تازہ ترین

نوجوان صحافی جاوید احمد کاحرکت قلب بند ہونے سے انتقال

کشمیر ایڈیٹرس گلڈ ، پریس کلب اور انجمن ارود صحافت سمیت دیگر صحافتی حلقوں کا اظہار رنج

تاریخ    2 اکتوبر 2020 (00 : 02 AM)   


فیاض بخاری
بارہمولہ//کشمیر کی صحافتی برادری میں جمعرات کو اس وقت ماتم کی لہر بچھ گئی جب ضلع بارہمولہ کے وترگام رفیع آبادسے تعلق رکھنے والے نوجوان صحافی جاوید احمد دل کا دورہ پڑنے سے انتقال کرگئے ۔موصوف انگریزی روز نامہ ’رائزنگ کشمیر‘کے ساتھ وابستہ تھے جبکہ ا س سے قبل وہ روزنامہ ٹربیون کے ساتھ بھی وابستہ رہ چکے ہیں ۔ اُن کے انتقال کی خبر پھیلتے ہی ان کے آبائی علاقے کے ساتھ ساتھ وادی کے صحافی برداری میں غم و اندو ہ کی لہر دوڑ گئی ۔ رائزنگ کشمیر سے وابستہ ایک صحافی نے کہا’’آج ہمارے دفتر واقع پریس کالونی سرینگر میں ایک میٹنگ تھی اسی میں شریک ہونے کیلئے جاوید سرینگر آ رہے تھے‘‘۔انہوں نے کہا’’ ہم نے ایک بار انہیں فون بھی کیا تو وہ فون پر بولے کہ میں راستے میں ہوں لیکن پٹن پہنچتے ہی ان کی حرکت قلب بند ہونے سے موت واقع ہوئی‘‘۔ جاوید احمد ایک مسافر بردار گاڑی میں سرینگر آ رہے تھے کہ پٹن پہنچتے ہی وہ دل کا دورہ پڑنے سے بے ہوش ہوگئے۔انہوں نے کہا کہ جاوید احمد کو بے ہوشی کے عالم میں ہی نزدیکی ہسپتال منتقل کیا گیا جہاں ڈاکٹروں نے انہیں مردہ قرار دیا۔30 سالہ جاوید احمد روز نامہ رائزنگ کشمیر کے لئے جاوید ابن نذیر کی بائی لائن کے تحت لکھتے تھے۔ چند ماہ قبل اُن کی شادی خانہ آبادی انجام پائی تھی۔ جونہی موصوف کے اچانک انتقال کی خبر پھیل گئی تو صحافتی برداری میںصف ماتم بچھ گئی جبکہ ان کے آبائی علاقے میں قیامت صغریٰ بپا ہوئی ۔ مرحوم کو نعش کو جونہی آبائی علاقہ پہنچایا گیا تو وہاں کہرام مچ گیااورلوگوں کی بھاری تعداد کی موجودگی میں انہیںسپرد لحد کیا گیا ۔جاوید احمد کی اچانک موت سے صحافتی براداری میں غم و اندوہ کی لہر دوڑ گئی اور سوشل میڈیا پر صحافیوں کے تعزیتی پیغامات کا سیلاب امڈ آیا ۔جاوید کے انتقال پر کشمیر ایڈ یٹرس گلڈ ، کشمیر پریس کلب ،انجمن اردو صحافت نے گہرے رنج و غم کا اظہار کرتے ہوئے مرحوم کے لواحقین سے تعزیت پرسی کی اور اللہ تعالی سے دعا کی کہ مرحوم کو جنت الفردوس میں جگہ دے اور لواحقین کو صدمہ برداشت کرنے کی توفیق بخشے ۔کشمیر ایڈیٹرس گلڈ نے نوجوان رپورٹر جاوید احمد کی موت پر گہرے صدمے کا اظہار کیا ہے۔ایک بیان میں گلڈ نے کہا ہے کہ یہ المناک واقعہ نہ صرف اُن کے خاندان بلکہ کشمیر کی صحافتی برادری کیلئے ناقابل برداشت ہے۔بیان کے مطابق صحافتی حلقے مغموم ہیں اور اپنے ساتھی کے انتقال پر سوگوار کنبے کے غم میں برابر شریک ہیں۔ کشمیریس پریس کلب کی جانب سے بھی جاری ایک بیان میں نوجوان صحافی کی اچانک موت پر گہرے دکھ اور صدمے کا اظہار کرتے ہوئے مرحوم کے حق میں دعا ی مغفرت اور پسماند گان کے صبر جمیل کی دعا کی ہے ۔انجمن اْردوصحافت کے ترجمان کی جانب سے موصولہ ایک بیان میں بتایا گیا کہ ا نجمن اْردوصحافت جموں وکشمیر کے تمام ذمہ داراورممبران ،جواں سال صحافی اورانگریزی روزنامہ رائزنگ کشمیر کے نامہ نگارجاوید احمدکی اچانک موت پر رنج وغم کااظہار کرتے ہوئے مرحوم کے والدین اوردیگرغمزدگان کے ساتھ دلی ہمدردی اورتعزیت کااظہار کرتے ہیں۔بیان کے مطابق انجمن دعاگوہے کہ اللہ تعالیٰ مرحوم کواپنی جواررحمت میں اعلیٰ مقام اورغمزدگان کو یہ صدمہ برداشت کرنے کی توفیق عطاکرے۔کشمیر پریس ایسوسی ایشن ،کشمیر ایڈٹرس ایسوسی ایشن ،یو این آئی سرینگر مرکز ،الیکٹرانک میڈیا ینڈ پرنٹ ایسوسی ایشن کے صدر سعید تجمل ،کے این ایس ،سی این ایس ،سی این آئی،ایشئین میل نے جاوید احمد کی اچانک موت پر پسماندگان کے ساتھ تعزیت کی ہے۔
 

