور میدانوں میں بارشیں برسائیں۔’ چلہ خاندان ‘‘ کے چشم وچراغ ’’چلہ بچہ ‘‘ نے بھی جاتے جاتے اپنی شرارت کی،اور  وادی کوبرف و باراں کے سپرد کرکے رخصتی لی۔