تازہ ترین

ڈومیسائل قانون میں آئے روز ترامیم

غیر ریاستیوں کو اسناد کی فراہم کرنیکی منصوبہ بند سازش کا حصہ: این سی

تاریخ    1 اکتوبر 2020 (00 : 02 AM)   


نیوز ڈیسک
 سرینگر// نیشنل کانفرنس نے ڈومیسائل قوانین میں آئے روز ترامیم اور غیر ریاستی باشندوں کیلئے ڈومیسائل سرٹیفکیٹ کی حصولی کے عمل کو آسان بنانے پر شدید برہمی اور تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ نئی دلی میں براجمان حکمران جماعت ایک مذموم سازش کے تحت جموں وکشمیر میں غیر ریاستوں کو ڈومیسائل فراہم کرنے میں مصروف ہے۔ پارٹی نے کہا  ہے کہ مرکز نے غیر آئینی اور غیر جمہوری طور پر جموںو کشمیر کی خصوصی پوزیشن کا خاتمہ کیا اور اب ایک منصوبہ بند سازش کے تحت غیر ریاستوں کو ڈومیسائل سرٹیفکیٹ کی اجرائی میں جلد بازی کی جارہی ہے اور اس عمل کو آسان بنانے کیلئے ڈومیسائل قانون میں آئے روز ترامیم کی جارہی ہیں۔ ڈومیسائل سرٹیفکیٹوں کی اجرائی آئین اور جمہوری اصولوں کے منافی قرار دیتے ہوئے ترجمان عمران نبی ڈار نے کہا کہ ڈومیسائل سرٹیفکیٹوں کی اجرائی جموں وکشمیر تنظیم نو ایکٹ2019کے تحت کی جارہی ہے جو کو مختلف حصوں سے تعلق رکھنے والے 12عرضی گزاروں نے قانونی طور پر سپریم کورٹ میں چیلنج کیا ہے اور اس کی جوازیت اِس وقت تک ملک کی سب سے بڑی عدالت میں زیر سماعت ہے۔ انہوں نے کہا کہ ملک کی عدلیہ کے احترام میں تب تک ڈومیسائل سرٹیفکیٹوں کی اجرائی بند ہونی چاہئے جب تک نہ 5اگست کے فیصلوں سے متعلق عدالت عظمیٰ کا حتمی فیصلے سامنے آجائے۔ ترجمان نے کہا کہ مرکز کو چاہئے کہ وہ جموں وکشمیر تنظیم ایکٹ 2019کے تحت بنائے گئے قوانین کو واپس لیکر عدالت عظمیٰ کے فیصلے کا انتظار کرے۔