تازہ ترین

لال منڈی میں آرگنک سبزیوں کے سیل سینٹر کا اِفتتاح | ایسی منڈیوں کو ضلع سطح تک بڑھاوا دیا جائے گا:نوین چودھری

تاریخ    6 اکتوبر 2020 (00 : 02 AM)   


نیوز ڈیسک
سرینگر// پرنسپل سیکرٹری زرعی پیداوار اور کسان بہبود محکمہ نوین کمار چودھری نے کل یہاں زراعت کمپلیکس لال منڈی میں پہلے آرگنک سبزی سیل سینٹر کا اِفتتاح کیا۔اس موقعہ پر پرنسپل سیکرٹری نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ آرگنک کاشتکاری کو دنیا بھر میں فصلوں کے پیداواری نظام کے طور پر تسلیم کیا جاتا ہے جو روایت ، اختراع اور جدید فارم ٹیکنالوجی،ہیلتھ سوئیل ، ماحولیاتی نظام اور لوگوں کی صحت کو برقرار رکھ سکتا ہے۔نوین چودھری نے کہا کہ وقت کی ضرورت ہے کہ صارفین کو مناسب قیمت پر صحیح اور معیاری مصنوعات ملنے کے لئے ایسے مراکزکی توسیع دی جانی چاہیئے۔ اُنہوں نے کہا کہ آرگنک کاشت سب سے زیادہ منافع بخش فارم کے طور پر اُبھر رہی ہے اور اس کو جموں و کشمیر بھر میں فروغ دینے کی ضرورت ہے۔اُنہوں نے مزید کہا کہ نامیاتی مصنوعات کی طلب میں تیزی سے اِضافہ ہورہا ہے کیونکہ صحت کے فوائد اور کھانے کی حفاظت کی ضروریات کی وجہ سے عام صارفین میں کھانے کی کوالٹی اور حفاظت نے کافی توجہ حاصل کی ہے۔ اُنہوں نے ضلع سطح پر اس قسم کی مارکیٹ قائم کرنے کی بھی ہدایت دی تاکہ کاشتکاروں کو بہتر منافع ملے اور صارفین اپنی دہلیز پر تازہ اور معیاری سبزیاں حاصل کرسکیں۔ اُنہوں نے مزید کہا کہ یہ مراکز نوجوان تاجروں کو روزگار کے مواقع فراہم کرنے کے لئے گیم چینجرکے طور پر بھی ثابت ہوں گے۔نوین چودھری نے آرگنک سبزیوں کے کاشتکاروں کو اپنی پیداوار براہ راست صارفین کو فروخت کرنے کے لئے ایک جگہ فراہم کرنے پر محکمہ زراعت کشمیر کو مبارکباد پیش کی۔وادی میں نامیاتی شعبے کی کامیابی کی وضاحت کرتے ہوئے ڈائریکٹر زراعت الطاف اعجاز اندرابی نے کہا کہ آرگنک سبزیاں یہاں باقاعدگی سے کھانوں کی کھپت کا لازمی جزو بن رہی ہیں جس کے لئے محکمہ مختلف اِقدامات اُٹھا رہا ہے۔ اُنہوں نے مزید کہا کہ کاشتکاروں کو جگہ کی فراہمی اور اِن مارکیٹوں کو ضلع سطح تک توسیع دینے کی ضرورت ہے۔