تازہ ترین

مزید خبرں

تاریخ    31 اکتوبر 2020 (00 : 01 AM)   


نیوز ڈیسک

عالمی سطح پرسیاحتی شعبے سے وابستہ17کروڑ لوگوں کے بے روزگار ہونے کاخدشہ

لندن//کوروناوائرس کی عالمگیروباء کی روکتھام کیلئے جاری بندشیں اگر جاری رہیں توعالمی سطح پرسفراورسیاحت کی صنعت میں17کروڑ40لاکھ لوگ بے روزگار ہوجائیں گے۔اس بات کاانتباہ اس صنعت سے وابستہ ایک گروپ نے جمعہ کو دیا۔عالمی سفروسیاحت کونسل کے اعدادوشمار گزشتہ امکانی اعدادوشمار سے تھوڑاکم ہیں کیوںکہ چین میں گھریلوں سفراور دیگر ممالک میں سفر پر عائد پابندیوں میں نرمیاں کی گئیں۔جون میں عالمی کونسل نے عالمی سطح پر19لاکھ سے زیادہ لوگوں کے بیروزگار ہونے کاامکان ظاہر کیاتھا ۔اس سال عالمگیروباء کے پھوٹ پڑنے کے بعد سفر پر موثرپابندیاں عائدکی گئیں تھیںاورغیرملکی اُرانوں پرپابندی لگائی گئی اور متعدد ممالک میںمیزبانی کے شعبے کو بندکیا گیاتھا۔چین جہاں پہلے پہل کوروناوائرس نمودار ہواتھا،باقی ممالک کی نسبت وائرس کو قابوکرنے میں کامیاب ہوا ہے اوراس نے اپنی اقتصادیات کے اکثر شعبوں کوکھول دیاہے ۔دنیابھرمیں لاک دائون کی پابندیاں نرم کی گئیں ہے لیکن سفر کرنے والوں کی تعداد اب بھی کم ہے کیوں کہ متعدد ممالک میں مسافروں کو اب بھی قرنطین میں رکھاجاتا ہے ۔ادھراس بات کے بھی خدشات ہیں کہ وائرس کے یوروپ میں پھر سے سراُبھارنے سے اس شعبے کو پھر دھچکا لگے گا۔عالمی سفروسیاحت کی کونسل کا کہنا ہے کہ اس شعبے کی بحالی میں مزید وقت لگے گا اگر قرنطین کو روانگی کے وقت سستے تیزرفتار جانچ سے بدلانہیں گیا۔انہوں نے کہا کہ اس میں جتنی زیادہ تاخیر ہوگی ،سفروسیاحت کاشعبہ اتنا ہی تباہ ہوگا۔
 
 
 
 

سعودی کرنسی پرجموں کشمیراورلداخ کوبھارت کا حصہ نہ دکھانے پرنئی دہلی کااعتراض

سرینگر// ہندوستان نے سعودی عرب کے نئے کرنسی نوٹ پر کشمیر اور لداخ کو عالمی نقشے میں غلط طور دکھانے پر سخت اعتراض درج کیا ہے اور سعودی حکومت سے اپیل کی ہے کہ یہ علاقے ہندوستان کے اٹوٹ حصے ہیں اور نقشہ میں غلطی کا ازالہ کرنے کے لیے فوری کارروائی ہونی چاہئے۔کے این ٹی کے مطابق وزارت خارجہ کے ترجمان انوراگ شری واستو نے یہاں معمول کی پریس بریفنگ میں سعودی عرب کی جانب سے جاری کیے گئے ریال کے ایک نئے نوٹ پر عالمی نقشہ میں ہندوستان کی بین الاقوامی سرحدوں کو غلط انداز میں پیش کرنے کے سوال کے جواب میں کہا کہ ہندوستان نے نئی دہلی میں سعودی عرب کے سفارت خانہ کو اور ریاض میں سعودی عرب کے محکمہ خارجہ کو سعودی کرنسی نوٹ پر ہندوستان کی سرحدوں کو غلط انداز میں پیش کرنے پر اپنے تحفظات سے آگاہ کردیا ہے۔ترجمان نے کہا کہ ہم نے سعودی حکومت سے فوری اصلاحی اقدامات کرنے کی اپیل کی ہے۔ ہم نے سعودی حکومت کو یہ بھی بتایا ہے کہ کشمیر اور لداخ ہندوستان کے اٹوٹ حصے ہیں۔  قابل ذکر ہے کہ سعودی عرب نے جموں کشمیراور لداخ کو بھارت سے الگ عالمی نقشے پر دکھایا تھا۔جموں وکشمیر میں زمین کی ملکیت سے متعلق قوانین میں تبدیلی کے بارے میں پاکستان کے تبصرے پر ردعمل ظاہر کرتے ہوئے شریواستو نے دوٹوک الفاظ میں کہا کہ کسی بھی ملک کو ہندوستان کے اندرونی معاملات پر تبصرہ کرنے کا حق نہیں ہے۔کرتار پور راہداری سے متعلق ایک سوال کے جواب میں ترجمان نے کہا کہ کرتار پور راہداری کو دوبارہ کھولنے کا فیصلہ کووڈ- 19 کے پروٹوکول کو مدنظر رکھتے ہوئے کیا جائے گا۔حکومت ہند اس سلسلے میں متعلقہ فریقوں کے ساتھ رابطے میں ہے۔
 
 

ڈاکٹر فاروق کونمازجمعہ کی ادائیگی سے روکنا | مذہبی آزادی سلب کرنے کے مترادف:نیشنل کانفرنس

سرینگر// نیشنل کانفرنس نے پارٹی صدر ڈاکٹر فاروق عبداللہ کو عید میلادالنبیؐ کی تقریب سعید کے موقعے پر خانہ نظر بند کرکے درگارہ حضرت بل جانے سے روکنے کی انتظامیہ کی کارروائی کی شدید الفاظ میں مذمت کی ہے۔ پارٹی جنرل سکریٹری علی محمد ساگر نے انتظامیہ کے اس اقدام کو غیر قانونی اور بلا جواز قرار دیا اور کہا کہ ڈاکٹر فاروق کو مذہبی فرائض ادا کرنے سے روکنا مذہبی آزادی سلب کرنے کی ایک بدترین مثال ہے۔ انہوں نے اپنے ایک بیان میں کہا کہ نمازِ جمعہ حضرت بل میں ادا کرنا ڈاکٹر فاروق عبداللہ کا معمول ہے اور وہ ہر سال عید میلادالنبیؐ پر درگاہ پر حاضری دیتے تھے اور آج بھی حسب قدیم اُن کا حضرتبل میں ہی نماز ادا کرنے اور حاضری دینے کا پروگرام تھا تاہم انتظامیہ نے اُن کے گھر کے سامنے بندشیں عائد کرکے انہیں گھر سے باہر نکلنے کی اجازت نہیں دی۔ ساگر نے کہا کہ نیشنل کانفرنس انتظامیہ کے اس اقدام کی شدید الفاظ میں مذمت کرتی ہے اور نماز کی ادائیگی سے روکنے کی کارروائی کو مذہبی آزاد سلب کرنے کے مترادف قرار دیتی ہے۔ 
 
