کشمیری مائیگرنٹوں کیلئے کشمیر میں عبوری رہائشی سہولیات

بصیر خان نے منعقدہ میٹنگ میں جاری کام کا جائزہ لیا

تاریخ    2 اکتوبر 2020 (00 : 02 AM)   


سرینگر//لفٹینٹ گورنر کے مشیر بصیر احمد خان نے سول سیکرٹریٹ میں وزیر اعظم ترقیاتی پیکج کے تحت کشمیری مائیگرنٹوں کیلئے تعمیر کی جارہی عبوری رہایشی سہولیات کا ایک میٹنگ میں جائیزہ لیا ۔ مشیر نے ڈیزاسٹر منیجمنٹ ، ریلیف ، ری ہیبلی ٹیشن اور ری کنسٹریکشن محکمہ کو کام میں درپیش رکاوٹوں کو دور کر کے اس میں سرعت لانے کی ہدایت دی ۔ میٹنگ میں صوبائی کمشنر کشمیر ، سیکرٹری ڈی ایم آر آر آر ، امداد و باز آبادکاری کمشنر ( مائیگرنٹس ) جے اینڈ کے جموں ، چیف انجینئر تعمیراتِ عامہ اور ڈپٹی ڈائریکٹر ڈی ایم آر آر آر موجود تھے جبکہ صوبہ کشمیر کے ڈپٹی کمشنروں نے میٹنگ میں بذریعہ ویڈیو کانفرنسنگ شرکت کی ۔ دورانِ میٹنگ مشیر نے افسروں کو اپنی کوششوں کو تیز کر کے اہداف کا حصول مقررہ مدت کے اندر یقینی بنانے کیلئے کہا ۔ انہوں نے امداد و باز آباد کاری کمشنر ( مائیگرنٹ ) جموں کو اُن جگہوں کا ذاتی طور معائینہ کرنے کیلئے کہا جہاں یہ عبوری رہایشی سہولیات تعمیر کی جا رہی ہیں ۔ حکومت نے پی ایم ڈی پی 2015 کے تحت صوبہ کشمیر کے ہر ضلع میں وزیر اعظم پیکج کے تحت بھرتی کئے جانے والے افراد کی تعداد کے مطابق عبوری رہایشی سہولیات تعمیر کرنے کا فیصلہ لیا تھا ۔ میٹنگ میں بتایا گیا کہ صوبہ کشمیر کے مختلف اضلاع میں یہ عبوری رہایشی سہولیات تین مرحلوں میں تعمیر کی جا رہی ہیں ، پہلے مرحلے میں ویسو کولگام اور شیخ پورہ بڈگام میں ان سہولیات پر کام جاری ہے جہاں بالترتیب 48 اور 64 دو بی ایچ کے فلیٹ مکمل کئے گئے ہیں جبکہ باقی ماندہ فلیٹوں پر کام شدو مد سے جاری ہے ۔ عبوری رہایشی سہولیت مرحلہ دوم کے تحت ڈی گام شوپیاں ، فتح پور بارہمولہ ، کھلنگام باغ کپواڑہ ، مرہامہ اننت ناگ ، اوڈینہ بانڈی پورہ اور بند ہامہ گاندر بل میں کام جاری ہے جبکہ مرحلہ سوم کے تحت بابا دریا دین گاندر بل ، مچھ باون اننت ناگ اور بارسو پلوامہ میں یہ رہایشی سہولیات تعمیر کی جا رہی ہیں جس کیلئے اراضی الاٹ کی گئی ہے اور مفصل پروجیکٹ رپورٹ مرتب کی جا رہی ہے ۔ مرحلہ چہارم کے تحت عبوری رہایشی سہولیت شانگس اننت ناگ ، نتھنوسہ کپواڑہ اور زیون سرینگر میں تعمیر کی جا رہی ہے جس کیلئے اراضی کی نشاندہی کی گئی ہے اور اس کی منتقلی کا عمل زیر غور ہے ۔ مشیر نے متعلقہ افسران کو وزیر اعظم ترقیاتی پروجیکٹ کے تحت ہاتھ میں لئے گئے التوا میں پڑے پروجیکٹوں کیلئے مفصل پروجیکٹ رپورٹ فوری طور مرتب کرنے اور انہیں متعلقہ ایجنسیوں کو بروقت پیش کرنے کیلئے کہا ۔