پلوامہ اور شوپیان میں معر کہ آرائیاں | 5جنگجو جاں بحق

مقامِ تصادم کے قریب جھڑپیں، پلوامہ میں انٹر نیٹ سروس معطل، شوپیان میں بحال

تاریخ    21 اکتوبر 2020 (00 : 01 AM)   


سید اعجاز+شاہد ٹاک
پلوامہ+شوپیان//جنوبی کشمیرمیںپلوامہ اور شوپیان کے دو جڑواں اضلاع میں 5جنگجو جاں بحق ہوئے۔جنگجوئوں کو سپرد خاک کرنے کیلئے بارہمولہ اور ہندوارہ لیا گیا۔مسلح تصادم آرئیوں کے فوراً بعد دونوں اضلاع میں انٹر نیٹ سہولیات معطل کی گئیں۔پلوامہ میں مقام جھڑپ کے نزدیک گڈورہ اور سنگھو نارہ بل میں تشدد آمیزتصادم آرائیاں ہوئیں۔

پلوامہ

 پولیس کے مطابق پلوا مہ کے ہکری پورہ کاکہ پورہ گائوں میں جنگجوئوں کی موجودگی کی اطلاع ملنے کے بعد گائوں میں جنگجو مخالف آپریشن کیلئے 50آر آر، 183بٹالین سی آر پی ایف اور پولیس کے سپیشل آپریشن گروپ نے محاصرہ کیا اور بعد دوپہر قریب ایک بجے بستی کو محاصرے میں لے کرتلاشی کارروائیوں کا آغاز کیا۔اس دوران جونہی ممکنہ جگہ کی طرف فورسز نے  پیش قدمی کی تو جنگجوئوں نے فورسز پر فائرنگ کرکے فرار ہونے کی کوشش  اور میوہ باغ میں پناہ لی۔اس  کے بعد جنگجوئوں اور فورسز کے درمیان فائرنگ کا تبادلہ شروع ہوا جو کافی دیر تک جاری رہا جس میں پہلے ایک جنگجو جاں  بحق ہوا جبکہ بعد میں ایک اور جنگجو کی ہلاکت ہوئی۔ تاہم ایک جنگجو نے ایک رہائشی مکان میں پناہ لی جس کیخلاف شام تک آپریشن کیا گیا اور اسے بھی جاں بحق کیا گیا۔ آپریشن کے دوران ایک رہائشی مکان کو نقصان پہنچا۔پولیس کی جانب سے جنگجوئوں کی شناخت نہیں کی گئی ہے۔البتہ صرف اتنا بتایا گیا کہ مہلوک جنگجوئوں کی شناخت کے بعد انہیں ہندوارہ میں سپرد خاک کیا جائیگا اور  اگر ان کی کوئی مہلوک جنگجوئوں کے قریبی رشتہ داروں کی موجودگی میں اس عمل کو پورا کیا جائیگا۔ادھر مسلح تصادم کے دوران ہکری پورہ کے دو نزدیکی دیہات گڈورہ اور سنگھو نارہ بل میں نوجوان سڑکوں پر نکل آئے اور انہوں نے پولیس و فورسز پر پتھرائو شروع کیا جو کافی دیر تک جاری رہا۔ پتھرائو کرنے والے مظاہرین کو منتشر کرنے کیلئے آنسو گیس کے گولے پھینکے گئے۔ پر تشدد جھڑپوں کا سلسلہ دیر تک جاری رہا۔

شوپیان

 جنوبی ضلع شوپیان کے چندن پورہ میلہورہ زینہ پورہ میں 12گھنٹے تک جاری تصادم آرائی 2جنگجوئوں کے جاں بحق ہونے پر ختم ہوئی۔یہ معرکہ آرائی پیر کو میلہورہ گائوں میں اْس وقت شروع ہوئی جب گائوں میں 55آر آر، 178بٹالین سی آر پی ایف اور پولیس کے سپیشل آپریشن گروپ نے جنگجو مخالف آپریشن شروع کیا۔ جنگجوئوں نے فرار ہونے کی کوشش میں فورسز پر گولیاں چلائیں اور سفیدے درختوں کی ایک پرائیویٹ نرسری میں پناہ لی۔ پیر کی شام دیر گئے ایک جنگجو کو جاں بحق کیا گیا جبکہ گائوں کا محاصرہ رات بھر جاری رکھا گیا اور  فائرنگ کے تبادلے میں دوسرا جنگجو بھی مارا گیا۔۔پولیس کے مطابق معرکہ آرائی کے آغاز میں ہی پیر کی شام ایک جنگجو جاں بحق ہوا تھا جس کے بعد اندھیرے کی وجہ سے آپریشن ملتوی کیا گیا تھا۔ صبح جونہی آپریشن کا دوبارہ آغاز ہوا تو طرفین میں گولی باری کے دوران دوسرا جنگجو جاں بحق ہوگیا۔ پولیس کے مطابق جنگجوئوں کی شناخت32سالہ توصیف احمد کھانڈے  ولد عبدالسلام ساکن کھانڈے محلہ ہانگل بچھ یاری پورہ کولگام اور28سالہ عمر احمد ٹھوکر ولد گلزار احمد ساکن شگن پورہ کولگام  کے بطور ہوئی ہے۔ دونوں کا تعلق حزب المجاہدین سے تھا۔انہیں بارہمولہ میں قریبی رشتہ داروں کی موجودگی میں سپرد خاک کیا گیا۔

تازہ ترین