چند خواہشیں

افسانہ

تاریخ    7 فروری 2021 (00 : 01 AM)   


پرویز یوسف
زندگی اور موت کا رشتہ بھی کتنا عجیب رشتہ ہے۔انسان کو ساری زندگی صرف اس لیے جینا پڑتا ہے تاکہ ایک دن موت کا مزہ چکھ سکے اور پھر بالا آخر جب انسان کو موت آجاتی ہے تو اس کا سب کچھ اسی کے ساتھ چلا جاتاہے ،اس کے ارادے ،اس کی خواہشیں سب کچھ اس کے ساتھ دفن ہو جاتا ہے۔دراصل زندگی چھوٹی نہیں ہوتی مگر بے مروت ضرور ہوتی ہے ۔ یہ انسان کو اپنی الجھنوں میںاس طرح اُلجھاتی ہے کہ انسان کو ان الجھنوں سے باہر نکلنے میں عرصے لگ جاتے ہیں اور پھر یہی انسان جب ان الجھنوں سے باہر نکل کر اصل زندگی جینا شروع کرتا ہے تو پھر موت آکر اپنا ڈیرہ ڈال دیتی ہے اور اس طرح اس انسان کی زندگی شروع ہونے سے پہلے ہی اختتام کو پہنچتی ہے۔
میں اپنی زندگی کے سفر میں ایسے سینکڑوں لوگوں سے ملاہوں جنہوں نے زندگی کے سارے خواب تو پورے کر لیے تھے لیکن جب بھی ان خوشیوں میںجینے کی باری آئی توموت نے آکر ان کی کلائی پکڑ لی اور وہ سب کچھ یہیں چھوڑ کر دنیا کو خیر باد کہہ گئے لیکن ایک دن میری ملاقات نہایت دلچسپ قسم کے ایک انسان سے ہوئی جس کا نام واصی تھا۔وہ میرے آفس میں بطورِ ملازم کام کرتا تھا اور دیکھتے ہی دیکھتے ہم دونوں میں اچھی خاصی دوستی ہوگئی۔ہم دونوں ہی اکثر ایک دوسرے کے گھر آیا جایا کرتے تھے۔اس کا چھوٹا سا مگر خوش حال پریوار تھا۔دو چھوٹے چھوٹے بچے جو نہایت ہی معصوم اور کم سن تھے۔میں جب کبھی بھی ان کے گھر جاتا ،وہ مجھے دیکھ کر بہت ہی خوش ہوتے ۔مجھ سے اپنی چاکلیٹ مانگنے لگتے اور پھر دوبارہ اپنے کھیل میں مصروف ہو جاتے۔واصی اکثر ہی مجھ سے ان کے بارے میں باتیں کرتا ۔کہتا تھاکہ۔۔۔۔۔بھائی جان ایک بار یہ دونوں بچے ذرا بڑے ہوجائیں پھر دیکھے گاان کا ایک اعلیٰ اور بہترین مدرسے میں داخلہ کراوں گا۔یہ جب پڑھ لکھ کے بلوغت کو پہنچیں گے تو انہیں اعلیٰ تعلیم کے لیے ولایت بھی بھیجوں گا۔پھر ان کی شادی بھی تو کرانی ہے۔ہائے! کتنا کچھ کرنا باقی ہے ۔وہ ہنس کر کہا کرتا ۔میں بھی اس کے ارادے سن کر خوش ہوتا اور اس کے ان ارادوں کے پورا ہونے کی دعائیں دیتا تھا۔دھیرے دھیرے وقت گزرتا گیااور ہم دونوں کی تنخواہ میں کچھ اضافہ بھی ہو گیا۔ہم دونوں ہی اپنی اپنی ترقی پر بہت خوش تھے لیکن واصی کچھ زیادہ ہی خوش تھا ۔وہ من ہی من میں نہ جانے کیا سوچ کر مسکرا رہا تھا۔میں نے مسکرانے کی وجہ پوچھی تو اس نے بتایا کہ بھائی جان اب جاکر لگتا ہے کہ میرا اور میری بیوی کا خواب جلد ہی پورا ہوجائے گا۔