تازہ ترین

آج بھی وادی کے بالائی علاقوں میں ہلکی برف باری کاامکان

جمعرات سے موسم کچھ دن تک خشک رہنے کی توقع

تاریخ    25 نومبر 2020 (00 : 01 AM)   


اشفاق سعید
سرینگر //پیر پنچال کے آر پار منگل کو متعدد علاقوں میں وقفے وقفے سے برف وباراں کا سلسلہ دوسرے روز بھی جاری رہا، جبکہ محکمہ موسمیات نے بتایا کہ اس طرح کا سلسلہ بدستور آج بھی جاری رہنے کا امکان ہے۔ اس دوران مغل روڑ ، بانڈی پورہ گریز ، سرینگر لداخ اور کرناہ کپوارہ کی سڑکیں  دوسرے روز بھی بند رہیں۔ یاد رہے کہ برف باری اور بارشوں کا پہلا مرحلہ 16اور17نومبر کی درمیانی رات کو شروع ہوا تھا اور برف باری کا تیسرا مرحلہ ابھی جاری ہے اور وادی کے بیشتر بالائی علاقوں میں گزشتہ 36 گھنٹوں کے دوران درمیانہ درجے سے لیکر بھاری برف باری ہوئی۔محکمہ موسمیات کا کہنا ہے کہ شمالی کشمیر میں واقع وادی کشمیر کے مشہور ومعروف سکی ریزاٹ گلمرگ میں رات کے وقت 7 انچ تازہ برف باری ریکارڈ کی گئی جبکہ جنوبی کشمیر میں واقع سیاحتی مقام پہلگام میں6 انچ برف باری ریکارڈ کی گئی۔انہوں نے کہا کہ بالائی علاقوں میں برف باری کی اطلاعات ہیں جن میں سرینگر۔ لہیہ شاہراہ پر واقع سونہ مرگ ۔ زوجیلا شامل ہے جو وادی کو لداخ سے جوڑتی ہے۔
انہوں نے کہا ہے کہ وقفے وقفے سے ہلکی بارش اور برف باری بدھ کی سہ پہر تک جاری رہے گی۔اس کے بعد موسم میں بہتری اور جمعرات سے موسم کچھ دن تک خشک رہنے کا امکان ہے۔کنگن سے نمائندے غلام نبی رینہ کے مطابق سیاحتی مقام سونہ مرگ، زوجیلا اور اس کے مضافات میں دوسرے روز بھی ہلکی برفباری کا سلسلہ وقفے وقفے سے جاری رہا جس کی وجہ سے سرینگر لداخ شاہراہ دوسرے روز بھی ٹریفک کی نقل و حمل بند رہی، تاہم دراس سے سونہ مرگ کی طرف صرف فوج کی سو سے زائد فور بائی فور گاڑیاں روانہ ہوئی۔ ٹریفک پولیس ذرائع نے بتایا کہ برفباری کی وجہ سے کسی درماندہ گاڑی کو دراس سے سرینگر اور سونہ مرگ سے کرگل کی طرف روانہ ہونے کی اجازت نہیں دی گئی اور شاہراہ کے دونوں طرف سینکڑوں گاڑیاں درماندہ ہیں۔ ایس ایچ او پولیس سٹیشن دراس منظور حسین میر نے کشمیر عظمیٰ کو شام دیر گئے بتایا کہ دراس سے سونہ مرگ کی طرف ایک سو سے زائد فوجی گاڑیوں کو روانہ کیا گیا اور یہ سب فوجی گاڑیاں فور بائی فور تھیں اور ان کو صبح گیارہ بجے یہاں سے سونہ مرگ کی طرف روانہ کیا گیا تھا۔ انہوں نے بتایا کہ اس دوران کسی بھی درماندہ گاڑی کو یہاں سے سرینگر کی طرف روانہ نہیں کیا گیا  ۔سونہ مرگ میں ڈیڑھ فٹ، زوجیلا ڈیڑھ فٹ، گگن گیر چار انچ اورگنڈمیں تین انچ برفباری ریکارڈ کی گئی  ۔کپوارہ سے اشرف چراغ نے اطلاع دی ہے کہ محکمہ موسمیات کی پیشن گوئی کے عین مطا بق پیر کی صبح سے ہی بالائی علاقو ں میں برف باری اور میدانی علاقوں میں بارشو ں کا سلسلہ شروع ہوا جو منگل کو دوسرے روز بھی جاری رہا ۔ضلع کے بالائی علاقوں میں جن نستہ چھن گلی (سادھنا ٹاپ )پراڑھائی ،زیڈ گلی مژھل 2،کیرن کی فرکیاں گلی پر 2 فٹ تازہ برف ریکارڈ کی گئی ہے جبکہ جمہ گنڈ اور بڈنمل علاقوں میں بھی جم کر برف باری ہوئی جس کے نتیجے میں ان علاقوں کو جانے والی سڑکیں گا ڑیو ں کی آمد و ورفت کے لئے بند کر دی گئی ہیں ۔ضلع کے کیرن ،مژھل اور کرناہ کی سڑکو ں کو اگرچہ گزشتہ بھاری برف باری کے بعد گا ڑیو ں کی آمد ورفت کیلئے کھو ل دیا گیا تھا تاہم ایک روز کے وقفے کے بعد یہ سڑکیں تا زہ برف باری کی وجہ سے دوبارہ بند ہو گئی ہیں ۔ضلع میں بھاری برف باری کی وجہ سے درجہ حرارت میں نمایا ں کمی واقع ہوئی ہے جس کی وجہ سے لوگو ں نے اپنے کی گھرو ں میں بیٹھنے کو ترجیج دی ہے ۔بانڈی پورہ میں سرحدی قصبہ گریز اور اس کے ملحقہ علاقوں میں تقریبا تین سے چار فٹ برف جمع ہونے کی وجہ سے 14 نومبر سے وادی کے باقی حصوں سے منقطع رہا۔راز دان پاس کے قریب 1.5فٹ برفباری ہوئی ہے جبکہ داور اور تلیل ویلی میں ایک فٹ برفباری ہوئی ہے ۔حکام کے مطابق موسم میں بہتری کے بعد ہی رابطہ سڑکیں کھولنے کے حوالے سے حتمی فیصلہ لیا جائیگا اور امید ہے کہ بانڈی پورہ ۔گریز روڑ کو بہت جلد کھو لا جائیگا ۔اس دوران محکمہ موسمیات کا کہنا ہے کہ آج بھی وادی کے بالائی علاقوں میں برف باری اور میدانی علاقوں میں بارشوں کے ساتھ ہلکی برف باری ہو سکتی ہے اور کل سے 2دسمبر تک وادی میں موسم خشک رہے گا ۔