’گپکارعوامی اتحاد ‘کا ڈھانچہ تشکیل

فاروق صدر، محبوبہ نائب صدر، تاریگامی کنوینر اور سجاد لون ترجمان مقرر

تاریخ    25 اکتوبر 2020 (00 : 01 AM)   


بلال فرقانی

جموں و کشمیر کا پرچم الائنس کا ’نشان‘، ایک ماہ کے اندر وائٹ پیپر جاری ہوگا 

 
سرینگر// عوامی اتحاد برائے گپکار اعلامیہ (پیپلز الائنس فار گْپکار ڈیکلریشن) کو باضابطہ طور پر ایک پلیٹ فارم کی شکل دی گئی۔ ڈاکٹر فاروق عبداللہ کو اس سیاسی اتحاد کا سربراہ ،محبوبہ مفتی کو نائب صدر، سجاد غنی لون کوترجمان،محمد یوسف تاریگامی کوکنونیئر اور جسٹس(ر) حسنین مسعودی کو کارڈی نیٹرمقررکیا گیا ۔جموں و کشمیر کا پرچم اس اتحاد کا نشان چن لیا گیا ہے جبکہ اس ’اتحاد‘ نے ملکی عوام کو یہاں کی زمینی حقیقت سے باخبر کرنے کیلئے ایک ماہ کے اندر ایک وائٹ پیپر جاری کرنے کا اعلان کیا ہے۔ اتحادی جماعتوں کی اگلی میٹنگ جموں میں ہوگی جبکہ 17 نومبر کو سرینگر میں ایک کنونشن کا انعقاد کرنے کا اعلان بھی کیا گیا ہے۔'عوامی اتحاد برائے گپکار اعلامیہ' میں شامل سیاسی جماعتوں کے لیڈران کی ہفتے کو یہاں پی ڈی پی صدر محبوبہ مفتی کی رہائش گاہ پر 2گھنٹے تک جاری رہنے والے اجلاس میں دفعہ370اور35(اے) کی بحالی ،موجودہ سیاسی صورت ِ حال اور دیگر امورات پر تباد لہ خیال کیا گیا۔ہونے والی میٹنگ کے بعد ترجمان سجاد غنی لون نے نامہ نگاروں کو میٹنگ کے دوران لے گئے فیصلوں کی تفصیلات فراہم کی۔انہوں نے کہا: 'اتفاق رائے سے اتحاد کا ایک ڈھانچہ تشکیل دیا گیا ہے اور آنے والے وقت میں اس ڈھانچے کو مزید فعال بنایا جائے گا'۔سجاد لون نے کہا کہ جب 'اتحاد' کا نشان چننے کی باری آئی تو سبھی نے جموں و کشمیر کے پرچم کو اپنانے کے حق میں بات کی۔ ان کا کہنا تھا: 'پیپلز الائنس کے لئے نشان چننے کی بات زیر بحث آئی تو سب نے کہا کہ اس اتحاد کا وہی نشان ہوگا جو ہمارے سکریٹریٹ پر لہرا رہا تھا'۔ انہوں نے کہا کہ 'اتحاد' کی اگلی میٹنگ جموں میں ہوگی جبکہ اس کے بعد 17 نومبر کو ہمارا سری نگر میں کنونشن ہوگا۔ سجاد لون نے کہا کہ ملکی عوام کو یہاں کی زمینی حقیقت سے با خبر کرنے کے لئے ایک ماہ کے اندر ایک رپورٹ جاری کی جائے گی۔ انہوں نے کہا: 'یہ فیصلہ لیا گیا ہے کہ ایک مہینے کے اندر اندر ایک وائٹ پیپرجاری کیا جائے گا، اس کے ذریعے ہم حقیقت کو پورے ملک کے ساتھ رکھیں گے، غلط پروپیگنڈا کیا جاتا ہے کہ کشمیر اندھیرے میں تھا، یہاں پر کرپشن تھا'۔ ان کا مزید کہنا تھا: 'ہم تحقیق پر مبنی ایک رپورٹ جاری کریں گے جس میں ہر ایک بات کا احاطہ کیا جائے گا۔ وہ رپورٹ جموں و کشمیر کے لوگوں کو خراج تحسین ہوگی جنہیں پورے ملک میں بدنام کیا جا رہا ہے'۔ اس موقع پر محمد یوسف تاریگامی نے بات کرتے ہوئے کہا کہ اس رپورٹ میں ہم بتائیں گے کہ پچھلے ایک سال کے دوران جموں و کشمیر کے ساتھ کیا گیا ہے۔ ان کا مزید کہنا تھا: 'یہاں کی تجارت کے ساتھ کیا گیا ہے، کیا پچھلے ایک سال کے دوران کوئی ترقی ہوئی ہے۔ اس رپورٹ میں سب کچھ بتا دیا جائے گا۔ یہ رپورٹ کسی بیان بازی پر مبنی نہیں ہوگی'۔

تازہ ترین