تازہ ترین

۔21ماہ سے بند پڑی تنخواہوں کی واگذاری اور دیگر مطالبات

ہیلپروں، سُپر وائزوںاور محکمہ صحت کے عارضی ملازمین کاپریس کالونی میں احتجاج

تاریخ    30 ستمبر 2020 (00 : 02 AM)   


 سرینگر//محکمہ آئی سی ڈی ایس میں کام کر رہی ہیلپروںاور سُپر وائزوں نے کل پریس کالونی میںاپنی مانگوں کو لے کر زور داراحتجاجی مظاہرہ کیا ہے ۔احتجاجی ملازمین کہنا تھا کہ ان کی تنخواہ21ماہ سے رکی پڑی ہے جس کے نتیجے میں یہ ملازمین طرح طرح کے مشکلات کا سامنا کر رہے ہیں ۔احتجاجیوںنے ہاتھوں میں بینر اور پلے کارڑ اٹھائے تھے ۔انہوں نے بتایا ہم محکمہ کے مستقل ملازمین ہیں لیکن ہمارے ساتھ کیجول ملازمین سے بُرا برتاو کیا جا رہا ہے۔احتجاجی سپر وئزوں کا کہنا تھا وہ بچوں کی فلاح بہبودکے لئے کام کر رہی ہیں تاہم ہمارے اپنے بچے مشکلات سے دو چار ہو رہے ہیں ۔انہوں نے اس حوالے سے ایل جی انتظامیہ اورمحکمے کے اعلیٰ حکام سے مداخلت کی اپیل کی ہے۔اس دوران محکمہ صحت میں عارضی بنیادوں پر کام کرنے والے ڈرائیوروں، جز وقتی خاکروبوں اور ہلپروں نے بھی پریس کالونی میں اپنے مطالبات کے حق میں احتجاج درج کیا۔احتجاجی 'منیمم ویجز ایکٹ لاگو کرو'، 'غریبوں کے ساتھ انصاف کرو' وغیرہ جیسے نعرے لگا رہے تھے۔احتجاجیوں نے بتایا کہ ہمارے ساتھ 1994 سے مسلسل نا انصافی ہو رہی ہے۔انہوں نے کہاکہ 'ہم محکمہ صحت میں عارضی بنیادوں پر سال 1994 سے چوبیس گھنٹے اپنے فرائض انجام دے رہے ہیں خواہ وہ ڈرائیور ہیں، خاکروب ہیں یا ہلپر ہیں لیکن ہمارے ساتھ آج تک انصاف نہیں کیا گیا'۔انہوں نے کہا کہ اگر منیمم ویجز ایکٹ لاگو نہیں کیا گیا تو ہم اپنے بچوں کے ساتھ اپنے اپنے ہسپتالوں میں بھوک ہڑتال پر بیٹھیں گے۔احتجاجیوں نے لیفٹیننٹ گورنر منوج سنہا سے مداخلت کرنے کی اپیل کی۔