کون سا خواب؟میں نے فوراََ پوچھ لیا۔اُس نے ایک سرد آہ کھینچی اور کہنے لگا بھائی جان ہمارے سارے رشتہ داروں کے پاس بڑی بڑی گاڑیاں اور بنگلے ہیں ۔اب فی الحال بنگلہ تو میں خرید نہیں سکتا لیکن میں اور میری بیوی چاہتے ہیں کہ ہمارے پاس بھی ایک گاڑی ہو۔میں نے اس بار ارادہ کر لیا ہے کہ میں بھی چھوٹی سی ایک گاڑی خریدوں گا ۔یہ کہہ کر  وہ جھومتا ہوا اپنے گھر کی اور چلا گیا میں نے بھی اپنے گھر کی راہ لی۔میں نہایت تھکا ہوا تھا اور آتے ہی میں اپنے بیڈ پر لیٹ گیا۔آنکھ لگنے ہی والی تھی کہ اچانک میرے فون کی گھنٹی بجنے لگی۔میں حیرت زدہ نگاہوں سے ادھر اُدھر دیکھنے لگا۔جیسے کسی نے مجھے گہری نیند سے جگایا ہو۔میں نے فون ہاتھ میں اٹھایا اور بات کرنے لگا ہیلو کون؟ میں نے تھکی ہوئی آواز میں کہا ۔جی میں واصی کی بیوی بول رہی ہوں ۔آپ کے دوست واصی صاحب کی گھر آتے وقت ایک ٹرک سے ٹکر ہونے کی وجہ سے موت ہوگئی ہے ۔آپ جلدی سے اسپتا ل پہنچئے ۔یہ سن کر میرے ہاتھوں سے فون خود بہ خود گر گیا۔مجھے وہ سارے ارادے ،وہ سارے خواب یاد آگئے جو اُس نے مجھ سے کہے تھے۔
کیا ہے یہ زندگی؟ کچھ بھی تو نہیں ۔واقعی زندگی کچھ حسین ارمانوں کے سوا کچھ بھی تو نہیں ۔انسان اپنے حساب سے اپنی زندگی کی پلاننگ کرتاہے لیکن اپنی ساری پلاننگ میں وہ اپنی موت کو شامل کرنا بھول جاتا ہے ۔میں اُٹھ کھڑا ہوا اور دوڑ کر اسپتا ل پہنچا تو دیکھا کہ اُس کی بیوی او ر دو معصوم بچے سہمے سہمے ایک کونے میں پڑے ہوئے تھے۔میں نے اُن سے کچھ نہ کہا اور سامنے پڑی واصی کی لاش سے چادر ہٹا کر دیکھنے لگا۔ سامنے وہی امیدوں سے بھرا ہوا چہرہ تھا،جس نے مجھ سے سینکڑوں ارادوں اور خوابوں کا ذکر کیا تھا۔ میری آنکھیں بھر آئیں ۔میں نے جھٹ پٹ مُردہ چہرے پر چادر واپس چڑھا دی ۔ایسا محسوس ہو رہا تھا کہ کسی نے اُن کے خوابوںکو شرمندہ تعبیر ہونے سے پہلے ہی زمین بوس کر دیا۔ 
دراصل یہی زندگی کی حقیقت ہے ۔ہم چاہے لاکھ پلاننگ کریں ،لیکن ہم ایک سیکنڈ تک کے لیے اللہ کے فیصلوں کے محتاج ہیں ۔مجھے آج یہ بات سمجھ آئی جس کا کبھی کبھی میں اور واصی مذاق اُڑایا کرتے تھے کہ’’ـ تقدیرپر کسی کا بس نہیں چلتا اور تقدیر میں جو چیز لکھی ہے وہ ہو کر ہی رہتی ہے۔بندہ لاکھ چاہے وہ تقدیر کے سامنے خندہ ہو جاتا ہے یہی زندگی کی حقیقت ہے اور سچائی بھی ۔ 
���
محلہ قاضی حمام بارہمولہ ،موبائل نمبر؛9469447331

تازہ ترین