تازہ ترین

۔20تازہ اموات،کل تعداد1125 | 1217متاثرین میں جموں کے720،مجموعی تعداد 71,049

تاریخ    27 ستمبر 2020 (00 : 02 AM)   


پرویز احمد
 سرینگر // جموں و کشمیر میں کورونا وائرس سے مزید 20متاثرین فوت ہوگئے۔ مہلوکین کی مجموعی تعداد 1125ہوگئی جن میں سے 819 کشمیر جبکہ جموں میں مرنے والوں کی تعداد 300کا ہندسہ پار کرکے 306ہوگئی ہے۔ سنیچر کو30سفر کرنے والوں سمیت مزید 1217افراد کی رپورٹیں مثبت آئیں۔ متاثرین کی مجموعی تعداد 71ہزار کا ہندسہ پار کرکے 71049ہوگئی۔ ان میں سے 26834جموں جبکہ کشمیر میں یہ تعداد44215ہوگئی ۔ تازہ 1217 متاثرین میں سے 497کشمیر جبکہ 720 افراد جموں میں متاثر ہوئے ۔ کشمیر کے 497متاثرین میں سے 180 سرینگر، 47بڈگام، 46 بارہمولہ، 58پلوامہ، 28اننت ناگ، 19 بانڈی پورہ، 73کپوارہ، 26 گاندربل،15کولگام اور5شوپیان سے تعلق رکھتے ہیں۔جموں کے 720متاثرین میں سے 301ضلع جموں،63راجوری، 41 ادھمپور، 41 کٹھوعہ،88ڈوڈہ، 21سانبہ، 64 پونچھ، 16رام بن،32ریاسی اور 53کشتواڑ سے تعلق رکھتے ہیں۔ 

مزید20اموات

 جموں و کشمیر میں پچھلے 24گھنٹوں کے دوران 20متاثرین کورونا وائرس سے فوت ہوگئے۔ مرنے والوں میں سے 8 کشمیر جبکہ 12جموں میں فوت ہوگئے۔ کشمیر میں فوت ہونے والے 8افراد میں سے 4سرینگر، ایک بڈگام، 2 بانڈی پورہ اور ایک گاندربل میں فوت ہوا ہے۔ سرینگر میں تعینات محکمہ صحت کے ایک سینئر ڈاکٹر نے بتایا ’’ہمدانیہ کالونی بمنہ کی 60سالہ خاتون، کادی کدل راجوری کدل کی رہنے والی 75 سالہ معمر خاتون،  بٹہ کدل کا 75سالہ معمر شخص اور ہفت چنار سے تعلق رکھنے والی65سالہ شخص کورونا وائرس سے فوت ہوگیا ‘‘۔سینئر ڈاکٹر نے بتایا کہ مرنے والوں میں 2صدر اسپتال، ایک سکمز اور ایک سی ڈی اسپتال میں فوت ہوگیا ۔بانڈی پورہ میں تعینات محکمہ صحت کے ایک سینئر ڈاکٹر نے بتایا ’’ بانڈی پورہ میں فوت ہونے والے 2متاثرین میں سے شادی پورہ سنبل کا 65سالہ شخص اور وٹہ پورہ بانڈی پورہ سے تعلق رکھنے والا 74سالہ شخص کورونا وائرس سے فوت ہوگیا ‘‘۔سینئر ڈاکٹر نے بتایا کہ ان میں سے ایک صدر اسپتال جبکہ دوسرا ضلع اسپتال بانڈی پورہ میں فوت ہوگیا ۔بڈگام میں تعینات محکمہ صحت کے ایک سینئر ڈاکٹر نے بتایا ’’ واگہ پورہ سوئی بگ سے تعلق رکھنے والا 60سالہ شخص صدر اسپتال سرینگر میں کورونا وائرس سے فوت ہوگیا ۔ گاندربل میں تعینات محکمہ صحت کے ایک سینئر ڈاکٹر نے بتایا ’’ چیک ددرہامہ گاندربل سے تعلق رکھنے والا70سالہ شخص کورونا وائرس سے فوت ہوگیا ہے۔جموں میں کورونا وائرس سے مزید 12افراد فوت ہوگئے ہیں جن میں سے 5ضلع جموں، 2ادھمپور، 2پونچھ، ایک کٹھوعہ، ایک ڈوڈہ اور ایک کشتواڑ سے تعلق رکھتے ہیں۔ گورنمنٹ میڈیکل کالج جموں میں تعینات محکمہ صحت کے ایک سینئر ڈاکٹر نے بتایا ’’جگتی نگروٹہ سے تعلق رکھنے والا 60سالہ شخص، جانی پور سے تعلق رکھنے والا 23سالہ نوجوان، چیک پرتاپ سنگھ سے تعلق رکھنے والی 55سالہ خاتون ،حزوری باغ بہری سے تعلق رکھنے والا 85سالہ معمرشخص کورونا وائرس سے فوت ہوگیا ۔ سینئر ڈاکٹر نے بتایا کہ ان سبھی افراد کی موت جی ایم سی اسپتال جموں میں ہوئی ہے۔ 

