تازہ ترین

ڈیڑھ لیٹر فی کنبہ تیل خاکی کی فراہمی | سرینگرکے صارفین کا اظہار برہمی

تاریخ    13 جنوری 2021 (00 : 01 AM)   


نیوز ڈیسک
سرینگر// محکمہ شہری رسدات،امور صارفین و عوامی تقسیم کاری کی جانب سے سردیوں کے اس موسم میں سرینگر کے صارفین کوڈیڑھ لیٹر فی کنبہ تیل خاکی فراہم کرنے کو سراسر نا انصافی قرار دیتے ہوئے لوگوں نے صوبائی کمشنر کشمیر سے مداخلت کرنے کی اپیل کی ہے۔ سرینگر سے تعلق رکھنے والے شہریوں نے منگل کو صوبائی کمشنر کشمیر پی کے پولے کی توجہ اس جانب مبذول کرائی ہے کہ شہری عوام کو ان سخت ترین سردیوں کے ایام میں صرف ڈیڑ ھ لیٹر تیل خاکی فراہم کیا جاتا ہے جبکہ دیگر دیہی علاقوں کے صارفین کو5سے6لیٹر فی کنبہ فراہم کیا جاتا ہے۔ کئی وفود نے کشمیر عظمیٰ کے دفتر پر آکر یہ شکایت درج کی کہ ان کے ساتھ سوتیلا برتائو کیا جا رہا ہے۔انہوں نے کہا کہ ان سرد ترین ایام مین بجلی کی آوجاہی معمول ہے اور اس کے باوجود بھی تیل خاکی اس قدر کم مقدار فراہم کی جاتی ہے کہ وہ مشکل سے ایک دن کا گزارا اس پر کر سکتے ہیں۔انہوں نے مزید کہا کہ سرینگر مین مالی بحران کا سب سے زیادہ اثر دیکھنے کو مل رہا ہے،اور اس پر ہر کوئی کنبہ رسوائی کے گیس پر اکتفا نہیں کرسکتا۔صارفین کے ان وفود میں پائین شہر کے علاوہ پانتھہ چوک،زعفران کالونی،بٹوارہ، زیون،بالہامہ،سونہ وار، سوئیہ ٹینگ،لسجن،پادشاہی باغ اور دیگر علاقوں سے تعلق رکھنے والے لوگ تھے۔انہوں نے اس معاملے میں صوبائی کمشنر سے اپیل کی کہ وہ از خود مداخلت کریں اور غریب شہری عوام کو ان سردیوں میں معقول تیل خاکی کا کوٹا فراہم کریں۔ان کا کہنا تھا کہ انہیں امید ہے کہ انکی فریاد رائیگاں نہیں جائے گی اور انتظامیہ اس معاملے میں معقول اور غریب پرور فیصلہ لے گی۔