 

لوگوں کے بنیادی حقوق سلب کرنے کی انتہا:سجاد لون

سرینگر//عوامی اتحاد برائے گپکار اعلامیہ نے جموں کشمیر انتظامیہ کی طرف سے اتحاد کے صدر ڈاکٹر فاروق عبداللہ کو نمازجمعہ حضرت بل میں اداکرنے سے روکنے کیلئے ان کی رہائش گاہ کے باہر رکاوٹیں کھڑا کرنے کی مذمت کی ہے ۔ایک بیان میں اتحاد کے ترجمان سجاد لون نے کہا کہ ڈاکٹر فاروق عبداللہ جنہیں نماز جمعہ درگاہ حضرت بل میں اداکرناتھی تاکہ وہ میلادالنبیؐ کی تقریبات میں شرکت کرتے ،کو تاہم گھر سے باہر جانے سے روکا گیا۔انہوں نے کہا کہ ہم جموں کشمیرانتظامیہ کی اس کارروائی کی مذمت کرتے ہیں جو ڈاکٹر فاروق کے مذہبی معاملات میں مداخلت کے مترادف ہے۔یہ جموں کشمیر کے لوگوں کے بنیادی حقوق کو سلب کرنے کی انتہا ہے اورہم مطالبہ کرتے ہیں کہ ڈاکٹر فاروق کی رہائش گاہ کے باہر لگائی  بندشیں ہٹائی جائیںتاکہ وہ اپنے مذہبی فرائض انجام دے سکیں ۔ 
 
 

انجینئریتوڈاکٹر فاروق سے ملے |  موجودہ صورتحال پرتبادلہ خیال

 سرینگر//نیشنل کانفرنس کے صدر ڈاکٹر فاروق عبداللہ کو نماز جمعہ درگاہ حضرت بل میں اداکرنے سے روکنا مذہبی معاملات میں براہ راست مداخلت ہے ۔اس بات کا اظہار سیاسی رہنمااور جے کے سیمنٹس کے سابق نائب چیئرمین انجینئرنذیرتیونے ڈاکٹر فاروق کے ساتھ ملاقات کے دوران کیا۔انہوں نے ڈاکٹر فاروق کے ساتھ موجودہ سیاسی صورتحال پر تبادلہ خیال کیا۔اس موقعہ پر ڈاکٹر فاروق عبداللہ نے کہا کہ جموں کشمیراورلداخ کی پوری قیادت کو متحد ہوکرموجودہ حالات کامقابلہ کرنا چاہیے جنہوں نے لوگوں میں نفسیاتی خوف پیدا کیا ہے ۔انہوں نے کہا کہ سیاسی وابستگیوں سے بالا تر ہوکر تمام جماعتوں کو عوام کی بھلائی کیلئے یکجا ہوکر کام کرنا چاہیے ۔
 
 

ٹھیکیداروں کاکمشنر فائنانس کو مکتوب | مکمل کی گئی کاموں کی رقومات کی واگزاری میں تاخیر کیوں؟

سرینگر//وادی میں پایہ تکمیل تک پہنچائی گئی تعمیراتی کاموں کے رقومات کی عدم ادائیگی پر کنٹریکٹرس کارڈی نیشن کمیٹی نے حکومت کے نام مکتوب   میںپوچھا ہے کہ حکام نے وعدہ کیا تھا کہ’’ انٹی کورپشن بیورو‘‘ کی جانب سے ان کاموں کی جانچ کے بعد رقومات واگزار کی جائیں گی تاہم انسداد رشوت ستانی کے اس ادارے کی جانب سے تحقیقاتی عمل مکمل کرنے کے بعد بھی کیونکر رقومات واگزار نہیں کئے گئے۔کارڈی نیشن کمیٹی کے چیئرمین غلام جیلانی پرزہ نے کمشنر خزانہ کے نام جمعہ کو مکتوب روانہ کرتے ہوئے کہا کہ ابھی تک ٹھیکیداروںکو پایہ تکمیل تک پہنچائی گئی کاموں کے مد میں ایک روپے بھی واگزار نہیں کیا گیا۔انہوں نے کہا کہ مرکزی سڑک فنڈ(سی آر ایف) اسکیم کے تحت  پروگراموں کو منظور کیا گیا ہے،تاہم جموں کشمیر کو ریاست سے مرکزی زیر انتظام والے خطے میں تبدیل کرنے کے بعد ابھی تک رقومات کی واگزاری نہیں کی گئی اور جموں کشمیر میں اس شعبے میں500کروڑ روپے واجب الادا ہے،جس کے نتیجے میں تعمیراتی ٹھیکیداروں کو سخت مشکلات کا سامنا ہے۔ کارڈی نیشن کمیٹی کے چیئرمین غلام جیلانی پرزہ کی طرف سے کمشنر فائنانس کو ارسال مکتوب میں کہا گیا ہے جو بھی ٹینڈر مشتہر کئے جاتے ہیں، ان میں کہا گیا ہوتا ہے کہ ان کاموں کو انتظامی معاہدہ اور تکنیکی منظوری ملی ہے،اس کے بعد کام کئے جاتے ہیں تاہم یہ کسمپرسی کا عالم ہے کہ کاموں کو ختم کرنے کے بعد کہا جاتا ہے کہ ان کاموں کا ناہی انتظامی معاہدہ کیا گیا ہے اور ناہی تیکنیکی منظوری دی گئی ہے،جس کے نتیجے میں تعمیراتی ٹھیکیداروں کو کافی مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔ انہوں نے الزام عائد کرتے ہوئے کہا کہ ا علیٰ حکام تعمیراتی کاموں کے انتظامی معاہدہ اورتیکنیکی منظوری سے لیت و لعل کرتے ہوئے نظر آتے ہیں۔مکتوب میں فائنانشل کمشنر سے درخواست کی گئی ہے کہ فوری طور پر واجب الادا رقوامات کو واگزار کیا جائے۔
 
