کورونا کے قواعد و ضوابط 31مارچ تک نافذ رہیں گے | مرکزی وزارت داخلہ کی جانب سے احکامات سادر

تاریخ    27 فروری 2021 (00 : 01 AM)   


نیوز ڈیسک
سرینگر //وزارت داخلہ نے کہا ہے کہ کورونا وائرس کی روکتھام کیلئے پہلے سے وضع قوائد و ضوابط 31مارچ تک نافذ رہیں گے۔وزارت داخلہ کی جانب سے جاری کئے گئے بیان میں کہا گیا ہے کہ ملک میں کورونا وائرس کے سرگرم معاملات اور نئے کیسوں میں کمی آئی ہے لیکن اس کے بائوجود بھی وائرس کو قابو میں رکھنے کیلئے احتیاط برتنے کی ضرورت ہے تاکہ عالمی وباء پر مکمل طور پر قابو پایا جاسکے۔ ملک کی تمام ریاستوں اور مرکزی زیر انتظام علاقوں کو مشورہ دیا گیا ہے کہ وہ ٹیکہ کاری کیلئے مقرر کئے گئے عہداف کو حاصل کرنے کیلئے ٹیکہ کاری کے عمل میں تیزی لائیں تاکہ وائرس کے پھیلائو کو روکا جاسکے اور وباء پر قابو پایا جاسکے۔ اسی طریقے سے متاثرہ علاقوں کی احتیاط کے ساتھ حد بندی کی جائے اور ان علاقوں میں کورونا وائرس سے نپٹنے کیلئے بنائے گئے قوائد و ضوابط کو سختی سے لاگو کریں۔ وزیر داخلہنے مزید کہا گیا ہے کہ معیاری ضابطہ اخلاق میں پابندی کی حوصلہ افزائی کی جائے ، جن کاموں کو کرنے کے چھوٹ دی گئی ہے ، اس دوران بھی معیاری ضوابطہ اخلاق ک سختی سے عمل کیا جائے۔ وزارت کی جانب سے جاری کئے گئے حکم نامہ میں مزید کہا گیا ہے کہ سخت نگرانی، روک اور قوائد و ضوابط کے علاوہ معیاری ضوابطہ اخلاق جو 27جنوری کو جاری کئے گئے تھے ، پر سختی سے عمل کرنے کی ضرورت ہے اور تمام ریاستوں اور مرکزی زیر انتظام علاقوں کو ان پر عمل کرنا چاہئے۔ جمعہ کو وزارت داخلہ  نے اپینے ایک حکم نامہ زیر نمبر کے حکم نامہ میں مزید کہا گیا ہے کہ نگرانی ، روک ، احتیاط اور دیگر اقدامات 31مارچ تک جاری رہیں گے۔ موجودہ قوائد و ضوابط کے تحت سینما ہال، تھیٹر کو مزید لوگ بیٹھانے کی اجازت دی گئی ہے جبکہ سومنگ پول کو بھی شروع کرنے کی اجازت دی گئی ہے۔ مختلف ریاستوں اور ریاست کے اندر سفر اور سامان لانے اور لیجانے اور مختلف ممالک میںزمینی تجارت پر کوئی بھی پابندی عائد نہیں ہے۔اس کاموں کیلئے کسی بھی اجازت نامہ کی ضرورت نہیں ہوگی۔ متاثرہ علاقوں کے باہر تمام قسم کی سرگرمیوں کی اجازت ہوگی سواء چند ایک کی جن کیلئے معیاری ضابطہ اخلاق پر عمل لازمی ہوگا۔ سمای ، مذہدبی، کھیل، تفریح، تعلیم ، کلچرل، مذہبی اجتماعات کو پہلے ہی صلاحیت کے 50فیصد تک بیٹھانے کی اجازت ہوگی جبکہ بند جگہوں پر زیادہ سے زیادہ  200افراد کو بیٹھنے کی اجازت ہوگی۔ ان اجتماعات کو ریاستوں اور مرکزی زیر انتظام علاقوں کی جانب سے وضع کئے گئے معیاری ضوابطہ اخلاق کے عمل آواری لازمی ہوگی۔ سینما ہال اور تھیٹروں کو پہلے ہی موجود صلاحیت کے50فیصد  بیٹھانے کی اجازت دی گئی تھی لیکن اب یہ مزید لوگوں کو بیٹھاسکیں گے ۔ اس حوالے سے حکم نامہ وزارت نشریات اور اطلاع  عامہ سے مشاورت کے بعد ہی جارکیا جائے گا ۔ وزارت نے مزید کہا ہے کہ سومنگ پولوں کو کھلاڑیوں کیلئے کھولا گیا ہے لیکن اب سومنگ پول تمام لوگ استعمال کرسکتے ہیں جبکہ اس کیلئے قوائد و ضوابط وزارت کھیل کے ساتھ بات چیت کے بعد جاری کئے جائیں گے۔ 
 
 
 

کورونا وائرس | 69نئے معاملات میں 28سفر کر کے لوٹے

پرویز احمد 
 سرینگر //جموں و کشمیر میں پچھلے 24گھنٹوں کے دوران کورونا وائرس کی تشخیص کیلئے 29ہزار 781ٹیسٹ کئے گئے جن میں سے 85افراد کی رپورٹیں مثبت آئیں لیکن 48گھنٹوں بعد جمعہ کو بڈگام میں ایک شخص وائرس سے فوت ہوگیا ہے۔ مثبت قرار دیئے گئے 85افراد میں سے 69کشمیر سے تعلق رکھتے ہیں جن میں سے 28بیرون ممالک سے سفر کرنے کے بعد وادی لوٹے ہیں جبکہ 41مقامی سطح پر وائرس سے متاثر ہوئے ہیں۔ 15فروری سے لیکر26فروری تک 945افراد کی رپورٹیں مثبت آئیں جن میں سے 742کشمیر سے تعلق رکھتے ہیں۔ ان 742متاثرین میں سے 440مقامی سطح پر متاثر ہوئے ہیں جبکہ 302متاثرین بیرون ریاستوں سے سفر کرنے کے بعد وادی لوٹے ہیں۔ جمعہ کو 48گھنٹوں کے بعد کشمیر میں ایک شخص کورونا وائرس سے فوت ہوگیا ۔ مرنے والے کا تعلق بڑگام ضلع سے ہے۔ بڑگام میں محکمہ صحت کے ایک سینئر ڈاکٹر نے بتایا کہ چاڈورہ سے تعلق رکھنے والا ایک 70سالہ معمر شخص کورونا وائرس سے سی ڈی اسپتال میں فوت ہوگیا ہے۔ متوفین کی مجموعی تعداد 1956ہوگئی ہے جن میں سے 1231کشمیر سے تعلق رکھتے ہیں۔ 
 

تازہ ترین