تازہ ترین

پسیاں گر آنے کے باوجود سرینگر جموں شاہراہ پر ٹریفک جاری رہا

لیہہ شاہراہ، مغل روڈ،بانڈی پورہ گریزسڑک بند

تاریخ    24 نومبر 2020 (00 : 01 AM)   


محمدتسکین+سمت بھارگو+غلا م نبی رینہ+شاہدٹاک
سرینگر// برفباری اور بارشوں کے باوجود سوموار کو سرینگر جموں شاہراہ پرٹریفک کی آمد ورفت جاری تھی تاہم وادی کشمیر کو لداخ کے ساتھ جوڑنے والی سری نگر –
لیہہ شاہراہ اور جنوبی کشمیر کو صوبہ جموں کے ضلع پونچھ اور راجوری کے ساتھ جوڑنے والا تاریخی مغل روڈ پیر کے روز تازہ برف باری کی وجہ سے ٹریفک کی نقل وحمل کے لئے بند کر دئیے گئے۔ سوموارصبح سے ہی جواہر ٹنل کے دونوں طرف برفباری اور رام بن بانہال سیکٹر میں بارشوں کا شروع ہوا سلسلہ شام تک جاری تھا تاہم جموں سرینگر شاہراہ پر گاڑیوں کی آمدورفت بغیر کسی خلل کے جاری تھی۔ تاہم شاہراہ پر جموں سے مسافر اور کشمیر میں الیکشن ڈیوٹی کیلئے لائے جارہے سیکورٹی فورسز گاڑیوں کو ہی چلنے کی اجازت تھی۔  بارشوں کی وجہ سے رام بن اور بانہال کے درمیان رام بن، سلاڑھ، پنتھیال اور بیٹری چشمہ کے مقامات پر اِکا دُکا پتھرگرتے رہے، تاہم وہاں تعینات عملہ مشینری کی مدد سے گرتے پتھروں کو وقفے وقفے سے صاف کرکے سڑک کوٹریفک کیلئے بحال کرتے رہے۔ ٹریفک ذرائع نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ شاہراہ کئی مقامات پر گرتے پتھروں اور جواہر ٹنل کے دونوں طرف ہلکی ہلکی برفباری کے باوجود شاہراہ پر گاڑیوں کی آمدورفت پیر شام 6 بجے تک جاری تھی تاہم پیر دوپہر دو بجے بعد ادہمپور اور نگروٹہ میں ٹریفک کو روک دیا گیا تھا۔ انہوں نے کہا کئی مقامات پرپتھر گر رہے ہیں اور مسافروں کو منگل کے روز سفر نہیں کرنا چاہئے۔ اس دوران ٹریفک حکام نے 434کلو میٹر طویل سرینگر لداخ شاہراہ کو احتیاطی تدابیر کے طور پر گاڑیوں کی آمدورفت کو بند کردیا ، شاہراہ کے دونوں طرف سینکڑوں گاڑیاں درماندہ ہیں۔ڈی ایس پی ٹریفک پولیس گاندربل فہیم علی نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ تازہ برفباری اور سڑک پر پھسلن پیدا ہوجانے کے نتیجے میں سرینگر لداخ شاہراہ کو احتیاطی طور گاڑیوں کی آمدورفت کیلئے بند کردیا گیا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ اس وقت سونہ مرگ میں 100 مال بردار ٹرک، 6ٹینکر اور 5مسافر بردار گاڑیاں جن میں 15مسافر موجود ہیں اور جو مزید گاڑیاں سرینگر سے سونہ مرگ کی طرف آر ہی ہیں ان کو گگن گیر کے مقام پر روک دیا گیا ہے۔ اس دوران اس بار صوبائی انتظامیہ نے کم از کم وقت تک لداخ شاہراہ کو کھلا رکھنے کیلئے اقدامات کئے ہیں جس میں بیکن کو متحرک رکھا گیا ہے۔خراب موسمی صورتحال کے سبب تاریخی مغل روڈ کے ساتھ ساتھ راجوری کی دیرہ گلی روڈ بھی بند ہوگئی ہے۔ٹریفک پولیس حکام نے بتایا کہ پیر کے روز صبح سویرے مغل روڈ کے علاقے میں تازہ برف باری کا آغاز ہوا جس کی وجہ سے سڑک بند ہوگئی۔حکام نے بتایا’’فی الحال پیر کی گلی کے قریب ایک فٹ کے قریب برف جمع ہے جس کی وجہ سے سڑک کو مکمل طور پر بند کردیاگیا ہے‘‘۔انہوں نے مزید بتایا کہ پوشانہ آرمی چیک پوسٹ پر برف کی سطح چار انچ کے لگ بھگ ہے جہاں سے مزید سفر کے لئے سڑک بند ہے۔قابل ذکر ہے کہ مغل روڈ کو گذشتہ پیر کو چار دن کے وقفے کے بعد ٹریفک کے لئے بحال کردیا گیا تھا کیونکہ یہ برفباری کی وجہ سے پہلے بند ہوگئی تھی۔دوسری طرف راجوری کی تھنہ منڈی سب ڈویژن اور پونچھ کے سرنکوٹ سب ڈویژن کے مابین دیرہ گلی روڈ بھی بند ہوگئی ہے ۔پولیس حکام نے بتایا کہ پیر کے دوپہر ڈی کے جی میںبرف باری کا آغاز ہوا اور اس وقت سڑک پر تقریباًتین سے چار انچ برف جمع ہے۔تھنہ منڈی سب ڈیویژن کے ایک پولیس افسر نے بتایا’’سڑک منیال گلی سے لے کر بفلیاز تک بند کردی گئی ہے‘‘۔حکام نے پیر کو بتایا کہ تازہ برفباری کے بعدبانڈی پورہ گریز سڑک کو ایک بار پھر سے گاڑیوں کی آمد و رفت کیلئے بند کیا گیا ہے۔ایس ڈی ایم گریز کے مطابق بانڈی پورہ ،گریز روڑ کو برفباری کی وجہ سے بند کردیا گیا ہے۔