حکومتی بیان

حکومت کی طرف سے جاری کئے گئے بلیٹن میں بتایا گیا ہے کہ نوول کورونا وائرس کے71,049معاملات سامنے آئے ہیں جن میں سے18,430سرگرم معاملات ہیں ۔ اَب تک51,494اَفراد صحتیاب ہوئے ہیں ۔جموں وکشمیر میں کوروناوائرس سے مرنے والوں کی مجموعی تعداد1,125تک پہنچ گئی ،جن میں سے 819کا تعلق کشمیر صوبہ سے اور306کاتعلق جموں صوبہ سے ہیں۔اِس سنیچر کو مزید1,937شفایاب ہوئے ہیںجن میںجموں صوبے کے1,154اور کشمیر صوبے کے 783اَفراد شامل ہیں ، جن کو جموں و کشمیر کے مختلف ہسپتالوں سے رُخصت کیا گیا۔بلیٹن میں مزید کہا گیا ہے کہ اَب تک 15,39,284ٹیسٹوں کے نتائج دستیاب ہوئے ہیں جن میں سے  26؍ستمبر2020ء کی شام تک 14,68,235نمونوں کی رِپورٹ منفی پائی گئی ہے ۔علاوہ ازیں اَب تک5,66,602افراد کو نگرانی میں رکھا گیا ہے جن کا سفر ی پس منظر ہے اور جو مشتبہ معاملات کے رابطے میں آئے ہیں۔ اِن میں16,811اَفراد کو ہوم قرنطین میں رکھا گیا ہے جس میں سرکار کی طرف سے چلائے جارہے قرنطین مراکز بھی شامل ہیں ۔18,430  اَفراد کوآئیسولیشن میں رکھا گیا ہے جبکہ50,232اَفراد کو گھروں میں نگرانی میں رکھا گیا ہے۔اِسی طرح بلیٹن کے مطاب4,80,004اَفرادنے 28روزہ نگرانی مدت پوری کی ہے۔

مزید 1937صحتیاب

 جموں و کشمیر میں سنیچر کو مزید 1937متاثرین صحتیاب ہونے کے بعد اپنے گھروں کو لوٹ گئے ہیں۔ اسطرح صحتیاب ہونے والے متاثرین کی مجموعی تعداد 51ہزار494ہوگئی ہے۔ سنیچر کو صحتیاب ہونے والے 1937میں سے 783کشمیر جبکہ 1154جموں میں صحتیاب ہوگئے ۔ کشمیر میں صحتیاب ہونے والوں میں سے 200سرینگر، 209بڈگام،
20بارہمولہ، 67پلوامہ، 18اننت ناگ، 73بانڈی پورہ، 103کپوارہ، 80گاندربل، 10کولگام اور3شوپیان سے تعلق رکھتے ہیں۔ جموں صوبے میں صحتیاب ہونے والے 755ضلع جموں، 39راجوری، 92ادھمپور، 59کٹھوعہ، 82ڈوڈہ، 78سانبہ، 26پونچھ، 15رام بن اور 8کشتواڑ میں صحتیاب ہوئے ہیں۔ 
 
 