 

اراضی قوانین | 2نومبر کوسول سوسائٹی فورم کااحتجاج

سرینگر//جموں کشمیرسول سوسائٹی فورم 2نومبرسوموار کو پریس اینکلیوسرینگرمیں نئے اراضی قوانین کے خلاف احتجاجی دھرنے کااہتمام کررہے ہیں۔اس بات کافیصلہ یہاں فورم کے ایک اجلاس میں چیئرمین عبدالقیوم وانی کی صدارت میں منعقدہ میٹنگ میں کیا گیا۔میٹنگ میں جموں کشمیرکی موجودہ صورتحال اوراہم امورپرتفصیلی تبادلہ خیال کیاگیا۔اجلاس میں جموں کشمیرمیںنئے اراضی قوانین کویہاں کی آبادی کو تبدیل کرنے کی کوششوں سے تعبیر کرتے ہوئے اِس پر ناراضگی کامظاہرہ کیا۔اجلاس میں فاروق احمد ترالی، نصرت احمد بیگ، حاجی فاروق احمد لون، محمد اکبر میر، پشپندر سنگھ، محمد ایوب میر، فردوس احمد بٹ، غلام احمد شاہ، محمد رفیع شیخ، محمد شفیع کمبے، ایڈ وکیٹ سفیر احمد، ایڈ وکیٹ ثاقب نبی، ایڈویڈوکیٹ  اویس احمد، پیر عبد الحمید غلام محمد میر، واصف نور، شاہ فیصل، نثار احمد، نور الحسن،اور محمد امین میرموجودتھے۔
 
 

حدمتارکہ پر جنگ بندی کی خلاف ورزی | اسلام آبادمیں بھارتی سینئرسفارتکار دفترخارجہ طلب

اسلام آباد//پاکستان نے جمعہ کوبھارت کے سینئرسفارتکارکو دفترخارجہ طلب کرکے حدمتارکہ پربھارتی فوج کی طرف سے مبینہ جنگ بندی خلاف ورزیوں کیخلاف احتجاج درج کیا۔دفترخارجہ کے مطابق بھارتی فوج نے نیزاپیراوررکھ چکری سیکٹروں میں29اکتوبر کو بلااشتعال گولہ باری کی جس کی وجہ سے 22برس کی رخسانہ اور36سال کے محمد اعظم زخمی ہوگئے ۔انہوں نے الزام لگایا کہ بھارت کے فوجی حدمتارکہ اور بین الاقوامی سرحد پرمسلسل شہری آبادی کوتوپ خانے سے نشانہ بنارہے ہیں۔پاکستان نے بھارت کے سفارتکار پرزوردیا کہ وہ 2003کے جنگ بندی معاہدے کااحترام کریں اور اس معاملے اور ایسے دیگر واقعات کی تحقیقات کروائیںتاکہ حدمتارکہ اور بین الاقوامی سرحد پر امن کو برقراررکھاجاسکے۔
 
 

 درماندہ  747517 شہریوں کی واپسی

جموں//حکومت جموں وکشمیر نے کووِڈلاک ڈاون کے سبب ملک کے مختلف حصوں میں درماندہ جموںوکشمیر کے 747517شہریوں کو براستہ لکھن پور اور کووِڈخصوصی ریل گاڑیوں اور بسوں کے ذریعے تمام رہنما خطوط اور ایس او پیز پر عمل پیرا  رہ کر یوٹی واپس لایا۔حکومت نے لکھن پور کے ذریعے اَب تک بیرون ملک سے 937 مسافرو ں کویوٹی واپس لایا ہے ۔اِس طرح جموںوکشمیر حکومت نے اَب تک 155کووِڈ خصوصی ریل گاڑیوں اور براستہ لکھن پور بسو ںکے کاروان میں اَب تک بیرون یوٹی درماندہ   607225 شہریو ں کو کووِڈ۔19 وَبا سے متعلق تمام اَحتیاطی تدابیر کو مد نظر رکھ کر واپس لایا۔تفصیلات کے مطابق 29 اکتوبرسے30 اکتوبر 2020ء کی صبح تک لکھن پور کے راستے سے8498درماندہ مسافریوٹی میں داخل ہوئے۔اَب تک 134ریل گاڑیوں میں یوٹی کے مختلف اَضلاع سے تعلق رکھنے والے124,596درماندہ مسافر جموں پہنچے جبکہ 21خصوصی ریل گاڑیوں سے 15,696مسافر اودھمپور ریلوے سٹیشن پر اُترے۔
 
 

۔3مہلوک بھاجپا کارکن آبائی قبرستانوں میں سپردخاک

اننت ناگ //عارف بلوچ//قاضی گنڈ میں جمعرات شام کو مشتبہ جنگجوؤں کے ہاتھوں ہلاک کئے گئے تینوں بی جے پی کارکنوں کو جمعہ صبح آبائی قبرستانوںمیں سپرد خاک کیا گیا۔اُن کی نماز جنازہ میں لوگوں کی بڑی تعداد نے شرکت کی تاہم آخری رسومات میں بی جے پی کا کوئی بھی لیڈر موجود نہیں تھا۔اس سے پہلے تینوں مہلوکین کو رات بھر ایمر جنسی اسپتال قاضی گنڈ میں رکھا گیا جہاں صبح اُن کا پوسٹ مارٹم کیا گیا۔اسپتال میں مہلوکین کے رشتہ داروں و ہمسایوں کی بڑی تعداد موجودتھے اور یہاں غم و غصہ کا ماحول نظر آرہا تھا۔جونہی اُ ن کی لاشیںآبائی گھروں پہنچائی گئیں تووہاں کہرام مچ گیا۔خواتین سینہ کوبی کرتے ہوئے گھروں سے باہر آئیں۔یور خوشی پورہ اور سوپٹ میں غیر معمولی حفاظتی انتظامات کئے گئے تھے۔قابل ذکر ہے یور خوشی پورہ قاضی گنڈ میں مشتبہ جنگجوئوں نے جمعرات شام کو بی جے پی یووا مورچہ کے ضلع جنرل سیکریٹری کولگام سمیت 3کارکنوں کو گولیاں مار کر ہلاک کردیاگیاتھا۔مقامی لوگوں کے مطابق یور خوشی پورہ عید گاہ کے نزدیک شام دیر گئے 8بجکر 20منٹ پر ضلع سیکریٹری کولگام یووا مورچہ فدا حسین ایتوعرف ٹیپو ولد گل محمد ساکن وی کے پورہ، بھاجپا کارکن اور الیکٹرک انجینئر گریجویٹ عمر رشید بیگ ولد عبدالرشید ساکن سوپٹ اور عمر رمضان حجام ولد محمد رمضان ساکن وی کے پورہ اپنی ذاتی گاڑی زیر نمبر  -79 JK02BU میں کہیں جارہے تھے، تو عید گاہ کے نزدیک جنگجوئوں نے ان کی گاڑی پر حملہ کیا اور اندھا دھند فائرنگ کی جس کے نتیجے میں گاڑی میں سوار تینوں شدید طور پر زخمی ہوئے لیکن اسپتال لیجاتے ہوئے فدا حسین راستے میں ہی دم توڑ بیٹھا،بعد میں دیگر دو ورکر بھی دم توڑ بیٹھے ۔
 
