آبی ذخائرکے تحفظ کوخطرہ برقرار | بیشتر ندی نالوں سے ریت اورباجری نکالنے کا سلسلہ جاری

تاریخ    23 نومبر 2020 (00 : 12 AM)   


نیوز ڈیسک
 سرینگر//شمالی اورجنوبی کشمیر میں مختلف ندی نالوں سے پابندی کے باوجود غیر قانونی طور ریت ،باجری اور بولڈر نکالنے کا سلسلہ جاری ہے۔اننت ناگ کے ڈورو پل ، ساندرن ،لارکی پورہ،ویسو ،نیپورہ ،بھمتن ،شنکر پورہ،لالن ،سڈورہ،آنگ متی پورہ ،ہلتر پل اور ڈونی پاوا کے مقامات پر ان نالوں سے غیر قانونی طور پر ریت ،باجری اور بولڈر نکالے جارہے ہیں ۔مقامی لوگوں کا کہنا ہے کہ محکمہ جیالوجی اینڈ مایننگ کی طرف سے کئی افراد کو ٹھیکے دئے گئے ہیں جو محکمہ کو اس کیلئے پیسہ بھی ادا کر رہے ہیںاور امسال محکمہ نے باضابطہ یہ نالے الاٹ کئے گئے ۔مقامی لوگوں نے بتایا کہ ان جگہوں پر بلڈوزر لگاکر ریت ،باجری یا بولڈر نکالے جاتے ہیںاور آہستہ آہستہ ان نالوں کی خوبصورتی ختم ہوچکی ہے ۔لوگوں کا کہنا ہے کہ ان ندی نالوں سے کئی ٹراوٹ مچھلیوں کیلئے مخصوص قرار پائے ہیں۔ محکمہ مچلی پالن کے ایک افسر نے اس سلسلے میں بتایا کہ ٹراوٹ مچھلیوں کو بچانے اوراس غیر قانونی سلسلے کو بند کرنے کیلئے کئی اقدام کئے جاچکے ہیں اور کوشش ہے کہ یہ سلسلہ بند ہوجائے۔انہوں نے کہا کہ اب تک یہ غیر قانونی کام کرنے والوں سے لاکھوں روپئے کا جرمانہ وصول کیا گیاہے ۔اس دوران شمالی کشمیر کے مختلف چھوٹے بڑے ندی نالوں سے بھی غیر قانونی طور ریت اور باجری کے ساتھ ساتھ بولڈر نکالنے کا سلسلہ جاری ہے جس پر مقامی لوگوں میں تشویش پائی جاتی ہے ۔مقامی لوگوں نے کہاکہ رات دن مشینوں سے یہ کام جاری ہے۔ سی این آئی
 

تازہ ترین