تازہ ترین

این آئی اے کی کارروائی دوسر ے روز بھی جاری

سرینگر، بارہمولہ، اننت ناگ، کولگام اور دہلی میں چھاپے

تاریخ    30 اکتوبر 2020 (00 : 01 AM)   


نیوز ڈیسک
سرینگر//قومی تحقیقاتی ایجنسی (این آئی اے) نے کہا ہے کہ ان کی جانب سے جمعرات دوسر ے روز بھی وادی کشمیر اور دہلی میں چھ مقامات پر چھاپہ مارکا رروائیوں کا سلسلہ جاری رہا۔ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ بدھ کو چھاپہ مار کارروائیوں کی کڑی کے طور پر جمعرات کو سرینگر، بارہمولہ، اننت ناگ، کولگام اور دہلی میں دو مقامات پر تلاشیاں لی گئیں۔بیان کے مطابق یہ کارروائیاں کچھ غیر سرکاری رضاکار تنظیموں  اور ٹرسٹوں کی خلاف فنڈس جمع کر کے انہیں علیحدگی پسندسرگرمیوںکیلئے استعمال میں لانے کی شکایت کے سلسلے میں کی گئیں۔بیان میں کہا گیا ہے کہ مرکزی وزارت داخلہ کو اس ضمن میں کچھ مصدقہ طور پر اطلاعات موصول ہوئیں جنکی تحقیقات کرنے کیلئے این آئی اے کو  کارروائی کی اجازت دی گئی۔اطلاعات میں کہا گیا ہے کہ کچھ رضاکار تنظیمیں اور ٹرسٹ مقامی اور بیرونی سطح پر عطیہ کے نام پر فلاحی سرگرمیوں ، جیسے تعلیم اور عوامی صحت ،کیلئے رقوم جمع کررہی ہیں،جو مختلف ذرائع سے بھیجی جارہی ہیں لیکن بعد میں ان رقومات کو علیحدگی پسندی کیلئے استعمال میں لایا جاتا ہے تاکہ یہاں علیحدگی پسندی اور جنگجویت کو زندہ رکھا جاسکے۔اس سلسلے میں تحقیقات کو آگے بڑھاتے ہوئے  جموں کشمیر یتیم  فائونڈیشن سرینگر اور کولگام، ظفر اکبر بٹ کی سربراہی والی سالویشن مومنٹ، ہیومن ویلفیئر فائونڈیشن دہلی  اور اننت ناگ، عبدالقدیر کی سربراہی والی جموں کشمیر وائس آف وکٹمز بارہمولہ، جی ایم بٹ کی سربراہی والے فلاح عام ٹرسٹ بڈگام اور  ظفر الا سلام  کی سربراہی والے چیریٹی الائنس دہلی شامل ہیں۔ادھر ذرائع کا کہنا ہے کہ باغ مہتاب میں ظفر اکبر بٹ کے گھر کے علاوہ کولگام میں یتیم فاؤنڈیشن  کے سابق سربراہ مشتاق احمد ٹھوکر کے گھر پر بھی تلاشی لی گئی۔ کرناٹک کے دارالحکومت بنگلور میں بھی این آئی اے کی جانب سے متعدد مقامات پر چھاپہ مار کارروائی انجام دی گئی۔
 

تازہ ترین