 

۔157بھاجپا کارکنوں کو سیکورٹی فراہم،قاضی گنڈ واقعہ میں ملوثین کی نشاندہی ہوگئی:آئی جی

اننت ناگ //عارف بلوچ//انسپکٹر جنرل پولیس وجے کمار نے کہا ہے کہ پولیس اس بات کی تحقیقات کررہی ہے کہ یور خوشی پورہ قاضی گنڈ میں بھاجپا ورکر حملے کے وقت اس علاقے میں کیا کررہے تھے۔ وائی کے پورہ قاضی گنڈ میں نامہ نگاروں سے بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ پولیس سیاسی کارکنوں کو تحفظ فراہم کرنے کی وعدہ بند ہے۔تقریباً 157 سیاسی کارکنوں کو ذاتی سیکورٹی فراہم کی گئی ہے۔آئی جی نے کہا کہ پاکستان یہاں کے پر امن ماحول کو خراب کرنے میں جٹا ہواہے، اور وائی کے پورہ کا حملہ بھی پاکستان کی ایماء پر کیا گیا ۔انہوں نے کہاحملہ آوروں کی گرفتاری کے لئے 7 آٹھ مقامات پر سرچ آپریشن شروع کیا گیا ہے۔ آئی جی نے کہا کہ5 اگست،2019کے بعد1619افراد کی نشاندہی کرکے اْنہیں پہلگام میں حفاظتی انتظامات کے تحت رکھا گیا تھا۔تاہم فدا حسین مذکورہ علاقہ سے نکل گیا تھا۔ اب پولیس اس بات کی تحقیقات کررہی ہے کہ تینوں مہلوکین حملے کے وقت اْس علاقے میں کیا کررہے تھے۔ آئی جی کا مزید کہنا تھا کہ 157بھاجپا کارکنوں کو سیکورٹی فراہم کی گئی ہے اور حفاظتی اہلکاروں کو بتایا گیا ہے کہ وہ بھاجپا کارکنان کو رات کے وقت باہر نکلنے کی اجازت نہ دیں۔آئی جی نے کہا’’ اس معاملے کے حوالے سے عسکریت پسند تنظیم لشکر طیبہ سے وابستہ مقامی جنگجو نثار احمد کھانڈے، عباس شیخ کھڈونی اور غیر ملکی جنگجوؤں کے نام سامنے آئے ہیں جس پر تحقیقات جاری ہے۔انہوں نے کہا کہ ایسا لگتا ہے کہ یہ حملہ ایک منصوبہ بند طریقہ سے انجام دیا گیا ۔جنگجو آلٹو کار میں سوار ہوکر آئے اور (بی جے پی یوتھ جنرل سکریٹری) کی گاڑی پر اندھا دھند فائرنگ کردی۔جس کے نتیجے میں تینوں کارکن شدید زخمی ہوئے اور بعد میں زخموں کی تاب نہ لاکر دم توڑبیٹھے۔وجے کمار کے مطابقحملے میں استعمال کی گئی گاڑی، الطاف نامی ایک شخص کی ہے اور اْس گاڑی کو تیلہ ونی اچھہ بل گائوں میں پولیس پوسٹ اچھہ بل کے قریب ضبط کیا گیاجس میں سوار ہوکر جنگجوئوںنے بھاجپا کارکنوں کو حملے کا نشانہ بنایاتھا۔
 
 

ہلاکتوں کے ذمہ دارانسانیت کے دشمن:فاروق خان

سرینگر//لیفٹینٹ گورنر کے مشیر فاروق خان نے سیاسی کارکنوں کی ہلاکت کی مذمت کی ہے جنہیں جنگجوئوں نے ضلع کلگام کے قاضی گنڈ علاقے میں جمعرات کی شام کو ہلاک کر دیا تھا ۔ اپنے تعزیتی پیغام میں مشیر خان نے ان ہلاکتوں کو انسانیت کا قتل قرار دیتے ہوئے کہا کہ ان ہلاکتوں کے ذمہ داران انسانیت کے دشمن ہیں اور ایسے بیہمانہ پُر تشدد حرکتوں کیلئے مہذب سماج میں کوئی جگہ نہیں ہے ۔ انہوں نے سوگوار خاندان کے ساتھ اپنی گہری ہمدردی کا اظہار کرتے ہوئے مہلوکین کی ارواح کے ابدی سکون کی دعا کی ۔ 
 
 

