آزادی کے بعد پہلی بار گنوڑی کاہرہ کی عوام نے بجلی کا بلب جلایا | ایل جی کی ہدائت پر انتظامیہ نے 15 دنوں میں کام مکمل کیا، عوام میں خوشی کی لہر

تاریخ    18 جنوری 2021 (00 : 12 AM)   


اشتیاق ملک
ڈوڈہ //ڈوڈہ ضلع کی تحصیل کاہرہ واقع گنوڑی پنچائت ٹانٹا میں آزادی کے بعد سے آج پہلی بار لوگوں نے بجلی کا بلب جلایا۔بیس گھروں کو پر مشتمل آبادی نے بجلی کی فراہمی کے لئے پچھلے کئی دہائیوں سے درد ٹھوکریں کھائیں لیکن معاملہ جوں کا توں رہا۔ گزشتہ برس کے آخری ماہ میں مقامی لوگوں نے لیفٹیننٹ گورنر کے گریونس سیل میں شکائت درج کی جس کے بعد ایل جی انتظامیہ ضلع انتظامیہ پر مذکورہ دیہات میں ہنگامی بنیادوں پر بجلی پہنچانے پر دباؤ بنایا جو کہ آج مکمل ہوا۔ اس دوران ڈپٹی کمشنر ڈوڈہ ڈاکٹر ساگر ڈی ڈوئی فوڈے نے ضلع و سب ڈویڑنل انتظامیہ کے ہمراہ متاثرہ علاقہ کا دورہ کیا اور اپنی موجودگی میں گنوڑی میں بجلی کا بلب جلایا۔میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے ڈی سی نے کہا کہ ایل جی و چیف سیکرٹری کی ہدایات پر عمل درآمد کرتے ہوئے انتظامیہ نے ملحقہ دیہات میں بجلی پہنچانے کے لئے تمام تر وسائل کو بروئے کار لایا۔ انہوں نے کہا کہ ایس ڈی ایم ٹھاٹھری روزانہ بنیاد پر کام کی رپورٹ حاصل کرکے ڈی سی آفس کو مطلع کرتا تھا۔ ڈی سی نے کہا کہ جے پی ڈی سی ایل و شہلاکھا نامی کمپنی کے تعاون سے پندرہ دن میں بجلی کاکام مکمل کیا گیا۔اس موقع پر ایس ڈی ایم ٹھاٹھری اطہر آمین زرگر ،ایس ڈی پی او محمد نواز کھانڈے ،بی ڈی سی چئیرمین فاطمہ چوہدری کے علاوہ انتظامیہ کے دیگر آفیسران و پنچائتی نمائندگان بھی موجود تھے۔مقامی لوگوں نے خوشی کا اظہار کرتے ہوئے لیفٹیننٹ گورنر، چیف سیکرٹری و مقامی انتظامیہ کا شکریہ ادا کیا اور کہا کہ آخر کار ان کی فریاد کی شنوائی ہوئی۔ نوجوان سماجی کارکن بابر نفیس نے کہا کہ آج تک متعدد بار ہمارے بزرگوں نے بجلی کا خواب دیکھا لیکن ہر حکومت و انتظامیہ نے نظر انداز کیا اور آج جب معاملہ لیفٹیننٹ گورنر کی نوٹس میں لایا گیا تو اس کے بعد محکمہ بجلی و انتظامیہ حرکت میں آئی۔انہوں نے کہا کہ ابھی بھی درمن و دیگر موڑا جات کی آبادی بجلی سے محروم ہے تاہم ان کو امید ہے کہ لیفٹیننٹ گورنر کی ہدائت پر مذکورہ دیہات میں بجلی پہنچائی جائے گی۔
 

تازہ ترین