دبئی کے سپرمارکیٹ میں کشمیرکاشہرہ آفاق زعفران ٹیگ متعارف | متحدہ عرب امارات کے تاجر جون2021میں کشمیرکا دورہ کرنے پر متفق

تاریخ    10 دسمبر 2020 (00 : 01 AM)   


نیوز ڈیسک
دبئی //محکمہ زراعت اور باغبانی کے پرنسپل سیکرٹری نوین کمار چودھری نے کشمیر کے(جی آئی) ٹیگ کردہ زعفران کو متحدہ عرب امارات کے، اے ایل مایا سپر مارکیٹ ، دبئی میں لانچ کیا ۔ اب کشمیری زعفران دبئی کے اس مارکیٹ میں بھی دستیاب ہوگا ۔دبئی میں ایک تقریب اس تعلق سے منعقد ہوئی جس کی سربراہی متحدہ عرب امارات کے سپر مارکٹ گروپ کے ڈائریکٹر کمال واچانی کر رہے تھے۔معلوم رہے کہ جموں وکشمیر سے کسانوں ، کاشتکاروں ، تاجروں اور سرکاری عہدیداروں کا ایک وفد نوین چودھری کی سربراہی میں متحدہ عرب امارات میں India Food Security Summit, ، 2020 میں شرکت کیلئے گیا ہے ،تاکہ خلیجی منڈیوں میں یونین ٹیرٹری کی باغبانی کی پیداوار کو فروغ مل سکے ۔پرنسپل سکریٹری کے ساتھ اعجاز احمد بٹ ڈائریکٹر ہارٹیکلچر کشمیر، سید جہانگیر ہاشمی ایڈیشنل سکریٹری ہارٹیکلچربھی ہیں ۔ بھارت کے کونسلیٹ جنرل ڈاکٹر امان پوری سے ملاقات کے دوران انہوں نے کہا کہ بھارت بہترین معیار کے پھلوں اور کھانے کی مصنوعات کی درآمد کیلئے متحدہ عرب امارات کے ساتھ تجارتی معاہدوں کی تشکیل کیلئے تیار ہے ۔انہوں نے کہا کہ بھارت کے پاس بڑی کاشت شدہ اراضی ہے ، جو ترقی کا ایک بڑا محرک ہے ۔ڈاکٹر امان پوری نے کہا کہ خوراک کی تجارت میں متحدہ عرب امارات اور ہندوستان کی شراکت داری پورے مشرق وسطی اور شمالی افریقہ کے خطے میں غذائی تحفظ کو مستحکم کرسکتی ہے۔تقریب میں جموں وکشمیر کی ممتاز کاروباری شخصیات ، سرمایہ کاروں اور عوامی شعبہ کی تنظیموں کے نمائندوں نے بھی شرکت کی جن میں فاروق امین ، اویس الطاف بخاری ، عمر ترمبو  ، شاہجہاں ، سنجے پوری ، کلبھوشن کھجوریا ، شاہد کاملی ، مشتاق چایا ، میر خرم ، احسان جاوید ، ماجد وفائی ، شاہجہان ، منان ٹرمبو ، ایزہان جاوید بھی شامل ہیں جہاں انہوں نے کاروبار ، سرمایہ کاری اور تجارتی معاہدوں کے مواقع تلاش کئے ۔پرنسپل سکریٹری نے راؤنڈ ٹیبل کانفرنس کے دوران بتایا کہ دنیا میں سیب ،گیلاس ، اخروٹ ، باسمتی چاول اور زعفران کے علاوہ کشمیری بیکری کا کوئی جواب نہیں ہے۔ وفد نے دبئی چیمبر آف کامرس کے ساتھ ایک ’’نتیجہ خیز‘‘میٹنگ بھی کی ۔ال مایا گروپ ، متحدہ عرب امارات نے مزید تجارتی معاہدوں کو دیکھنے کے لئے جون 2021 کے مہینے میں کشمیر کا دورہ کرنے پر اتفاق کیا۔ متحدہ عرب امارات اور ہندوستان کا مقصد اگلے پانچ سالوں میں فوڈ پروڈکٹ منی فولڈ میں تجارت کے حجم میں اضافہ کرنا ہے۔
 

تازہ ترین