امن دشمن عناصر کو چھوٹ نہیں دی جانی چاہیے:الطاف بخاری

سرینگر//اپنی پارٹی صدر سعید محمد الطاف بخاری نے ضلع کولگام میں تین بی جے پی ورکروں کی ہلاکت کی کڑے لفظوں میں مذمت کی ہے۔ ایک بیان میں بخاری نے کہاکہ تشد د آمیز واقعات لوگوں کی مشکلات میں صرف اضافہ کرتے ہیں اور دنیا کے کسی بھی مہذب سماج میں اِس کی معافی نہیں دی جاسکتی۔انہوں نے کہا’’سیاسی کارکنوں پر اس طرح کے خوفناک حملوں سے ماسوائے لوگوں کے لئے مزید انتشار اور اذیت پیدا کرنے کے کچھ حاصل نہیں ہوسکا‘‘۔ انہوں نے حکومت پرزور دیاکہ ایسے واقعات کا سنجیدہ نوٹس لیاجائے اورتمام تر ضروری سیکورٹی اقدامات اُٹھائے جائیں ۔بخاری نے کہاکہ جموں وکشمیر میں امن اور خوشحالی کے دشمن عناصر کو کھلی چھوٹ نہیں دی جانی چاہئے اور انتظامیہ کو چاہئے کہ مجرموں کی شناخت کر کے اُن کے خلاف قانون کے تحت سخت کاررروائی عمل میں لائی جائے۔انہوں نے مزید کہا’’ بدقسمت آمیز واقعہ اُس وقت پیش آیا جب پوری دنیا عید میلاد النبی ؐکا جشن منارہی ہے، کشمیر نے پہلے ہی پچھلی تین دہائیوں کے دوران بہت زیادہ تباہی اور اموات دیکھی ہیں۔اب اس بے دماغ تشدد کا خاتمہ ہونا چاہئے تاکہ لوگ راحت کی سانس لیں‘‘۔بخاری نے کہاکہ زمینی سطح کے غیر مسلح کارکنوں کی ہلاکت بزدلانہ حرکت ہے جس کی کسی بھی صورت میں جوازیت پیش نہیں کی جاسکتی۔ انہوں نے تین مہلوک سیاسی کارکنوں کے غمزدہ کنبوں، رشتہ داروں، عزیز واقارب  کے ساتھ یکجہتی کا اظہار یکجہتی کرتے ہوئے اُن کے لئے دعائے مغفرت کی ہے۔
 
 

بھاجپا کارکنوں کی قربانیاں رائیگاں نہیں جائیں گی: نڈا

نئی دہلی//یواین آئی// بھارتیہ جنتا پارٹی  کے قومی صدر جگت پرکاش نڈا نے جموں وکشمیر کے کولگام میں جنگجوئوں کے ہاتھوں بی جے پی یووا مورچہ کے سکریٹری جنرل سمیت تین کارکنوں کے قتل کے واقعہ پر رنج وغم کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ایسے محب وطن کا ہلاک ہوجانا ملک کے لئے بڑا نقصان ہے ۔ نڈا نے ٹوئٹ کے ذریعہ کہا،’’جموں وکشمیر کے کلگام میں بزدلانہ حملے میں جنگجوئوں نے ضلع بی جے پی کے یووا مورچہ کے سکریٹری جنرل فدا حسین سمیت تین لیڈروں کو قتل کردیا۔ ایسے محب وطنوں کا مارا جانا ملک کے لئے بڑا نقصان ہے ۔ پورا سماج متاثر خاندانوں کے ساتھ ہے ۔ یہ قربانیاں رائیگاں نہیں جائیں گی۔ متاثرہ خاندانوں کے تئیں میری دلی ہمدردی۔‘‘واضح رہے کہ جموں وکشمیر کے کلگام ضلع میں جمعرات کوجنگجوئوں نے تین کارکنوں کو گولی مار کر ہلاک کردیا تھا۔ پولس کی اطلاع کے مطابق کلگام ضلع کے وائی کے پورا علاقے میں فدا حسین، عمر اعظم اور عمر رشید بیگ کو جنگجوئوں نے گولی مار کر ہلاک کردیا تھا۔
 
 

سیاسی کارکنوں کی سلامتی کیلئے موثر اقدام کئے جائیں :کانگریس

سرینگر//جموں کشمیرپردیش کانگریس کمیٹی نے کولگام میں نامعلوم جنگجوئوں کے ہاتھوں بھاجپا کے تین کارکنوں کی ہلاکت کی مذمت کرتے ہوئے لواحقین کے ساتھ یکجہتی کااظہار کیا ہے ۔ایک بیان میں جموں کشمیر پردیش کانگریس نے کہا کہ بھاجپا کے تین اراکین کی ہلاکت قابل مذمت ہے اور اس شرمناک واقعہ میں ملوث افراد کو کڑی سزادی جانی چاہیے.۔جموں کشمیر پردیش کانگریس نے وادی کشمیرمیں امن وقانون کی بگڑتی صورتحال پر تشویش کااظہار کرتے ہوئے حکومت سے مطالبہ کیا کہ مستقبل میں ایسے واقعات کو رونما ہونے سے روکنے کیلئے سیاسی کارکنوں کی سلامتی کیلئے موثراقدام کئے جائیں ۔کانگریس نے مہلوک کارکنوں کے لواحقین کے ساتھ تعزیت کااظہار بھی کیا۔
 
 

شہری ہلاکتوں کوروکنا ضروری:سی پی آئی(ایم)

سرینگر//کمیونسٹ پارٹی آف انڈیا (مارکسسٹ)  نے کولگام میں بھاجپا کے تین ارکان کی ہلاکت کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ تشدد کسی بھی حال میں قابل مذمت ہوتا ہے ۔انہوں نے کہا کہ غیرمسلح افراد کوہلاک کرنے کا کوئی جوازنہیں ہے۔ انہوںنے کہا کہ کشمیرمیں شہری ہلاکتیں مسلسل جاری ہیں اوران پر فوری طور روک لگانے کی ضرورت ہے ۔پارٹی نے مہلوک کارکنوں کے لواحقین کے ساتھ تعزیت کابھی اظہار کیا۔
 
 

سیاسی اختلافات کی بناء پرتشددکااستعمال بلاجواز :پیپلز الائنس

سری نگر//دفعہ370اورجموں وکشمیر کوریاستی درجے کی بحالی کیلئے نصف درجن سے زیادہ مین اسٹریم جماعتوں کے مشترکہ فورم’عوامی اتحاد برائے گپکار اعلامیہ‘ نے جمعرات شام قاضی گنڈ میں تین سیاسی کارکنوں کی ہلاکت کوقابل مذمت قرار دیا۔جے کے این ایس کے مطابق پیپلز الائنس کے ترجمان سجادغنی لون نے اپنے ایک بیان میں کہاکہ پیپلز الائنس تین سیاسی کارکنوں کی ہلاکت کے واقعہ کی واضح اورغیر مبہم طورپر مذمت کرتاہے ۔انہوں نے کہاکہ سیاسی اختلافات کی بناء پرکسی کوہلاک کرنایاکسی کیخلاف تشددکااستعمال کرنابلاجواز ہے ۔انہوں نے کہاکہ سیاسی اختلافات کی بناء پرتشددکااستعمال کرنے کاکوئی جواز نہیں ہے ۔سجادلون نے ساتھ ہی کہاکہ تشددکی وجہ سے ہمیشہ انسان اپنے ہوش وحواس کھوبیٹھتا ہے ۔انہوں نے کہاکہ ہم ہرطرح کی جارحیت کامقابلہ کریں گے ۔
 
