تازہ ترین

جموں میں صحت عامہ کانظام ٹھپ

ڈاکٹر فاروق نے مرکزی وزیر صحت کے ساتھ معاملہ اُٹھایا

تاریخ    29 ستمبر 2020 (00 : 02 AM)   


جموں// نیشنل کانفرنس صدر اور رکن پارلیمنٹ ڈاکٹر فاروق عبداللہ نے جموں خطے میں کوروناوائرس کے معاملوں میں اُچھال آنے کے بیچ صحت عامہ شعبہ کے تقریباًٹھپ ہوجانے اور اسپتالوں میں اکسیجن اوروینٹی لیٹروں کی کمی کامعاملہ سوموار کو مرکزی وزیرصحت ڈاکٹر ہرش وردھن کے ساتھ اُٹھایا۔ڈاکٹر فاروق عبداللہ نے ٹیلی فون پر مرکزی وزیر صحت کو بتایا کہ لوگوں میں خوف ہے اور وہ معتبر صحت نظام کی غیرموجودگی میں خود کو غیرمحفوظ سمجھتے ہیں ۔انہوں نے تفصیل کے ساتھ مرکزی وزیرکوبتایا کہ وباء سے متاثر مریضوں کیلئے اسپتالوں میں بستروں کی گنجائش کم ہے اور بحرانی صورتحال میں حکومت عارضی اسپتال قائم کرنے میں ناکام ہوئی ہے ۔انہوں نے کہا کہ اس طرح سے کورونا کے خلاف جنگ متاثر ہوگی اور لوگوں میں عدم تحفظ پیداہوگاجنہیں اس بات کا علم نہیں ہے کہ مستقبل میں کیا صورتحال ہوگی ۔ مرکزی وزیرصحت نے ڈاکٹر فاروق نے یقین دلایا کہ جموں کے اسپتالوں میں ڈھانچے کو مضبوط بنانے کیلئے ہر قسم کے ضروری اقدام کئے جائیں گے ۔انہوں نے رکن پارلیمان کو سرینگرمیں حالات کا مقابلہ کرنے کیلئے کئے گئے اقدامات سے بھی آگاہ کیا۔ڈاکٹر فاروق نے مرکزی وزیرصحت پرزوردیا کہ جموں کے اسپتالوں میں بلا خلل میڈیکل اکسیجن کی سپلائی کویقینی بنایا جائے اور کووِڈاسپتالوں میں بستروں کی گنجائش میں اضافہ کرنے کے ممکنات کو تلاش کیاجائے ۔