تازہ ترین

یوتھ کانگریس کا کسان بل کے خلاف احتجاج

تاریخ    22 ستمبر 2020 (00 : 02 AM)   


جموں //یوتھ کانگریس نے پارلیمنٹ میں پاس کی گئی کسان بل کے خلاف احتجاج کرتے ہوئے اسے کسان مخالف قرار دیا۔اس سلسلہ میں یوتھ کانگریس کے کارکنوں نے ایک احتجاج کیا  اور اس کوملک کے کسانوں کے خلاف قرار دیا ۔پریس کلب جموں میں یوتھ کانگریس کے درجنوں کارکناں اکٹھا ہوئے اور بی جے پی کی قیادت والی مرکزی سرکار کے خلاف نعرے بلند کئے۔مظاہرین نے کہا کہ یہ بل کسانوںکے خلاف ہے ،جس سے کسانوں کوبڑی بڑی کمپنیوں کے ہاتھوں استحصال کیلئے چھوڑا گیا ہے۔ مظاہرین کی قیادت  یوتھ کانگریس کے ریاستی صدر اودے بھانو چب کر رہے تھے،مظاہرین کاکہناہے کہ مجوزہ بل غلط ارادے سے پاس کی گئی اور وہ اسکی مخالفت کرتے ہیں ۔انہوں نے مرکزی سرکار سے اس بل کو واپس لینے کا مطالبہ کیا کیونکہ یہ ملک کے زمینداروں کے خلاف ہیں۔مظاہرین نے کہا کہ فارم کے بل وفاقی تعاون پر مبنی جذبے کے منافی ہیں اورکووڈ-19 کے دوران ان بلوں کو لانے کی ضرورت پر بھی سوال اٹھایا گیا ہے۔مظاہرین نے کہا کہ کسان مخالف بلوں کی منظوری سے ملک بھر میں غم و غصہ پھیل گیا ہے،جو کم سے کم سپورٹ پرائس (ایم ایس پی) کی کاروائیاں ختم کرنے کے ارادے کے ساتھ لایا گیا ہے اور یہ کاشتکاری کے شعبے کے معاشی مفادات کے منافی ہے۔ یوتھ کانگریس کے رہنماؤں نے پارلیمنٹ کے اجلاس 2020 میں منظور شدہ جڑواں فارم بلوں کو فوری طور پر واپس لینے کا مطالبہ کیا اور دھمکی دی کہ اگر جلد از جلد بلوں کوواپس نہ کیا گیا تو وہ یو ٹی میں بڑے پیمانے پر احتجاج کریں گے۔ انڈین یوتھ کانگریس 22 ستمبر 2020 کو ملک کے بے روزگار نوجوانوں اور کسانوں کے حقوق کے لئے "پارلیمنٹ گھیرائو" کا بھی انعقاد کرنے والی ہے۔ اودے چیب نے جموں و کشمیر کے نوجوانوں کو بھی پارلیمنٹ گھیرائو میں شمولیت کرنے کی تاکید کی۔مظاہرین میں  جے کے پردیش یوتھ کانگریس کے نائب صدر اعجاز چودھری ،رکی ڈلوترہ، مدثر چودھری ،رنجیت چوپڑہ، رنجوت سنگھ ، بریندر پرتاپ، جگ پریت کور، نیرج چودھری،ساہل سگوترہ، جگ پریت سنگھ ، سنی جاٹ، ہیپی رندھاوا ،سنی پریہا رو  دیگران بھی موجود تھے ۔