شوپیان کے شہری کا پی ایس اے کالعدم

تاریخ    3 دسمبر 2020 (00 : 01 AM)   


نیوز ڈیسک
سرینگر// جموں وکشمیر ہائی کورٹ نے بدھ کوجنوبی کشمیر کے شوپیان سے تعلق رکھنے والے ایک شخص کی نظربندی کو کالعدم قرار دیا اور حکام کو حکم دیا کہ وہ اسے فوری طور پر احتیاتی حراست سے رہا کریں۔جسٹس علی محمد ماگرے کی سربراہی والے بنچ نے حکام کو ہدایت کی کہ وہ آلائی پورہ شوپیاں کے وسیم احمد شیخ کو رہا کرے ۔انہوں نے  اپنے والد کے ذریعہ ڈپٹی کمشنر شوپیان کے 10 اگست2019  کے نظربندی حکم کو چیلنج کیا تھا۔ عدالت نے کہا’’ نظربندی کے حکم کے خلاف(نظربند)کو دئیے جانے والا قیمتی حق موثر نمائندی ہے‘‘۔۔ عدالت کی جانب سے کہا گیا ہے کہ ایسی موثر نمائندگی تبھی کسی (نظربند) کے ذریعہ کی جاسکتی ہے جب نظربندی کے حوالے سئے اس کونظربند کرنے والے حکام کی جانب سے متعلقہ بنیادوں تک رسائی دی جائے‘‘۔عدالت نے سپریم کورٹ اور متعدد اعلی عدالتوں کے فیصلوں کا حوالہ دیتے ہوئے کہا’’چونکہ یہ مواد ( نظربند) کو فراہم نہیں کیا جاتا ہے ، لہذا (نظربند) کے ذریعہ ایسی نمائندگی درج  نہیں کی جاسکتی اورور اس کے نتیجے میں نظربندی کے حکم کو پامال کیا جاتا ہے۔‘‘عدالت نے اپنے رجسٹرار جوڈیشل کو ہدایت کی کہ وہ تعمیل کے لئے متعلقہ ضلعی مجسٹریٹ شوپیاں اور جیل سپرنٹنڈنٹ کو فوری طور پر حکم پہنچائے۔
 

تازہ ترین