 

بھاجپا کارکنوں کی ہلاکت قابل مذمت : نیشنل کانفرنس

سرینگر// نیشنل کانفرنس کے صدر ڈاکٹر فاروق عبداللہ اور نائب صدر عمر عبداللہ نے ضلع کولگام میں 3بھاجپا کارکنوں کی ہلاکت کی شدید الفاظ میں مذمت کی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ایک مہذب سماج میں ایسے خونین واقعات کیلئے کوئی جگہ نہیں اور تشدد ہر ایک صورت میں قابل مذمت ہے۔ دونوں لیڈران نے مہلوکین کے لواحقین کیساتھ اظہارِ ہمدردی کیا اور اُن کیلئے دعائے مغفرت کی۔ پارٹی جنرل سکریٹری علی محمد ساگر، صوبائی صدر ناصر اسلم وانی، سٹیٹ سکریٹری سکینہ ایتو، شمالی زون صدر ڈاکٹر بشیر احمد ویری، ضلع صدر کولگام ایڈوکیٹ عبدالمجید مجید بٹ لارمی اور ترجمان عمران نبی ڈار نے بھی کولگام میں بھاجپا کارکنوں کی ہلاکت کی شدید الفاظ میں مذمت کی ہے اور سوگوران کیساتھ تعزیت کا اظہار کیا ہے۔
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 

سوپور میں پہلی  پیتھالوجی لیبارٹری قائم

سوپور/غلام محمد// سوپور میں اپنی نوعیت کی پہلی پیتھالوجی لیبارٹری قائم کی گئی ہے۔افتتاحی تقریب کے دوران اے ڈی سی سوپور پرویز سجاد مہمان خصوصی تھے،جبکہ سوپور کی مختلف انجمنوں، ڈاکٹروں، ہیلتھ ورکروں کے علاوہ عام لوگوں کی خاصی تعداد تقریب میں شریک تھی ۔ اس جدید ترین لیبارٹری کو ڈاکٹر تنویر حسن بانڈے اور اُن کی اہلیہ ڈاکٹر صدف بشیر نے کافی محنت اور مشقت کے بعد یہاں قائم کیا ہے ۔اس لیبارٹری کے زریعے جدید طرز کی میڈیکل جانچ کی جائیگی۔ ڈاکٹر تنویر بانڈے نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ ایسی جدید طرز کی پیتھالوجی لیبارٹری کو قائم کرنے کا مقصد شمالی کشمیر سے تعلق رکھنے والے لوگوں خاص کر غریب عوام کو ہر طرح سے راحت پہنچانا ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ یہاں کے لوگوں کو میڈیکل جانچ کیلئے سرینگر کا رخ کرنا پڑتا تھا تاہم اب انہیں کم قیمتوں پر یہاں ہی یہ سہولیات دستیاب ہوں گی ۔
 
 

قمریہ پارک گاندربل میں موسیقی اور تمدنی پروگرام کا انعقاد

ارشاد احمد 

گاندربل/پولیس سے وابستہ شہیدوں کو خراج عقیدت پیش کرنے کیلئے گاندربل پولیس نے سندھ کے کنارے واقع قمریہ پارک میں ’پولیس شہداء میموریل اسپورٹس فیسٹیول ‘کا انعقاد کیا، جس میں کلچرل اور میوزیکل شام کا مقابلہ بھی ہوا ،اس کے علاوہ گاندربل میں سائیکل دوڑ کا بھی اہتمام کیا گیا تھا ۔تقریب میں ایس ایس پی گاندربل خلیل احمد پسوال مہمان خصوصی کے طور پر شریک تھے ، ان کے ہمراہ ایڈیشنل ایس پی گاندربل فیروز احمد اور دیگر اعلیٰ افسران بھی موجود تھے ۔سائیکل ریس کو سمبل سوناواری پل سے منیگام بائی پاس تک ایس ایس پی خلیل احمد پسوال نے جھنڈی دکھاکر روانہ کیا۔اس موقع پر خلیل احمد پسوال نے اپنے خطاب میں کہا کہ پولیس کے ذریعہ اس طرح کے تقاریب کو خراج تحسین پیش کرنے کے ساتھ ساتھ ہمارے بہادر پولیس شہدا کی یاد میں منعقد کیا جاتا ہے ،جنہوں نے عوام کی جان و مال کا تحفظ کرتے ہوئے اپنی جانوں کا نذرانہ پیش کیا اور پورا ملک ان کی ہمت اور بہادری کی حمایت کر رہا ہے۔تقاریب کے اختتام پر انعامات تقسیم کئے گئے۔جبکہ گانے کے مقابلہ جیتنے والوں میں نقد انعامات بھی تقسیم کیے گئے۔ایس ایس پی گاندربل نے سائیکل ریس جیتنے والوں میں نقد انعامات اور شرکاء میں شرکت کیلئے سرٹیفکیٹ بھی تقسیم کیے۔
 
 
 

