مضبوط راجستھان کیخلاف بلند حوصلوں کیساتھ ُاترے گا کولکتہ

تاریخ    30 ستمبر 2020 (00 : 02 AM)   


 دبئی //کپتان دنیش کارتک کی سربراہی میں کولکتہ نائٹ رائیڈرز (کے کے آر) اپنی سابقہ جیت سے پرجوش بدھ کو آئی پی ایل 13 کے میچ میں ناقابل تسخیر اور جیت کے رتھ پر سوار راجستھان رائلز کے سامنے ایک زبردست چیلینج پیش کرنے کے ارادے سے اترے گا۔کولکتہ کو ٹورنامنٹ کے پہلے میچ میں دفاعی چمپئن ممبئی انڈینز سے ہارنا پڑا تھا جب کہ اس نے پچھلے میچ میں سن رائزرس حیدرآباد کو یکطرفہ انداز میں سات وکٹوں سے شکست دی تھی۔ اس سے قبل راجستھان نے آخری میچ میں چنئی سپر کنگز اور کنگز الیون پنجاب کو شکست دی تھی۔کولکتہ کی ٹیم دو میچوں میں ایک ہار اور ایک جیت کے ساتھ چھٹے نمبر پر ہے جبکہ راجستھان کی ٹیم دونوں میچ جیتتی ہے اور پوائنٹس ٹیبل میں چار پوائنٹس کے ساتھ دہلی کیپیٹلز کے بعد دوسرے نمبر پر ہے ۔کے کے آر کا مقابلہ راجستھان جیسی مضبوط ٹیم کے چیلنج سے ہوگا جس نے اب تک ٹورنامنٹ میں عمدہ کارکردگی کا مظاہرہ کیا ہے ۔ راجستھان نے کامیابی کے ساتھ پنجاب کے خلاف 223 رنز کا بڑا ہدف حاصل کیا تھا۔ اس جیت کی وجہ سے کپتان اسٹیون اسمتھ کی ٹیم کا حوصلہ بہت بلند ہے جسے کولکتہ کو مات دینا ہوگی۔پچھلے میچ میں راجستھان کے لئے جوز بٹلر کے علاوہ دوسرے ٹاپ آرڈر بیٹسمین نے عمدہ کارکردگی کا مظاہرہ کیا تھا اور ہاری بازی اپنے نام کی تھی۔ کے کے آر کا مقابلہ سنجو سیمسن سے ہوگا جس نے اب تک دھماکہ خیز بیٹنگ کی ہے ۔ سیمسن نے چنئی کے خلاف 74 اور پنجاب کے خلاف 85 رنز بنائے اور وہ دونوں میچوں میں مین آف دی میچ رہے ۔کپتان اسمتھ اپنی کارکردگی سے ٹیم کو راجستھان کے لئے مسلسل متحرک کررہے ہیں اور آخری میچ میں ان کی سیمسن کے ساتھ مضبوط شراکت تھی۔ راجستھان کی جانب سے پنجاب کے خلاف مڈل آرڈر بیٹسمین راہل تیوتیا کی دھماکہ خیز کارکردگی ناقابل یقین تھی اور یہ کولکتہ کے لئے خطرے کی گھنٹی ہے ۔بٹلر آئی پی ایل 13 کے اپنے پہلے میچ میں فلاپ رہے تھے ۔ انہوں نے پنجاب کے خلاف چار رن بنائے اور توقع کی جائے گی کہ وہ اگلے میچ میں بہتر کارکردگی دکھائیں گے ۔ بٹلر کی صلاحیت کسی سے پوشیدہ نہیں ہے اور اگر وہ اسمتھ کے ساتھ بڑی شراکت قائم کرنے میں کامیاب رہے تو اس سے کے کے آر کے لئے مشکلات پیدا ہوسکتی ہیں۔اگر کے کے آر کو جیت کا سلسلہ برقرار رکھنا ہے تو انہیں راجستھان کے ٹاپ آرڈر کو روکنا ہوگا۔ کولکتہ کے بولرز نے حیدرآباد کے خلاف بہت مضبوطی سے بولنگ کی۔ کے کے آر کے بالرز کو اپنے بلے بازوں کے لئے آسانیاں پیدا کرنے کے لئے اپنی کارکردگی کو دہرانا ہوگا۔راجستھان کے بلے بازوں کو کولکتہ کے پیٹ کمنس ، کملیش ناگرکوٹی ، سنیل نارائن اور چائنا مین بولر کلدیپ یادو جیسے خطرناک بولنگ اٹیک کا چیلنج درپیش ہوگا۔ اگر راجستھان اپنی جیت کی مہم جاری رکھنا چاہتی ہے تو انہیں کے کے آر کی بولنگ کا سامنا کرنا پڑے گا۔کولکتہ کے بولرز نے آخری میچ میں قابل ستائش کارکردگی کا مظاہرہ کیا تھا لیکن ان کے لئے سب سے بڑا مسئلہ ان کی ابتدائی جوڑی کی ناکامی ہے ۔ نارائن اور شبھمن گل کے کے آر کے لئے کھل رہے ہیں جس میں گل نے حیدرآباد کے خلاف اپنا کام بخوبی سر انجام دیا ہے لیکن نارائن دونوں میچوں میں فلاپ ثابت ہوئے ہیں۔ نارائن ممبئی کے خلاف نو رنز اور حیدرآباد کے خلاف کھاتہ کھولے بغیر آؤٹ ہوئے تھے ۔نارائن کئی سالوں میں بولنگ کے ساتھ ساتھ ٹیم کے لئے بیٹنگ میں بھی کولکتہ کے لئے ٹرمپ کارڈ ثابت ہوئے ہیں۔ اس وجہ سے ٹیم انتظامیہ نے انہیں اوپنر کی حیثیت سے کھلانے کا فیصلہ کیا۔ یہ ٹھیک ہے کہ ٹی ٹوئنٹی کرکٹ میں پہلی گیند سے ہی طوفانی اننگز کھیلنی ہوتی ہے لیکن نارائن کو یہ سمجھنے کی ضرورت ہے کہ انہیں نہ صرف بڑے شاٹس کھیلنے بلکہ ٹیم کو مضبوط آغاز دینے کے لئے بھی اوپننگ کیلئے بھیجا جاتا ہے ۔یو این آئی۔
 

تازہ ترین