سانبورہ پلوامہ میں خونین جھڑپ | 2جنگجو جاں بحق، 2فوجی زخمی

آپریشن صبح تک کیلئے ملتوی، گائوں میں تشدد آمیز جھڑپیں،ضلع میں انٹر نیٹ سہولیات معطل

تاریخ    28 ستمبر 2020 (30 : 12 AM)   


سید اعجاز
پلوامہ// جنوبی کشمیر کے سانبورہ پلوامہ گائوں میںخونریز تصادم آرائی کے دوران 2 جنگجو جاں بحق جبکہ 2 فوجی اہلکار زخمی ہوئے۔ ضلع میں جھڑپ کیساتھ ہی انٹر نیٹ سروس بند کردی گئی۔فورسز نے آپریشن پیر کی صبح تک ملتوی کردیا ۔مسلح تصادم آرائی کے دوران تشدد آمیز جھڑپیں بھی ہوئیں۔

مسلح تصادم

پولیس کا کہنا ہے کہ سانبورہ پلوامہ کے کمار محلہ میں جنگجوئوں کی موجودگی کی اطلاع ملنے کے بعد 50آر آر اور سی آر پی ایف کی مدد حاصل کی گئی جس کے بعد یہاں سہ پہر قریب 4بجے محاصرہ کیا گیا۔ جونہی محاصرہ کے دوران ممکنہ جگہ کے نزدیک جانے کی  فورسز نے کوشش کی تو جنگجوئوں نے فورسز پارٹی کو نشانہ بنانے کی غرض سے پہلے گرینیڈ پھینکا اور اسکے ساتھ ہی فائرنگ کی، جس کے نتیجے میں فوج کے 2 اہلکار شدید زخمی ہوئے،جنہیں فوری طور پر بادامی باغ فوجی اسپتال منتقل کردیا گیا۔اسکے بعد فائرنگ کا سلسلہ رک گیا اور فورسز کی مزید کمک طلب کی گئی۔ اسکے بعد جونہی دوبارہ آپریشن کیا گیا تو شام چھ بجے کے بعد فائرنگ شروع ہوئی جس کے دوران پہلے ایک جنگجو کی ہلاکت ہوئی اور اسکے بعد شام دیر گئے 8بجے دو زوردار دھماکے ہوئے اور دوسرے جنگجو کی ہلاکت ہوئی۔سانبورہ کے کمار محلہ کیساتھ ساتھ دیگر بستیوں کو بھی گھیرے میں لیا گیا ہے اور آپریشن کو پیر کی صبح تک ملتوی کیا گیا۔پولیس کی جانب سے جنگجوئوں کی ہلاکت کے بارے میں کوئی بات نہیں کی گئی ہے ۔ پولیس نے بتایا کہ مہلوک جنگجوئوں کے بارے میں ابھی کچھ نہیں کہا جاسکتا کیونکہ آپریشن ختم ہونے کے بعد ہی انکی نشاندہی کی جاسکتی ہے۔ مقامی ذرائع سے معلوم ہوا ہے کہ فائرنگ کے تبادلے کے دوران بشیر احمد سمیت دو شہریوں کے رہائشی مکان تباہ ہوگئے ہیں۔انہوں نے کہا کہ بستی میں فورسز نے روشنی کا انتظام کیا ہے اور علاقے میں خوف و ہراس ہے۔مقامی لوگوں کے مطابق مسلح تصادم آرائی  کے دوران نوجوانوں نے آپریشن میں خلل ڈالنے کی کوشش کی اور فورسز پر پتھرائو کیا جس کے جواب میں فورسز نے آنسو گیس کے گولے پھینکے اور پیلٹ کا استعمال بھی کیا۔ تشدد آمیز جھڑپیں کافی دیر تک جاری رہیں اور لوگوں کا کہنا ہے کہ اس دوران کئی افراد کو چوٹیں آئیں۔
 
 

 سانبہ میں دراندازی کی کوشش | راجوری سیکٹر میں گولہ باری کا تبادلہ

سمت بھارگو

راجوری// جموں و کشمیر کے ضلع سانبہ میں بین الاقوامی سرحد کی حفاظت پر مامورسرحدی حفاظتی فورس (بی ایس ایف) نے بھاری مسلح جنگجوئوں کی جانب سے سرحد کے اس پار دراندازی کرنے کی کوشش کو ناکام بنانے کا دعویٰ کیا ہے۔بی ایس ایف ترجمان نے بتایا کہ 26 اور 27 ستمبر کی درمیانی رات بی ایس ایف جوانوںنے سانبہ سیکٹر میں پاکستانی حدود میں پانچ ملی ٹینٹوں کو باڑ کے نزدیک آتے ہوئے دیکھا۔ترجمان کے مطابق بھاری مسلح جنگجوئوں کے اس گروپ نے تاریکی کا فائدہ اٹھاتے ہوئے سرحد کے اس پار داخل ہونے کی کوشش کی لیکن جوابی فائرنگ کے بعد واپس چلا گیا۔ادھراتوار کی شام پاکستانی فوج نے راجوری ضلع کے کیری سیکٹر میں گولہ باری کی ۔پولیس عہدیداروں نے کشمیرعظمیٰ کو بتایا کہ اتوار کی شام 6 بجکر 15 منٹ پر پاکستانی فوج نے سیز فائر کی خلاف ورزی کی اور راجوری کے کیری سیکٹرمیں بلا اشتعال فائرنگ اور گولہ باری کی گئی ۔پولیس اہلکاروں نے بتایا’’کیری سیکٹر میں ایل او سی کے علاقوں بشمول بھارت گالامیں گولہ باری کی گئی اور بھارتی فوج بھی بھرپور جواب دے رہی ہے‘‘۔انہوں نے مزید کہا کہ ایل او سی کے پار سے مارٹر گولے گر رہے ہیں۔