سی پی آئی ایم کا نئے اراضی قانون کیخلاف احتجاج 

 
جموں //سی پی آئی (ایم ) کی علاقائی کمیٹی نے جمعہ کے روز یہاں مرکزی سرکار کی جانب سے جموں و کشمیر کیلئے نئے اراضی قوانین کے خلاف زبر دست مظاہرہ کیا۔سینکڑوں کی تعداد میں پارٹی کارکنوں نے پریس کلب کے باہر احتجاج کیا اور ومدی سرکار کے خلاف نعرے بلند کئے ۔مظاہرین نے نئے اراضی قوانین کو فوری طور سے واپس لینے کا بھی مطالبہ کیا۔مظاہرین سے خطاب کرتے ہوئے پارٹی کے علاقائی سیکرٹری شام پرساد کیسر نے کہا کہ مرکز کے قوانین باہری لوگوں کو جموں و کشمیر اور لداخ میں اراضی خریدنے کیلئے راستہ ہموار کیا ہے،جس سے بی جے پی سرکار کے دفعہ370کی تنسیخ کی منشا واضع ہوتی ہے۔انہوں نے کہا کہ پارٹی اس قانون کی پوری مخالفت کرتی ہے۔انہوں نے کہا کہ جموں و کشمیر آئین اور دفعہ370 کی تنسیخ جموں و کشمیر کی جغرافیہ کو بدلنے کا اصل مقصد تھا ۔انہوں نے کہا کہ بی جے پی نے جموں و کشمیر کو مرکزی زیر انتظامیہ علاقہ قرار دیکر لوازمات کی کھلم کھلا خلاف ورزی کی ہے۔مرکزی سرکار نے اپنے مقاصد حاصل کرنے کیلئے تمام جمہوری اصولوں کی خلاف ورزی کی ہے۔انہوں نے کہا کہ جس طرح سے مرکزی سرکا رکشمیر کے ساتھ نمٹ رہی ہے وہ  ملک اور جے اینڈ کے کی سابقہ ریاست کیلئے خطرہ کی ایک وارننگ ہے ۔مظاہرین سے خطاب کرنے والوں میںکشور کمار، سیوا رام ، جیا لعل پریہار، سرون کمار، بکل وید  و دیگران شامل تھے۔
 
 
 
 

عید میلاد النبیؐ پر لوگوں کو مبارکباد 

 
سرینگر //سرپرست انجمن علماء احناف کے سربراہ مولانا پیر زادہ اخضرنے لوگوں کو عید میلاد النبی (ص) کے موقع پر مبارکباد پیش کرتے ہوئے ان کی خیریت کیلئے دعا کی۔انہوں نے کہا کہ اس دن کو پوری دنیا میں مسلمان مذہبی جوش وجذبہ کے ساتھ منا رہے ہیں اور یہ دن انسانوں کو امن ، صداقت اور سچائی کی راہ پر گامزن کرتا رہے گا۔
 
 

حکام جان بوجھ کر ترقیاتی منصوبے ناکام بنارہے ہیں: چودھری

 
سرینگر // کانگریس کے رہنما قدفین چودھری نے بین الاقوامی تجارتی مرکز (آئی ٹی سی) کے قیام میں مستقل طور پر غیر فعال ہونے پر حکومت کی شدید تنقید کی ہے ۔انہوں نے کہا کہ حکومت جموں و کشمیر کے عوام کے دکھوں کو کم کرنے کے بجائے ان کو دہشت زدہ کرنے اور ان کی معیشت کو ٹکڑے ٹکڑے کرنے کیلئے نئے طریقے اور ذرائع ایجاد کررہی ہے۔انہوں نے کہا کہ منسوخ کردہ آرٹیکل 370 کو مودی سرکار نے جموں وکشمیر کے مجموعی ترقیاتی منظرنامے میں گیم چینجر کی حیثیت سے پیش کیا تھاتاہم زمینی سطح پر انتشار اور الجھن کے سواء کچھ نظر نہیں آتا ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ حکومت پانپور میں انٹرنیشنل ٹریڈ سینٹر (آئی ٹی سی) کے قیام کیلئے بروقت کارروائی کرنے میں ناکام ہے ۔ریاست کی حکومت نے آئی ٹی سی کے قیام کیلئے ڈائریکٹر دستکاری کے حق میں 371 کنال اور 6.5 مرلہ کی اراضی کو منتقل کیا تھا تاہم ، زمین پر کچھ نظر نہیں آتا ہے۔
 
 

کانگریس کی بی جے پی ورکروں کے ہلاکت کی مذمت  | سیاسی افراد کی سلامتی یقینی بنانے پر زور 

جموں // جموں و کشمیر پردیش کانگریس کمیٹی نے ضلع کولگام میں ملی ٹینٹوں کے ہاتھوں تین بے جے پی ورکروں کی ہلاکت کی شدید مذمت کی ہے ۔ایک تعزیتی بیان میں پارٹی نے دکھ زدہ کنبوں کے ساتھ دکھ کا اظہار کیا ہے ۔ پارٹی نے ان ہلاکتوں کی سخت مذمت کرتے ہوئیاسے شرمناک واقعہ قرار دیکر واقعہ میں ملوث افراد کو مثالی سزا دینے کا مطالبہ کیا ہے۔پارٹی نے کشمیر میں سیکورٹی کی بگڑتی ہوئی صورتحال پر بھی تشویش کا اظہار کیا ہے او رسرکار پر زور دیا ہے کہ وہ سیاسی افراد کی ہلاکت کو روکنے کیلئے موثر اقدام کرکے انکی سلامتی یقینی بنائیں۔ پارٹی نے دکھ زدہ کنبوں کے ساتھ اظہار تعزیت کرکے انکے ساتھ ہمدردی کا اظہار کیا ہے۔
 
 
 
 

جنکپورہ کپوارہ میں خواتین کیلئے بیداری کیمپ 

اشرف چراغ 

کپوارہ //جمو ں و کشمیر وومن ڈیولپمنٹ کا رپوریشن کی طرف سے کپوارہ کے ایک دور افتادہ علاقہ میں ایک بیداری کیمپ کا انعقاد کیا گیا جس میں کثیر تعداد میں خواتین نے شرکت کی ۔ جنکپورہ کنن میں وومن ڈپولپمنٹ کارپوریشن کی جانب سے منعقد ہونے والے اس کیمپ میں خواتین کو بہبودی کے حوالے سے  جانکاری فراہم کی گئی ۔ کارپوریشن کے فیلڈ آفیسر ابرار احمد نے خواتین کو جانکاری فراہم کرتے ہوئے   چھوٹے چھوٹے یونٹ قائم کرنے کے طور طریقے سکھائے ۔اس موقع پر مقررین نے کیمپ کے اغراض و مقاصد پر مفصل روشنی ڈالی ۔انہو ں نے کہا کہ خواتین سماج کا اہم حصہ ہیں اور ایسی سود مند سکیمو ں کی مدد سے وہ سماجی ترقی میں اہم رو ل ادا کر سکتی ہیں ۔انہو ں نے کہا کہ آئندہ بھی اس قسم کے کیمپ منعقد کئے جائیں گے ۔انہو ں نے خواتین سے اپیل کی کہ وہ ایسے پروگرامو ں میں بڑھ چڑھ کے حصہ لیں۔
 
 

