تازہ ترین

صنعتی بستیوں کو بلا خلل بجلی رواں سال کے آخر تک یقینی بنائی جائے گی:دویدی

تاریخ    11 دسمبر 2020 (00 : 01 AM)   


سرینگر//کمشنر سیکرٹری صنعت و حرفت منوج کمار دویدی نے یہاں سول سیکرٹریٹ سرینگر میں وادی کے مختلف انڈسٹریل  اسٹیٹس کو فراہم کی جا رہی بجلی کی صورتحال کا جائیزہ لینے کیلئے متعلقہ افسروں کی میٹنگ طلب کی جس میں ناظمِ صنعت و حرفت کشمیر ، منیجنگ ڈائریکٹر جے کے پی ڈی سی ایل کشمیر ، چیف انجینئر پاور ڈسٹریبیوشن کشمیر شامل تھے ۔ دورانِ میٹنگ مختلف انڈسٹریل اسٹیٹس بشمول آئی ای اگلر شوپیاں ، آئی ای وسو  اننت ناگ ، آئی ای کھریو پلوامہ ، آئی ای ووین پلوامہ ، آئی ای محمود آباد ڈورو اننت ناگ ، آئی ای اشمجھی کلگام ، آئی ای ملون کلگام ، آ ئی ای کگام اور آئی ای گگرن شوپیاں کو فراہم کی جا رہی بجلی سے متعلق مفصل غور و خوض ہوا ۔ دوران میٹنگ بتایا گیا کہ آئی ای اگلر شوپیاں کیلئے بجلی کا ترسیلی کام جاری ہے جس کیلئے پہلے ہی 1.50 کروڑ روپے جی ایم ڈی آئی سی شوپیاں کو اب تک کئے گئے کام کے واجبات کی ادائیگی کیلئے واگذار کئے گئے ہیں ۔ کمشنر سیکرٹری نے افسروں کو آئی ای اگلر میں نئے قائم کئے جانے والے اور موجودہ صنعتی یونٹوں کو بجلی فراہم کرنے کے کاموں کو مکمل کرنے کیلئے کہا ۔ چیف انجینئر نے میٹنگ میں بتایا کہ اگلر پاور سٹیشن دسمبر 2020 کے تیسرے ہفتے میں چالو کیا جائے گا جبکہ آئی ای وسو کیلئے بجلی ٹرانسفارمر پہلے ہی چالو کیا گیا ہے اور آئی ای گگرن شوپیاں میں موجودہ بجلی کے بنیادی ڈھانچے کی توسیع کا کام جاری ہے ۔ میٹنگ میں کھریو ، ووین اور محمود آباد کیلئے بجلی کے کاموں کیلئے التوا میں پڑے پروجیکٹوں کے تحت مفصل پروجیکٹ رپورٹ اور رقومات مختص رکھنے پر جاری عمل پر بھی غور ہوا ۔ کمشنر سیکرٹری نے تمام انڈسٹریل اسٹیٹوں کو رواں مالی سال کے آخیر تک بجلی کی فراہمی یقینی بنانے کی متعلقہ حکام کو ہدایت دی تا کہ صنعتکار اپنے یونٹوں کی تعمیر کا کام شروع کر سکیں ۔