دربار مو دفاتر 30اکتوبر کو بند ہونگے

ملازمین کیلئے ریپڈ اینٹی جن ٹیسٹ لازمی ، چیف سیکریٹری کی ہدایت

تاریخ    1 اکتوبر 2020 (00 : 02 AM)   
(File Photo)

نیوز ڈیسک
سرینگر//دربار مو 2020 کی تیاریوں کا جائزہ لینے کیلئے ایک اعلیٰ سطحی اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے چیف سیکریٹری بی وی آر سبھرامنیم نے کہا کہ سالانہ دربار کے ساتھ چلنے والے ملازمین کیلئے ریپڈ اینٹی جن ٹیسٹ لازمی ہے۔ اس میٹنگ میں مختلف محکموں کے انتظامی سیکریٹریوں اور متعلقہ حکام نے بھی شرکت کی۔یہ دفاتر 30 اکتوبر 2020 کو سرینگر میں بند ہوں گے اور تمام دفاتر 9 نومبر 2020 کو جموں میں دوبارہ کھل جائیں گے۔ تاہم اکتوبر کے آخری ہفتے میں تعطیلات کے پیش نظران تاریخوں میں ترمیم بھی کی جاسکتی ہے۔اجلاس کو بتایا گیا کہ 30/31 اکتوبر 2020 اور 7-8 نومبر2020 کو سرکاری ریکارڈ اور ملازمین کی نقل و حمل کے لئے مناسب انتظامات کئے جارہے ہیں۔ سیکورٹی اور ٹرکوں و بسوں کی دستیابی، ریکوری وین، موبائل ورکشاپس، صحت کی سہولیات اور شاہراہ کے ساتھ ایمبولینسوں کے معاملات تفصیلی تبادلہ خیال کیاگیا۔چیف سکریٹری نے محکمہ ٹریفک کو ہدایت کی کہ وہ سرینگر سے جموں تک ملازمین کی نقل و حرکت کو یقینی بنائے۔ صوبائی کمشنر جموں سے ریکارڈ اور ملازمین سے متعلق نقل و حمل کی نگرانی کے لئے کنٹرول روم قائم کرنے کو کہا گیا۔ ڈپٹی کمشنررام بن کو ہدایت کی گئی کہ اگر لینڈ سلائیڈنگ / پتھراؤ کی وجہ سے شاہراہ پر ٹریفک میں خلل پیدا ہو تو ہنگامی منصوبہ تیار رکھیں۔محکمہ امورصارفین سے کہا گیا کہ وہ ملازمین کو راشن اور گیس کنکشن کی فراہمی کو یقینی بنائیں۔ چیف سکریٹری نے متعلقہ افراد پر زور دیا کہ وہ سرکاری ملازمین کی کالونیوں کے آس پاس راشن کاؤنٹر کھولیں، اس کے علاوہ ہوٹل میں رہائش پذیر ملازمین کو معیاری اور صحت بخش کھانے کی دستیابی کو بھی یقینی بنائیں۔چیف سکریٹری نے اسٹیٹس، پی ایچ ای، پی ڈی ڈی اور جموں میونسپل کارپوریشن کو بھی ہدایت کی کہ وہ ملازمین کی رہائشی کالونیوں کا معائنہ کریں اور مکمل صفائی، بجلی کی فراہمی، پینے کے صاف پانی اور دیگر بنیادی سہولیات کو یقینی بنائیں۔ انہوں نے محکمہ اسٹیٹس سے کہا کہ وہ جموں میں رہائشی  اور دیگر سہولیات سے متعلق ملازمین کی درخواستوں کے لئے ایک کنٹرول روم قائم کرے۔انہوں نے اسٹیٹس محکمہ سے کہا کہ وہ سول سیکریٹریٹ سرینگر میں ملازمین کے لئے پینے کے صاف پانی کی مناسب سہولیات اور صفائی ستھرائی کو یقینی بنانے کے لئے اضافی سہولیات کی فراہمی کرے۔یہ فیصلہ کیا گیا کہ صوبہ کشمیر کی ضروریات کو پورا کرنے کے لئے سردیوں کے موسم میں ایک منی سیکریٹریٹ کو سرینگر میں فعال رکھا جائے گا اور اس کے مطابق محکمہ اسٹیٹس کو ہدایت کی گئی کہ وہ سول سکریٹریٹ سرینگر میں مناسب رہائش اور سہولیات کی دستیابی کو یقینی بنائے۔لوگوں کی شکایات کے ازالے کے لئے مناسب غور و فکر کرتے ہوئے محکمہ عمومی انتظامیہ کو ہدایت کی گئی کہ وہ سرینگر سول سیکریٹریٹ میں دورانیہ کے اوقات میں عام لوگوں کے لئے شام 3 بجے سے شام 5 بجے تک توسیع کریں۔