تازہ ترین

۔1961میں عوام کے نام وقف وادی کا دوسرا قدیم پاور ہائوس بیکار

۔ 15میگاواٹ گاندربل پروجیکٹ کی واٹر کنال کی مرمت کیلئے 12ڈیڈ لائنیں ختم

تاریخ    16 جنوری 2021 (00 : 01 AM)   


ارشاد احمد
سرینگر // وادی میں 1955 میں تعمیر کیا گیا 15میگاواٹ گاندربل پاور ہاوس پچھلے ایک سال سے ناکارہ ہے۔ گاندربل پروجیکٹ کیلئے بنائی گئی پانی کی کنال میں پچھلے سال دسمبر میں درارڑیںپڑگئی جس کے نتیجے میں یہ بند پڑا ہے۔ محکمہ بجلی کا کہنا ہے کہ اگر پانی کی کنال ٹھیک بھی ہو گی تو بھی صرف 4میگاواٹ بجلی ہی پیدا کی جاسکتی ہے۔گاندربل بجلی پروجیکٹ کو1961میں عوام کے نام وقف کیا گیا تھا۔ اس وقت بخشی غلام محمدریاست جموں کشمیر کے وزیر اعظم تھے۔پرنگ سے گاندربل پاور ہائوس کیلئے بنائی گئی پانی کی کنال قریب 12کلو میٹر لمبی ہے ۔ اس کنال میں سے ایک اور چھوٹی کنال بھی تعمیر کی گئی، جس پر رنگل واٹر ٹریٹمنٹ پلانٹ تعمیر کیا گیا ۔2019میں دسمبر کے مہینے میں ملشاہی باغ کے مقام پر پانی کی اس کنال کا ایک حصہ ڈھہ گیا جس کے نتیجے میں پاور ہاوس کی صلاحیت جو پہلے ہی 15میگاواٹ سے گھٹ کر 9میگاواٹ رہ گئی تھی، مزید گھٹ کر 2.5میگاواٹ رہ گئی ۔ ملشاہی باغ  کے نزدیک واٹر کنال کی مرمت کا کام محکمہ اری گیشن اینڈ فلڈ کنٹرول کو دیا گیا تھا لیکن ایک سال کا عرصہ گذر جانے کے باوجود متعلقہ محکمہ کی جانب سے کوئی کام نہیں کیا گیا۔متعلقہ محکمہ کی جانب سے 12ڈیڈ لائنوں کے بعداسکا پہلا مرحلہ جزوی طور پر ٹھیک کیا گیا،جس سے رنگل واٹر سپلائی پلانٹ جزوی طور بحال ہوگیا ہے۔رنگل واٹر پلانٹ سے شہر سرینگر میں 80فیصد آبادی کو پانی سپلائی ہوتا ہے۔معلوم ہوا ہے کہ کئی برس قبل پاور ہاوس کی 2مشینیں خراب ہو گئیں تھیں جس کے بعدیہ ناکارہ ہو چکا تھا ۔ اس کے بعد محکمہ نے اسے بحال رکھنے کیلئے مشینری کو پھر سے ٹھیک کیا اور بجلی پیدا کرنے کی کوشش بھی کی گئی لیکن کنال میں دراڑیں پیدا ہو نے سے پاور ہائوس ایک مرتبہ پھر ناکارہ ہوگیا ۔محکمہ بجلی کے جرنریشن ونگ سے وابستہ ایک اعلیٰ افسر نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا ’’ ہم اس پروجیکٹ سے ابھی بھی 4میگاواٹ بجلی لوگوں کیلئے دستیاب رکھ سکتے ہیں لیکن اس کیلئے اس کی کنال کا ٹھیک ہونا ضروری ہے‘‘۔انہوں نے کہا کہ محکمہ اری گیشن کنال کو مکمل طور پر ٹھیک کرنے میں تاخیر کر رہا ہے ۔معلوم رہے کہ گاندربل پاور ہائوس وادی کا دوسرا پرانا بجلی پیدا کرنے والا پروجیکت ہے۔ اس سے پہلے مہورا پاور ہاوس بنایا گیا تھا، جو تکنیکی اعتبار سے مکمل شاہکار تھا۔