دل کی بیماریوں کی روکتھام ممکن : فائنانشل کمشنر صحت

طرززندگی میں تبدیلی سے قلب کی بیماریوں سے بچاجاسکتا ہے

تاریخ    30 ستمبر 2020 (00 : 02 AM)   


سری نگر//  فائنانشل کمشنر صحت و طبی تعلیم اتل ڈولو نے آج عالمی یوم قلب کے موقعہ پر کہا کہ دل کی بیماریوں سے عالمی سطح پر سب سے زیادہ اموات ہوتی ہیں لیکن زندگی کے طور طریقوں میں تبدیل لا کر ان سے بچاجاسکتا  ہے۔فائنانشل کمشنر آج ویڈیو کانفرنسنگ کے ذریعے طبی پیشہ وروں سے خطاب کر رہے تھے۔ اس موقعہ پر ڈائریکٹر صحت کشمیر بھی موجود تھے۔۔اتل ڈولو نے کہا کہ قلبی امراض (سی وی ڈی) اور کووِڈ۔19 کے مابین ایک ربط ملا ہے لہٰذا دل کی دیکھ بھال کرنا پہلے سے زیادہ ضروری بنا ہے۔ ڈبلیو ایچ او کے حوالے سے اتل ڈولو نے کہا کہ ہر سال سی وی ڈی سے 17.9 ملین اَفراد کو جان سے ہاتھ دھونا پڑتا ہے اور یہ عالمی سطح پر ہونے والی اموات میں سے 31 فیصد ہے۔فائنانشل کمشنر نے مزید کہا کہ وادی میں ہونے والی اموات میں سی وی ڈی (کارڈیو ویسکولر ڈائسز) تقریباً  35 سے 45 فیصد ہیں اور کشمیر میں مجموعی طور پر سی وی ڈی کی شرح تقریباً 7 سے 10 فیصد ہے۔اُنہوں نے اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ زیادہ تر دل کی بیماریوں کو صرف صحت مند طرز زندگی کے انتخاب کو اپنانے سے بچایا جاسکتا ہے۔اَتل ڈولو نے کہاکہ اس بیماری کو لاحق ہونے میں کچھ خطرناک عوامل شامل ہیں جن میں تمباکو کا استعمال ، غیر صحت بخش غذا ، نمک کی بڑی مقدار ، جسمانی بے عملی ، الکوہل کا استعمال شامل ہے۔ انہوں نے کہا کہ ان مذکورہ چیزوں کو لوگ  قابو میں نہیں رکھتے ہیںجس کے نتیجے میں ہائی بلڈ پریشر ، بلڈ گلوکوز کا بڑھنا اور موٹاپا ہوسکتا ہے جو قلب کی بیماریوں کا سبب او رخطرہ بن سکتا ہے۔ انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ وقت کی اہم ضرورت ہے کہ ہم متحرک رہیں۔ انہوں نے کہا کہ اچھے دل کی صحت کے لئے ہفتے میں کم سے کم 150منٹ کی ورزش یا 75منٹ کی بھرپور ورزش ضرور ی ہے ۔اُنہوں نے مزید کہا کہ سگریٹ نوشی سے گریز کرنے، زیادہ وزن کم کرنے ، زیادہ کھانے سے اجتناب کرنے کی عادت ڈالنی چاہیئے تاکہ دل کی بیماریوں پر قابو پا یا جاسکے۔انہوں نے حکومت کے اقدامات کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ "ڈی ایچ اور ایس ڈی ایچ کی سطح پرایمرجنسی کمروں میں اضافہ ، دلی کی بیماریوں کے ادویات کی فراہمی اور دور دراز مقامات پرarrhythmias کو قابو کرنے کے لئے antiarrhythmic اَدویات کی دستیابی پہلے سے ہی موجود ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ افرادی قوت کی ہنر میں اَپ گریڈیشن اور صحت کے بنیادی ڈھانچے کی توسیع بھی ترجیحات میں شامل ہیں۔یہاں یہ بات قابل ذکر ہے کہ ’’ عالمی یوم قلب‘‘ کے اس برس کا موضوع’’Use heart to beat CVD‘‘ہے۔دریں اثناء ڈاکٹراوپندر کول وادی کے دور دراز مقامات پر مفت صحت  کیمپ کا انعقاد کر رہے ہیں۔ اس نے آج کپواڑہ میں مفت چیک اَپ اور علاج کیا او رکل سرحدی علاقے مژھل میں اسی طرح کا کیمپ منعقد کریںگے۔
 

تازہ ترین