محکمہ اطلاعات اور ایجیک کا اظہار یکجہتی

سرینگرمحکمہ اطلاعات ورابطہ عامہ نے جواں سال صحافی جاوید احمد کے انتقال پرتعزیت کا اظہار کیا ہے۔محکمہ کی جانب سے ناظم اطلاعات ڈاکٹر سید سحرش اصغر کی قیادت میں ایک تعزیتی میٹنگ منعقد ہوئی جس میں سوگوار کنبے سے تعزیت کا اظہار کیا گیا۔ انہوں نے کہا کہ مرحوم نے مقامی عوامی اہمیت کے حامل مسائل اجاگر کرنے میں ایک اہم کردار ادا کیا ہے ۔ انہوں نے سوگوار خاندان کے ساتھ گہری تعزیت کا اظہار کرتے ہوئے مرحوم کی روح کی دایمی سکون کیلئے دعا کی ۔ ادھر ایجیک کے صدر فیاض احمد شبنم نے تعزیت کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ جموں کشمیر نے ایک ابھرتے ہوئے صحافی کو کھودیا ہے۔انہوں نے سوگوار کنبے سے تعزیت کا اظہار کرتے ہوئے مرحوم کی جنت نشینی کیلئے دعا کی ہے۔انہوں نے موصوف کی رحلت کو ذاتی صدمہ قرار دیتے ہوئے کہا کہ ’’میں انہیں قریب سے جانتا تھا‘‘۔انہوں نے کہا کہ موصوف انتہائی شریف اور ایماندار تھے۔
 

نیشنل کانفرنس، کانگریس، پی ڈی پی،پی ڈی ایف اور اپنی پارٹی کا اظہار تعزیت

سرینگر//نیشنل کانفرنس نے نوجوان صحافی اور رائزنگ کمشیر کے سینئر رپورٹر جاوید ابن نذیر کے انتقال پر گہرے صدمے کا اظہار کیا ہے۔ پارٹی ترجمان عمران نبی ڈار نے اس سانحہ ارتحال پر مرحوم کے لواحقین کے ساتھ تعزیت کا اظہار کیا اور دعا کی کہ اللہ تعالیٰ مرحوم کو جنت الفردوس میں جگہ دے اور لواحقین کو اُنکی جدائی کا صدمہ برداشت کرنے کی ہمت عطا کرے۔انہوں نے رائزنگ کشمیر کے عملہ ادارت کیساتھ بھی تعزیت کا اظہار کیا کہ اور دعا کی کہ اللہ تعالیٰ انہیں بھی یہ صدمہ عظیم برداشت کرنے کی توفیق عطا فرمائے۔پیپلز ڈیموکریٹک پارٹی کے ترجمان اورپارٹی صدر محبوبہ مفتی کے میڈیا ایڈوائزر سہیل بخاری نے سینئر رپورٹر جاوید احمد کے موت پر گہرے رنج و غم کا اظہار کیا ہے۔انہوں نے کہا کہ موصوف انتہائی سنجیدہ اور شریف النفس انسان تھا۔انہوں نے سوگوار کنبے سے تعزیت کا اظہار کرتے ہوئے مرحوم کی مغفرت کیلئے دعا کی ہے۔ جموں وکشمیر پردیش کانگریس کمیٹی کے صدر غلام احمد میراور نائب صدر جی این مونگا نے  جواں سال صحافی جاوید ابن نذیر کے انتقال پر گہرے دکھ کا اظہار کیا ۔انہوں نے مرحوم کے لواحقین کیساتھ دلی تعزیت کا اظہار کیا اور دعا کی کہ اللہ تعالیٰ مرحوم کو جنت الفردوس میں جگہ دے اور لواحقین کو اُنکی جدائی کا صدمہ برداشت کرنے کی ہمت عطا کرے۔اپنی پارٹی صدرسید محمد الطاف بخاری نے دکھ اور صدمے کا اظہار کیا ہے۔ تعزیتی پیغام میں بخاری نے غمزدہ کنبہ، رائزنگ کشمیر کی انتظامیہ اور ادارتی عملہ کے ساتھ یکجہتی کا اظہار کرتے ہوئے مرحوم کے ایصال ِ ثواب کے لئے دعا کی ہے۔ انہوں نے کہا’’مجھے ذاتی طور بہت صدمہ پہنچاجس کو الفاظ میں بیان نہیں کیاجاسکتا، ایک نوجوان صحافی کی موت نہ صرف ایک کنبہ یا میڈیا برادری بلکہ پورے سماج کے لئے ناقابل ِ تلافی نقصان ہے‘‘۔ انہوں نے کہاکہ کسی بھی جمہوری نظام میںصحافی قیمتی اثاثہ ہوتے ہیں اور کسی بھی صحافی کو کھونا عوام کے لئے نہ پورا ہونے والا نقصان ہے۔ پیپلز ڈیموکریٹک فرنٹ کے چیئرمین حکیم محمد یاسین نے رنج و غم کا اظہار کرتے ہوئے مرحوم کی مغفرت کیلئے دعا کی ہے۔انہوں نے موصوف کی رحلت کو صحافتی برادری کیلئے ایک بڑا نقصان قرار دیا۔