تازہ ترین

جوکووچ اور نڈال باہر، تھیم اور میدویدیف میں خطابلی مقابلہ

تاریخ    23 نومبر 2020 (00 : 12 AM)   


نیوز ڈیسک
لندن/ دنیا کے نمبر ایک کھلاڑی سربیا کے نوواک جوکووچ اور نمبر دو اسپین کے رافیل نڈال سنیچر کے روز سیمی فائنل میں ہار کر باہر ہوگئے اور سال کے آخری ٹینس ٹورنامنٹ اے ٹی پی ورلڈ ٹور فائنلس کا خطابی مقابلہ آسٹریا کے ڈومنک تھیم اور روس کے ڈینیل میدیویدیف کے مابین کھیلا جائے گا۔ یو ایس اوپن چیمپئن تھیئم نے زبردست کارکردگی کا مظاہرہ کرتے ہوئے جوکووچ کو سخت مقابلے میں 7-5, 6-7 (10), 7-6 (5) سے ہرایا ۔ اسی شکست کے ساتھ نڈال کا 16 برسوں میں پہلی مرتبہ یہ خطاب جیتنے کا خواب پھر ٹوٹ گیا۔جوکووچ نے سابق چیمپئن جرمنی کے ایلکزینڈر جیوریف کو 6-3, 7-6 (4) سے شکست دے کر نویں مرتبہ اس ٹورنامنٹ کے سیمی فائنل میں جگہ بنائی تھی لیکن تھیئم نے آخری چار میں دو گھنٹے 54 منٹ میں جوکووچ کا چیلنج توڑ دیا ۔ تھیئم اس طرح پچھلے چار برسوں میں پہلے ایسے کھلاڑی بنے ہیں جو مسلسل چیمپئن میں خطابی مقابلے میں پہنچے ہیں۔ تھیئم کی یہ 300 ویں اے ٹی پی ٹور جیت ہے اور جوکووچ کے خلاف پانچویں جیت ہے ۔ جوکووچ 13 ویں مرتبہ اس ٹورنامنٹ میں کھیل رہے تھے اور نویں مرتبہ سیمی فائنل میں پہنچے تھے ۔ ٹاپ سیڈ جوکووچ اس ٹورنامنٹ میں سوئزرلینڈ کے راجر فیڈرر کے ریکارڈ چھٹے خطاب کی برابری کرنے سے دو جیت دور تھے لیکن وہ آخر میں خطاب سے دور ہی رہ گئے ۔ دنیا کے نمبر ایک کھلاڑی جوکووچ کو تھیئم سے پہلے سال گروپ میچ میں شکست کا سامنا کرنا پڑا تھا اور اس مرتبہ وہ تھیئم سے سیمی فائنل میں ہار گئے ۔ دنیا کے نمبر تین کھلاڑی تھیئم نے اس جیت سے جوکووچ کے خلاف پانچ ۔سات کا کیریر ریکارڈ کرلیا ہے ۔ دونوں کے مابین پچھلے چھ مقابلوں میں میچ کا فیصلہ یا تو ٹائی بریک میں ہوا ہے یا پھر فیصلہ کن میں ہو اہے ۔ اس میچ کے تینوں سیٹ بہت نزدیکی رہے اور مقابلہ تقریباً تین گھنٹے تک چلا ۔دنیا کے چوتھے نمبر کے کھلاڑی میدویدیف کا سیمی فائنل میں دنیا کے نمبر دو کھلاڑی اسپین کے رافیل نڈال سے مقابلہ تھا۔ میدویدیف تین کیریر مقابلے میں نڈال کو کبھی شکست نہیں دے سکے تھے لیکن اس مرتبہ انہوں نے دو گھنٹے 36 منٹ میں جیت حاصل کرلی ۔ ریکارڈ مسلسل 16 ویں مرتبہ اس ٹورنامنٹ میں کھیل رہے 20 گرینڈ سلیم خطابوں کے فاتح نڈال نے اپنے شاندار کیریر میں یہ خطاب کبھی نہیں جیتا تھا اور ان کا خواب پھر سے خواب ہی رہ گیا۔ تھیم اور میدویدیف کے خطابی مقابلے سے مسلسل پانچویں سال ٹورنامنٹ کو نیا فاتح ملے گا۔ یواین آئی۔