تازہ ترین

جامع تجارتی اتحاد کیلئے کوششیں تیز

کشمیر ٹریڈرس یونائٹیڈ فورم کی محمد صادق بقال اور انکی ٹیم سے ملاقات

تاریخ    28 اکتوبر 2020 (00 : 01 AM)   


سرینگر// تجارتی انجمنوں اور جماعتوں کو ایک ہی چھت لانے کیلئے کشمیر ٹریڈرس یونائٹیڈ فورم نے منگل کو محمد صادق بقال کی سربراہی والے کشمیر ٹریڈٖرس اینڈ مینو فیکچرس فیڈریشن کے لیڈراں سے ملاقات کی،جس کے دوران آپسی اتحاد و اتفاق اور تاجروں کو ایک پلیٹ فارم کے نیچے جمع کرنے پر تبادلہ خیال ہوا۔ فورم کی جانب سے فاروق احمد ڈار،حاجی نثار احمد ،شیخ ہلال ،فاروق احمد بطخوکے علاوہ طاہر احمد نے شرکت کی جبکہ کے ٹی ایم ایف کے دھڑے کی جانب سے حاجی محمد صادق بقال،جنرل سیکریٹری شاہد حسین میر، محی الدین صوفی،معراج الدین،رئیس احمد اور اعجاز احمد کے علاوہ شوکت احمد نے شرکت کی۔میٹنگ کے دوران انہیں تجارتی اتحاد اور تاجروں کی فلاح و بہبودی کیلئے مشترکہ پلیٹ فارم کے تلے آنے کی دعوت دی گئی۔ فاروق احمد ڈار نے میٹنگ سے خطاب کرتے کہا کہ بانت بانت کی بولیاں بولنے اور تجارتی انجمنوں کے تقسیم در تقسیم کی پالیسی نے تجارتی مفادات کو جہاں پہنچا دیا ہے وہیں تاجروں کی بھی حوصلہ شکنی کی ہے۔انہوں نے کہا کہ تاجروں کو ایک ہی چھت کے نیچے لانے کی جو پہل شروع کی گئی ہے اس کو پایہ تکمیل تک پہنچایا جائے گا اور یہ رابطہ مہم جاری رہے گی۔انہوں نے واضح کیا کہ تجارتی انجمنوں کے اتحاد اور منصفانہ انتخابات کے بعد فورم کو تحلیل کیا جائے گا کیونکہ فورم کا مقصد ہی تجارتی انجمنوں کو یکجا ایک جگہ اور پلیٹ فارم پر جمع کرنا ہے۔کشمیر ٹریڈرس یونائٹیڈ فورم کے چیئرمین نے کہا کہ آئندہ دنوں میں مزید ٹریڈ لیڈروں اور انجمنوں کے نمائندوں سے ملاقات کا سلسلہ شروع کیا جائے گا،جس کے بعد اضلاع کا رخ بھی کیا جائے گا۔ انہوں نے تاجروں کو یقین دہانی کرائی کہ جس پہل کا آغاز انہوں نے کہا ہے اس کو تجارتی و کاروباری فلاح و بہبود کیلئے ہمہ وقت جاری رکھا جائے گا۔ محمد صادق بقال اور انکی ٹیم نے اتحاد کی حمائت کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ وہ اس چیز کے قائل ہے کہ تجارتی انجمنوں میں اتحاد وقت کی ضرورت ہے۔ان کا کہنا تھا کہ وہ از خود کافی عرصے سے اتحاد کے حوالے سے سرگرم ہیںاور ایسے کسی بھی کوشش کا ساتھ دیںگے جس کا مقصد تاجروں کی فلاح و بہبودی ہو۔بقال نے تاجروں کو ایک ہی پلیٹ فارم کے نیچے جمع کرنے کی تجویز اور اتحاد سے اتفاق کرتے ہوئے کہا کہ متحد ہوکر ہی تاجروں کے مسائل کا ازالہ ہوسکتا ہے۔