لداخ کی صورتحال ٹھنڈا کرنے کی پھر کوشش

ہند چین فوجی کمانڈروں کی بات چیت بہت جلد

تاریخ    2 اکتوبر 2020 (00 : 02 AM)   


مانٹیرنگ ڈیسک
نئی دہلی +بیجنگ // بھارت اور چین نے سرحدی صورتحال کو ٹھنڈا کرنے کیلئے فوجی سطح پر ساتویں دور کی بات چیت کرنیکا فیصلہ کیا ہے۔لیکن دونوں ملکوں کی جانب سے فوری طور پر لداخ میں قریب 14000فٹ کی بلندی پراپنی پوزیشنوں کو تبدیل کرنے یا یہاں تعینات فوجیو ں میں کمی کرنے کا کوئی اشارہ نہیں دیا ہے۔دونوں ملکوں کے درمیان بدھ کو سفارتی سطح کی میٹنگ منعقد ہوئی میں بھارت کی نمائندگی خارجہ جوائنٹ سیکریٹری جنوبی ایشیاء نوین شری واستوا اور چین کے ڈائریکٹر جنرل سرحدی ڈیپاٹمنٹ اینڈ سمندری معاملات ہانگ لیانگ نے کی۔نئی دہلی میں سفارتی ذرائع نے کہا کہ ابھی چین کی جانب سے ایسا کوئی اشارہ نہیں ملا ہے کہ فوج میں کمی لائی جائے۔ ادھر بیجنگ میں چینی وزارت خارجہ کی طرف سے جاری ایک بیان میں کیا گیا کہ دونوں ملکوں نے اس بات پر اتفاق کیا کہ آپسی رابطوں کو مستحکم کیا جائے اور اسکے لئے فوجی کمانڈروں کے درمیان بہت جلد ساتویں دور کی بات چیت کی جائے۔بیان میں کہا گیا ہے کہ فوجی کمانڈروں کی بات چیت میں صحیح معنوں اور مناسب طریقے سے  دیگر سرحدی معاملات پر گفتگو کی جائے گی اور مشترکہ طور پر امن کے تحفظ کو یقینی بنانے کیساتھ ساتھ سرحدی علاقوں میں کشیدگی سے پاک ماحول قائم کیا جائے۔ چین نے اس بات کا اعادہ بھی کیا ہے کہ دونوں ملک مزید اقدامات کریں تاکہ سرحدی صورتحال کو ٹھنڈا کیا جاسکے ۔ چین نے کہا ہے کہ انہیں اس بات کی امید ہے کہ بہت جلدی اور مکمل طور پر فوجیوں کی واپسی کی جانب کام کیاجائے گا۔