ویکسین آنے سے قبل دنیا بھر میں

اموات کی تعداد 20لاکھ تک پہنچنے کا خدشہ

مانٹیرنگ ڈیسک

سرینگر/ /عالمی ادارہ صحت نے خبردار کیا ہے کہ مستقبل میں مؤثر ویکسین کے وسیع پیمانے پر استعمال سے قبل دنیا بھر میں کورونا وائرس سے 20 لاکھ اموات ہو سکتی ہیں۔ عالمی ادارہ صحت کے ہنگامی صورتحال کے سربراہ ڈاکٹر مائیک ریان کا کہنا ہے کہ اگر اس بارے میں عالمی سطح پر ٹھوس اقدامات نہ اٹھائے گئے تو ہلاکتوں کی یہ تعداد اس سے بھی زیادہ ہوسکتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ  شمالی کرہ ارض کے ممالک میں سردی کا موسم نزدیک آرہا ہے اور ان ممالک میں کورونا کے کیسز میں اضافہ دیکھا جارہا ہے۔انہوں نے کہا کہ جن ممالک میں اکتوبر سے سردی کا موسم شروع ہونے جارہا ہے وہاں کورونا کے معاملات میں دوبارہ اضافہ ہورہا ہے جو انتہائی تشویشناک امر ہے۔انکا کہنا تھا کہ اب تک دنیا بھر میں وائرس سے قریب 10 لاکھ افرادفوت ہوئے ہیں۔انکا کہنا تھا کہ اب تک دنیا بھر میں تین کروڑ 20 لاکھ افراد اس سے متاثر ہو چکے ہیں۔یورپ میں متاثرین کی بڑھتی ہوئی تعدادکا حوالہ دیتے ہوئے ڈاکٹر ریان کا کہنا تھا کہ مجموعی طور پر اس بڑے خطے میں ہم بیماری کو ایک مرتبہ پھر بڑھتا ہوا دیکھ رہے ہیں ،جو پریشان کن ہے۔'انہوں نے یورپی ممالک پر زور دیا کہ وہ خود جاننے کی کوشش کریں کہ کیاانہوں نے لاک ڈاؤن جیسی پابندیوں سے بچنے کیلئے تمام حفاظتی اقدامات، ٹیسٹنگ اور ٹریسنگ، قرنطینہ اور سماجی دوری جیسی احتیاطی تدابیر کو ملحوظ خاطر رکھا ہے۔ڈاکٹر ریان نے جنیوا میں عالمی ادارہ صحت کے صدر دفتر میں رپورٹرز سے بات کرتے ہوئے کہا کہ ' لاک ڈاؤن تقریباً آخر ی حل ہوتا ہے اور یہ سوچنا کہ ہم دوبارہ ستمبر میں لاک ڈاؤن کی باتیں کر رہے ہیں، ایک بہت ہی بڑا اور افسوسناک خیال ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ وبا کے علاج میں بہتری کے ساتھ ساتھ اموات کی شرح میں کمی آ رہی ہے لیکن اچھا علاج اور ایک مؤثر ویکسین شاید ان اموات کو 20 لاکھ تک پہنچنے سے روکنے کیلئے کافی نہ ہوں‘‘۔
 
 
 

لداخ میں مزید 2ہلاکتیں

نیوز ڈیسک

سرینگر/ لداخ میں کورنا وائرس سے مزید2 افرادفوت ہونے کے ساتھ ہی یہاںمرنے والوں کی تعداد 56تک پہنچ گئی ہے۔ سنیچر کو مزید 56افراد کی رپورٹیں مثبت آئیں یوں متاثرین کی مجموعی تعداد 4025ہوگئی ہے۔ لداخ میں سنیچرکونئے 56مثبت معاملات سامنے آئے جس کے ساتھ ہی متاثرین کی تعداد 4025تک پہنچ چکی ہے۔صحت یاب ہونے والے افراد کی تعداد میں بھی اضافہ ہوا ہے۔ اس وقت لداخ میں 998کیس ہی فعال ہے۔ تازہ تین اموات کرگل میں ریکارڈ کی گئی ںاور وہاں مرنے والوں کی تعداد 33تک پہنچ گئی ہے۔