تازہ ترین

مرکز خصوصی روزگار پیکیج کا اعلان کریں: حکیم

تاریخ    2 اکتوبر 2020 (00 : 02 AM)   


 
سرینگر//پیپلز ڈیموکریٹک فرنٹ سربراہ حکیم محمدیاسین نے جموں وکشمیر میں بڑھتی بے روزگاری پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے حکومت کوہدف تنقید بناتے ہوئے کہا کہ وہ بے روزگاری کے مسلے سے نپٹنے میں بری طرح ناکام ہوئی ہے۔ انہوں نے مرکزی حکومت سے مطالبہ کیا کہ وہ جموں وکشمیر کے بے روزگار نوجوانوں کو روزگار فراہم کرنے کیلئے ایک خصوصی روزگار پیکیج کا اعلان کرے۔ ایک بیان میں حکیم یاسین نے مطالبہ کیا کہ مختلف محکموں میں خالی پڑی قریب 80ہزار اسامیوں کو فوری طور فاسٹ ٹریک بنیادوں پر پُر کریں اور ان سامیوں کو فاسٹ ٹریک بنیادوں پر پُر کرنے سے متعلق حکومت کے وعدے اور یقین دہانیاں گزشتہ 2سابق گورنروں کے دور سے آج تک بالکل کھوکھلے ثابت ہورہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ تعلیم یافتہ بے روزگار نوجوانوں کو حالات کے رحم و کرم پر چھوڑا گیا ہے اور وہ اب ناامیدی کے عالم میں ڈرگ مافیہ اور دیگر سماجی برایوں کے جال میں بری طرح سے  پھنستے جارہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ چونکہ جموں وکشمیر جغرافیائی اعتبار سے نا موافق خطہ ارض پر واقع ہے جہاں صنعتوں کے قیام کیلئے ماحول سازگار نہیں ہے ،اس لئے حکومت کو بے روزگار نوجوانوں کیلئے سرکاری محکموں اور سمندر پار بیرونی ممالک میں روزگار کے وسائل ڈھونڈ لینے چاہیے اور اس سلسلے میں اوورسیز ایمپلایمنٹ کارپوریشن کو بحال کیا جانا چاہیے تاکہ جموں وکشمیر کے خواہشمند بے روزگار نوجوانوں کو وہاں روزگار کے مواقع فراہم کرنے کیلئے صحیح رہنمائی اور مدد فراہم کی جا سکے۔ حکیم یاسین نے مختلف سرکاری محکموں میں روزانہ اْجرتوں اور کیجول بنیادوں پر کام کررہے اہلکاروں کے علاوہ پچھلے 51برسوں سے نیشنل ہیلتھ مشن کے تحت کام کررہے اہلکاروں کی خدمات کو باقاعدہ بنانے کی بھی  مانگ کی ہے۔ حکیم یاسین نے حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ باغبانی شعبہ، جس کو جموں وکشمیر کے اقتصادیات کی ریڑھ کی ہڈی مانا جاتا ہے ، سے وابستہ زمینداروں کے مسائل کو حل کرنے کی طرف اولین توجہ مرکوز کریں اور انہیں پچھلے دو برسوں کے نا مساعد حالات کی وجہ سے ہوئے  مالی خسارے کی بھرپایی کے لئے امدادی پیکیج فراہم کریں۔ انہوں نے وادی سے روانہ ہونے والی میوہ ٹرکوں کے لئے سرینگر - جموں قومی شاہراہ کو آمدورفت کے لئے دن رات کھلا رکھنے کی ضرورت پر بھی زور دیا تاکہ میوہ اگانے والے زمیندار اور تاجر اپنے میوہ فصل کو کسی مشکل کے بغیر فروخت کرسکیں اور ٹرک ڈرائیوروں کو ہراساںنہ کیاجائے۔

تازہ ترین