کنگن میں کئی پنچایت گھرخستہ حال

تاریخ    24 جنوری 2021 (00 : 01 AM)   


غلام بنی رینہ
کنگن// کنگن کے مختلف مقامات پر 1990سے قبل تعمیر کی گئی ایم پی بی یعنی ملٹی پرپز عمارتیں تعمیر کی گئی تھیں جن کو پنچایت گھروں کے لئے استعمال میں لانا تھا لیکن یہ عمارتیں گذشتہ تیس برس کے دوران خستہ حال ہوچکی ہیںتو کئی عمارتوں پر اراضی مالکان نے معاوضہ نہ ملنے پر ان پر اپنا قبضہ جمایا ہے۔ بلاک کنگن میں 1990 سے قبل 18 عمارتیںتعمیر کی گئیں تاکہ ان عمارتوں کو پنچایتی گھروں کے لئے استعمال کیا جائے گا۔ اس وقت کی سرکار نے ان عمارتوں کے لئے کئی لوگوں سے اراضی حاصل کی تھی اور انہیں سرکار ی نوکریاں فراہم کرنے کا یقین دلایاگیا لیکن ان لوگوں کے مطابق عمارتیں تعمیر کرنے کے بعد نہ تو ان افرادکو نوکریاں دی گئیں اور نہ معاوضہ دیا گیا جس کے بعد بیشتر جگہوں پر کئی اراضی مالکان نے ان عمارتوں پرہی قبضہ کرلیا۔ان عمارتوں کوکروڑوں روپئے کی لاگت سے تعمیر کیا گیا۔ان پنچایت گھروں کو تعمیر کرنے کے لئے جن لوگوں سے اراضی حاصل کی گئی تھی انہیں معاوضہ نہیںدیا گیا اورنہ سرکاری نوکریاں دی گئیں۔ لوگوں نے مطالبہ کیا ہے کہ ان کے مطالبات کوپورا کیا جائے۔
 
 

تازہ ترین