بیروزگار پنڈت نوجوانوں کا احتجاج27ویں دن بھی جاری

جموں// کشمیری پنڈت مائیگرنٹ بیروز گار نوجوانوں کا پریس کلب کے باہر احتجاجی دھرنا 27ویں روز میں داخل ہوا ہے۔ یہ لوگ سراکر سے وزیر عظم پیکیئج کے تحت انہیں بھرتی کرنے کا مطالبہ کر رہے ہیں۔یہ مائیگرنٹ ملازمین گذشتہ 27دنوں سے اپنے مطالبات کو لیکر احتجاج کر رہے تھے۔انکا مطالبہ ہے کہ انہوں نے وزیر اعظم مائیگرنٹ پیکئیج کے تحت درخواست گذاری کی تھی اور سرکار کی لیت و لعل پالیسی سے 2017سے انکی سلیکشن اٹک گئی ہے ،جسکی وجہ سے انہیں کافی مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ تب سے کئی نوجوان زائد العمر بھی ہوگئے ،جسکی وجہ سے وہ درخواست گذاری کے اہل بھی نہیں رہ گئے ہیں ۔ انہوں نے ایل جی انتظامیہ سے ان سلیکشن فہرستوں کو فوری طور سے جاری کرنیکا مطالبہ کیا ہے۔انہوں نے ہندر لیڈروں سے بھی اس سلسلہ میں آگے آکے انکے مطالبہ کی حمایت کرنے کو کہا ہے ،تاکہ انہیں اور انکے اہل خانہ کو راحت ہو،جو بھوک مری کے دہانے پر کھڑے ہیں۔انہوں نے کہا کہ گذشتہ26 دنوں سے ہڑتال پر بیٹھے ان نوجوانوں کی صحت بھی خراب ہو رہی ہے اور اگر کوئی بھی نا خوشگوار واقعہ رونما ہو رہا ہے ،تو اسکی ساری ذمہ واری سرکار پر عائد ہوتی ہے۔انہوں نے ایل جی سے اس سلسلہ میں ذاتی مداخلت کرکے اُن سے اپیل کی ہے کہ انکے مطالبات پر ہمدردانہ غور کیا جائے ۔
 
 
 

معروف ڈنٹل سرجن ڈاکٹر لنکر کے انتقال پر | انڈین ڈینٹل ایسوسی ایشن کا اظہار تعزیت 

سرینگر //انڈین ڈینٹل ایسوسی ایشن شاخ جموں کشمیر نے معروف ڈاکٹر محمد امین لنکر کے انتقال پر دکھ اور رنج و غم کااظہار کیا ہے ۔ ایسوسی ایشن نے ڈاکٹر لنکر کے انتقال کو ڈینٹل شعبہ کیلئے لاتلافی نقصان قراردیا ہے۔ایسوسی ایشن نے کہا کہ ڈاکٹر محمد امین ایک نیک اور ہمدرد ڈاکٹر تھے جو اپنے مریضوں کے ساتھ خندہ پیشانی کے ساتھ پیش آتے تھے اور یہی وجہ تھی کہ لوگوں میں ان کی قدر و عزت کافی تھی ۔ ڈاکٹر محمد امین لنکر گورنمنٹ میڈیکل کالج امرتسر سے 1964میں گریجویٹ ہوئے تھے ۔ مرحوم نے جموں کشمیر میں شعبہ ڈینٹل کو بہتر بنانے کیلئے قابل تعریف کام کیا اور ہمیشہ سے ہی لوگوں کی خدمت میں لگے رہے ۔ اس دوران ڈاکٹر جاوید سٹیٹ سیکریٹری انڈین ڈینٹل ایسوسی ایشن نے کہا کہ قوم ایک ہمدرد اور قابل معالج سے محروم ہوگئی ہے ۔ ایسوسی ایشن نے آخر پر مرحوم کے اہلخانہ کے ساتھ دلی ہمدردی اور تعزیت کااظہار کیا ۔
 
 

 کے این ایس نیوز ایڈ یٹر میر عرفان کو صدمہ | فاروق راتھر کے ساتھ تعزیت کا سلسلہ جاری  

سرینگر//کشمیر نیوز سروس ( کے این ایس ) کے ایڈیٹر میر عرفان کے موسا جان جمعہ کی صبح اچانک انتقال کر گئے ۔اس دوران مختلف طبقہ ہائے فکر کے ساتھ ساتھ ادارہ کشمیر نیوز سروس نے سوگوار کنبے کے ساتھ تعزیت کا اظہار کر کے مرحوم کے حق میں دعا مغفرت کی ہے ۔اس دوران سی این ایس بیرو چیف فاروق راتھ کے ساتھ بھی مختلف تنظیموں نے اظہار ہمدری کی ۔میر عرفان کے موسا جان عبد السلام ڈار ولد مرحوم غلام قادر ڈار ساکن نشاط حال ارم لین،سیکٹرڈی بڈشاہ نگر سرینگر ایس ایم ایچ ایس ہسپتال میںجمعرات کی صبح حرکت قلب بند ہونے کے دوران مالک حقیقی سے جا ملے۔ منیجنگ ڈائر یکٹر کے این ایس میڈیا گروپ محمد اسلم بٹ نے مرحوم کی وفات پر پورے خاندان خاص کر میر عرفان کے ساتھ تعزیت کا اظہار کر کے مرحوم کے حق میںدعاء مغفرت اور لواحقین کے صبر جمیل کی دعا کی ہے۔ادھر کشمیر نیوز سروس کے دفتری عملے نے بھی اپنے ساتھی میر عرفان کے ساتھ تعزیت اور یکجہتی کا اظہار کیا ہے ۔ انجمن اردو صحافت نے بھی میر عرفان کے ساتھ تعزیت اور ہمدردی کا اظہار کیا ۔دریں اثنا اس دوران سی این ایس کے نامہ نگار فاروق احمد اتھر کے ساتھ تعزیت کا سلسلہ جاری ہے ۔صحا فتی، سیاسی سما جی اور مذ ہبی طبقوں و حلقوںسے تعلق رکھنے والی شخصیا ت نے سی این ایس بیرو چیف جنوبی کشمیر فاروق احمد راتھر کے بھانجے ہارون رشیدبیگ جو جمعرات کی شام فا ئر نگ کے ایک واقعہ میںجاں بحق کئے گئے کی موت پر ان سے تعزیت اور ہمدردی کا اظہارکیا ہے، اور مرحوم کی جنت نشینی کیلئے دعا کی ہے ۔