تازہ ترین

کاروباری اور تجارتی انجمنوں کے وفودکمشنر سیکریٹری صنعت سے ملے

تجارتی شعبے کی بحالی اور روایتی صنعتوں کوفروغ دینے پر تبادلہ خیال

تاریخ    24 اکتوبر 2020 (00 : 01 AM)   


سرینگر// کاروباری و صنعتی انجمنوں نے جمعہ کو محکمہ صنعت و حرفت کے کمشنر سیکریٹری ایم کے دیویدی سے ملاقات کی،جس کے دوران تجارتی شعبے کی بحالی اور مقامی و ثقافتی صنعت کو فروغ دینے پر تبادلہ خیال کیا گیا۔ پی ایچ ڈی چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹرئز کشمیر چیپٹر اور فیڈریشن چیمبر آف انڈسٹرئز کشمیر نے کمشنر سیکریٹری انڈسٹرئز اینڈ کامرس سے ملاقات کے دوران اپنے مسائل اور تحفظات پیش کیے۔ ان انجمنوں نے علیحدہ علیحدہ میٹنگوں کے دوران کمشنر سیکریٹری صنعت و حرفت سے تجارتی حلقوں کو درپیش کئی مسائل، بازاروں میں دخل اندازی،تجارت کی بحالی، قالین بافی صنعت کی بحالی اور فروغ  اور صنعتی پالیسی کے علاوہ دیگر مسائل پر تبادلہ خیال کیا۔ کمشنر سیکریٹری نے تجارت کی بحالی کیلئے ان انجمنوں سے تجاویز  طلب کیں اور انہیں یقین دہانی کرائی کہ انکی تجاویز اور مطالبات کو زیر غور لایا جائے گا۔فیڈریشن چیمبر آف انڈسٹرئز کشمیر کے صدر شاہد کاملی نے کہا کہ حکومت تمام فریقین کو نئی پالیسی تیار کرنے سے قبل اعتماد میں لے،جبکہ سرکار تجارت معقول بحالی پروگرام یا کسی اور دخل اندازی سے متعلق منصوبے کو سامنے لائے۔ کمشنر سیکریٹری نے انہیں ٹھوس منصوبہ پیش کرنے کی صلاح دیتے ہوئے کہا کہ کسی بھی مستقبل کے پلان  میں شامل کیا جائے۔پی ایچ ڈی چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹرئز کشمیر چیپٹر کی سربراہی مشتاق احمد چایہ کررہے تھے،جبکہ انہوں نے مطالبات پیش کرتے ہوئے کہا کہ تمام صنعتی فوائدکو سیاحت تک توسیع دینے کی ضرورت ہے۔انہوں نے کہا کہ سماجی و معاشی  فلاح و بہبودی اور ہنر مندوں کو با اختیار کرنے کے علاوہ قالین صنعت سے جڑے بنکرئوں کیلئے  ثقافتی صنعت کی سر نو پیدواری فنڈ اسکیم کو نافذ عمل بنایا جائے اور اس سلسلے میں سرینگر کے عام سہولیاتی مرکز کو متحرک کرنے کی ضرورت ہے۔ انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ ریشم صنعت کو کافی اہمیت حاصل ہے،جس سے روزگار کا حصول اور زر مبادلہ بھی حاصل ہوگا۔ پی ایچ ڈی چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹرئز کشمیر چیپٹر نے موجودہ35ریشم پیدا کرنے والے یونیٹوں کی بحالی اور باز آبادکاری کے علاوہ جموں کشمیر میں تجارت کی بحالی کا بھی مطالبہ کیا۔