ایچ ڈی ایف سی کے نصف سال اور سہ ماہی مالیاتی نتائج ظاہر

۔30ستمبر کوختم ہونے والی سہ ماہی میںبینک کو7513کروڑ روپے کاخالص منافع

تاریخ    18 اکتوبر 2020 (00 : 01 AM)   


 سرینگر//ایچ ڈی ایف سی بینک لمیٹڈ کے بورڈ آف ڈائریکٹرز نے ہفتہ ، 17 اکتوبر 2020 کو ممبئی میں منعقدہ اپنے اجلاس میں 30 ستمبر2020  کے اختتام والے سہ ماہی کے لئے بینک (انڈین جی اے اے پی) کے نتائج کی منظوری دی۔  بینک کے قانونی آڈیٹرز کے ذریعہ اکاؤنٹس کو آڈٹ کیا گیا۔بینک کی خالص آمدنی (خالص سودی آمدنی کے علاوہ دوسری آمدنی) 30 ستمبر2020 کو  اختتام ہونے والی سہ ماہی میں بڑھ کر 21ہزار868.8 کروڑ ہوگئی جو 30 ستمبر ، 2019 کو ختم ہونے والی سہ ماہی کے لئے 19ہزار103.8 کروڑ روپے تھی۔ خالص سودی آمدنی (سود آمدنی بغیر توسیع سود) سہ ماہی  30 ستمبر 2020 کو 16.7  فیصد اضافے سے15ہزار776.4 کروڑ روپے رہی ، جو 21.5 فیصد کی اثاثہ ترقی سے ہوا اور   سہ ماہی کے لئے بنیادی سود کا  منافع4.1 ہے۔دیگر آمدنی(غیر سودی آمدنی)6ہزار92.5کروڑ روپے جو کہ ستمبر کے آکر تک اختتام ہونے والے سہ ماہی میں آمدنی کا27.9فیصد تھی جبکہ گزشتہ برس اسی عرصے میں یہ5ہزار588.7کروڑ روپے تھا۔دوسری آمدنی کے چار اجزاء  30 ستمبر کو ختم ہونے والی سہ ماہی ، 2020 میں3ہزار940.3 کروڑ  روپے ہے(گزشتہ سال کی اسی سہ ماہی میں،4ہزار54.5 کروڑ) ،  تھی۔غیر ملکی زرمبادلہ اور ماخوذ آمدنی560.4 کروڑ (گزشتہ سال کی اسی سہ ماہی کے لئے 551.7 کروڑ) تھی۔ فیس اور کمیشن  کے مد میں ایک ہزار16.2کروڑ روپے درج کئے گئے جوگزشتہ سال کی اسی سہ ماہی میں480.780 کروڑ کا فائدہ) اور متفرقہ آمدنی ، بشمول آمدنی575.675 کروڑ (گذشتہ سال کی اسی سہ ماہی کے لئے502.02 کروڑ)  تھی۔ پچھلی سہ ماہی میں بڑے پیمانے پر  کووِڈوبائی مرض کا سامنا کرنا پڑا تھا ، کچھ نرمی موجودہ سہ ماہی میں جاری رہی جس کی وجہ سے خوردہ قرضے کی ابتدا ، صارفین کے ذریعہ ڈیبٹ اور کریڈٹ کارڈ کا استعمال ، جمع کرنے کی کوششوں میں کارکردگی اور کچھ مخصوص فیسوں کی چھوٹ ہے۔ اس کے نتیجے میں ، فیسوں / دیگر آمدنی میں تقریبا 800کروڑ کم تھے۔ تاہم ، پچھلی سہ ماہی کے مقابلے میں قرض اور کارڈ کی رفتار میں بہتری آئی ہے ، جس سے اس فرق کو آدھے سے بھی کم کردیا گیا ہے۔30 ستمبر ، 2020 کو ختم ہونے والی سہ ماہی کے لئے آپریٹنگ اخراجات 8ہزار55.1کروڑ تھے ، جو گذشتہ سال کی اسی سہ ماہی کے دوران، 7ہزار405.7کروڑ کے مقابلے میں 8.8 فیصد کا اضافہ ہوا ہے۔ سہ ماہی کے لئے لاگت سے انکم آمدنی کا تناسب36.88 فیصد تھا جبکہ گزشتہ برس کو ختم ہونے والی اسی سہ ماہی میں یہ 38.8 فیصد تھا۔رپورٹ کردہ مخصوص کریڈٹ لاگت کا تناسب 0.47فیصد تھا۔ پیشہ ورانہ بنیادوں پر یہ بنیادی کریڈٹ لاگت کا تناسب (اثاثہ معیار کے حصے کے تناظر میں) 0.91 فیصد تھا ، جبکہ30 جون ، 2020 کو ختم ہونے والی سہ ماہی میں 1.08 فیصد اور 30ستمبر ، 2019کو ختم ہونے والی سہ ماہی میں 0.90 فیصد تھا۔30 ستمبر 2020 کو ختم ہونے والی سہ ماہی میں ٹیکس سے قبل منافع 10ہزار110.3کروڑ تھا۔ ٹیکس وصول کرنے کے لئے 2ہزار597.2کروڑ فراہم کرنے کے بعد ، بینک کو 7ہزار.513کروڑکروڑ کا خالص منافع ہوا ، جو 30 ستمبر ، 2019 کو ختم ہونے والی سہ ماہی کے دوران 18.4 فیصد کا اضافہ ہوا۔30 ستمبر 2020تک کل بیلنس شیٹ کا حجم16لاکھ9ہزار428،،کروڑ تھا جو گزشتہ برس اسی مدت کے دوران  13لاکھ25ہزار72کروڑ تھا ، جس میں 21.5 فیصد کا اضافہ ہوا ہے۔

تازہ ترین