تازہ ترین

عالمی یوم سیاحت | ڈل جھیل کو کشمیر کی شناخت قرار | نہرو پارک میں تقریب ، شکارادوڑ اور موٹر بوٹ آبی کھیل پیش

تاریخ    28 ستمبر 2020 (30 : 12 AM)   


نیوز ڈیسک
سرینگر//’’عالمی یوم سیاحت‘‘ کے موقعہ پر صوبہ کشمیر میں کووِڈ ۔19 پروٹوکال پر عمل پیرا رہ کر کئی تقریبات کا اِنعقادکیا گیا۔ اِس سلسلے میں محکمہ سیاحت کشمیر کی جانب سے سب بڑی تقریب نہرو پارک میںمنعقد کی گئی جس کے دوران شکارا دوڑ ، کیانگ ، کنوئینگ ، کینو سلیلم ، کینو سپرنٹ اور موٹر بوٹ آبی کھیل پیش کئے گئے ۔ سیکرٹری امور نوجوان و کھیل کود اور سیاحت سرمد حفیظ نے تقریب کی صدارت کی۔اس موقعہ پر اپنے خیالات کا اِظہار کرتے ہوئے سیکرٹری سیاحت نے کہا کہ محکمہ آنے والے دِنوں میں اس شعبے کی ترقی کیلئے کئی بڑے اِقدامات اُٹھا رہا ہے۔ انہوں نے جھیل ڈل کو کشمیر سیاحت کی شناخت قرار دیا۔ موجودہ کووِڈ بحران کا ذکر کرتے ہوئے اُنہوں نے کہا کہ آنے والے دِنوں میں ایس او پیز پر عمل پیرا رہنے اور دیگر متعلقہ سہولیات دستیاب رکھنا ذمہ دارسیاحتی سرگرمیوں کے لئے لازمی ہے۔ناظم سیاحت کشمیر نثار احمد وانی نے بھی اِس موقعہ پر اَپنے خیالات اِظہار کیا۔ اِس موقعہ پر جوائنٹ ڈائریکٹر سیاحت کشمیر تبسم شفاعت کاملی اور محکمہ کے دیگر اعلیٰ افسران، ڈیزاسٹر منیجمنٹ محکمہ، جموںوکشمیر کلچرل اکیڈیمی ، این ڈی آر ایف، ایس ڈی آر ایف ، واٹر سپورٹس ایسو سی ایشن کے نمائند ے موجود تھے۔اس موقعہ پر صدر ٹریول ایجنٹ ایسوسی ایشن آف کشمیر (ٹی اے اے کے) فاروق اے کوتھو، ہاؤس بوٹ مالکان ایسوسی ایشن اور شکارا ایسوسی ایشن کے نمائندے اور دیگر موجود اَفراد نے اپنے خیالا ت کا اِظہار کیا۔اس پروگرام میں معروف فنکاروں کی کشمیری موسیقی اور دو نوجوان کی آبی کھیلوں کے سرفنگ ایونٹ کی پیش کش دلچسپی اور کشش کا باعث بنا ۔اس سے قبل سیکرٹری سیاحت نے  ماؤنٹین بائیکروں کو ٹی آر سی سرینگر سے دودھ پتھری تک روانہ کیا۔اس موقعہ پر سیکرٹری سیاحت نے کہا کہ محکمہ شراکت داروں کے ساتھ مل کر ایسی سرگرمیاں منظم کرنے کا منصوبہ بنا رہا ہے جس کیلئے کشمیر مشہور ہے۔ انہوں نے کہاکہ کووِڈ ۔19کی وجہ سے عالمی سطح پر سیاحت کی تجارت پوری دنیا میں پریشانی کا شکار ہے لیکن اب وقت آگیا ہے کہ ہمیں اس کے ساتھ رہنا سیکھنا چاہئے اور ایسی سرگرمیاں انجام دینا چاہیں جو صحت مند اور محفوظ ہیں اور آج ہم اس کی شروعات کر رہے ہیں۔عالمی سیاحتی دن منانے کی اطلاعات سونمرگ، یوسمرگ ، پہلگام اور گلمرگ اور سیاحتی مقامات سے موصول ہوئی ہیں۔