بھاجپا احتجاج کے خلاف نیشنل کانفرنس کارکنوں اور مقامی لوگوں کا جوابی مظاہرہ | بھٹنڈی میں مظاہرین کے خلاف 2 ایف آئی آر درج

تاریخ    26 نومبر 2020 (00 : 01 AM)   


سید امجد شاہ
جموں// جموں میں نیشنل کانفرنس کے صدر ڈاکٹر فاروق عبد اللہ کی رہائش گاہ کے باہر بی جے وائی ایم (بی جے پی کے نوجوان ونگ) کارکنوں کے ایک گروپ نے احتجاجی مظاہرہ کیا جس کے رد عمل میں مقامی لوگوں اور این سی کارکنوں نے بھی احتجاج شروع کردیا۔تاہم پولیس کی فوری کارروائی نے صورتحال کوبے قابو ہونے سے روک لیا ۔ایس ڈی پی او نروال نے بتایا کہ پولیس نے دو ایف آئی آر درج کی ہیں جن میں سے ایک بی جے وائی ایم کارکنوں کے 6 ارکان کے خلاف اور دوسری ایف آئی آر غیر قانونی طور پر جمع ہوئے مقامی مظاہرین کے خلاف ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ انہوں نے دونوں ایف آئی آر میں تفتیش شروع کردی ہے تاہم یہ جرم ضمانت کے قابل تھا۔ناخوشگوار واقعات سے بچنے کے لئے بٹھنڈی اور اس کے اطراف میں پولیس کی بھاری نفری تعینات کردی گئی ہے اور گاڑیاں چیک کی جارہی ہیں اور بیرونی افراد کو علاقے میں داخل ہونے کی اجازت نہیں ۔ قبل ازیں ایک گلی سے بی جے وائی ایم کا ایک گروپ داخل ہوااور اچانک ڈاکٹر فاروق عبد اللہ کی رہائش گاہ کے قریب حاضر ہوکر نعرے بازی شروع کردی۔اس دوران قریبی علاقوں کے مقامی لوگوں اور نیشنل کانفرنس کارکنوں نے بھی جواباًاحتجاج شروع کردیا جس سے علاقے میں تناؤ پیدا ہوا۔ تاہم پولیس نے بروقت مداخلت کی اور بی جے وائی ایم رہنماؤں کو صدر سمیت حراست میں لیا اور انہیں متعلقہ تھانے منتقل کردیا جبکہ مقامی لوگوں نے مکہ مسجد چوک کی طرف احتجاجی مارچ نکالا۔ بعد میں وہ پرامن طور پر منتشر ہوگئے ۔ڈاکٹر فاروق عبداللہ کی رہائش گاہ کے باہر یہ دوسرا احتجاج تھا۔ اس سے قبل اے بی وی پی کے ذریعہ جموں میں پی اے جی ڈی کے دورے کے خلاف ایک مظاہرے کا انعقاد کیا گیا تھا۔
 

تازہ ترین