تازہ ترین

گاگرہ کلی مستا سڑک دو دہائیوں سے تشنہ تکمیل ،لوگ عاجز آگئے

احتجاج کی دی دھمکی،حکام نے فوری حل نکالنے کی یقین دہانی کرائی

تاریخ    23 جنوری 2021 (00 : 01 AM)   


زاہد بشیر
گول//گول سب ڈویژن کے جمن گاگرہ روڈ پر قریب دو دہائیوں سے تعمیری کام چل رہا ہے لیکن ابھی تک یہ روڈ آمد و رفت کے قابل نہیں بنائی گئی ۔ پہلے قریباً پانچ کلو میٹر پی ڈبلیو ڈی کے تحت ہارہ علاقہ تک آتا ہے اور اُس کے بعد گاگرہ تک پی ایم جی ایس وائی کے سپرد ہے ۔اگر لوگوں کی مانیں تو قریباً اٹھارہ سال سے اس سڑک پر تعمیری کام چل رہا ہے لیکن ابھی تک گاگرہ تک نہیں پہنچی اور آدھے راستے ہی اراضی کی کٹنگ کر کے چھوڑ دیا ہے ۔ گزشتہ روز مقامی لوگوں نے علاقہ ہارہ کلی مستا میں شدید احتجاج کرتے ہوئے کہا کہ اگر روڈ کو جلد از جلد بحال نہیں کیا گیا تو اس کے نتائج بھیانک نکل سکتے ہیں کیونکہ یہاں کی عوام تنگ آمد بہ جنگ آمد پر ہی اب چل کر آگے کا لائحہ عمل طے کرے گی۔گاگرہ کلی مستا پنچایت کے سرپنچ احد اللہ مغل نے کشمیرعظمیٰ کے ساتھ بات کرتے ہوئے کہا کہ کافی عرصہ سے اس سڑک پر تعمیری کام چل رہا ہے لیکن ابھی تک قابل آمد و رفت نہیں بنائی گئی اور یہاں کلی مستا کے نزدیک گوڈری نالہ تک اگر چہ گاڑی آتی ہے لیکن تھوڑی سی بارش پڑنے پر گاڑیاں بند ہو جاتی ہیں ۔ سرپنچ کا کہنا ہے کہ اگر محکمہ اس گوڈی نالے میں کچھ کر کے عارضی پل بناتی تو لوگوں کو اسی فیصد راحت ملتی لیکن محکمہ ایسا نہیں کرتا ہے جس وجہ سے یہاں کی عوام دس بارہ کلو میٹر پیدل پہاڑیوں کا سفر کرنے پر مجبور ہے ۔ علاقہ گاگرہ کے معروف سماجی کار کن عبدالرحمان نے کہا کہ یہاں کی عوام تنگ آ چکی ہے ہمیشہ ہمارے ساتھ استحصال ہو رہاہے ۔ انہوں نے کہا کہ اگر ایک ماہ کے اندر اندر اس سڑک کو قابل آمد و رفت نہیں بنایا گیا تو حالات خراب ہوں گے اور نوجوان طبقہ سڑکوں پر آکر احتجاج کرے گا اور نوجوانوں نے دھمکی دی کہ اگر ہمیشہ جموں سرینگر نیشنل ہائے وے بھی بند کرنی پڑے گی اس سے گریز نہیں کیاجائے گا ۔ اس سلسلے میں جب کشمیر عظمیٰ نے  جب ایگزیکٹیو انجینئر پی ایم جی ایس وائی رام بن سے بات کی جو گوڈی نالہ کے مقام پر موجود تھے تو انہوں نے اس نالہ کا جائزہ لیا اور کہا کہ ہم کوشش کریں گے کہ ہم لوگوں کو یہاں پر عارضی پل بناکر دیں ۔ انہوں نے کہا کہ اگر چہ 2018ء مارچ میں اس سڑک پر اہم تین پلوں کے لئے ٹینڈر بھی نکلے تھے لیکن سپین بڑھ جانے کی وجہ سے ان پر تعمیری کام نہیں ہو سکا اور اب ہم نے دوبارہ منظوری کے لئے کاغذات بھیجے ہیں اور جوں ہی پلوں کے لئے اوپر سے منظوری آئے گی تو ہم پلوں پر تعمیری کام شروع کر دیں گے ۔
 

تازہ ترین