کمپیوٹر کے بنیادی حصے سائینس و ٹیکنالوجی

تاریخ    14 ستمبر 2020 (30 : 12 AM)   


شفیق احمد آئمی
کلر مانیٹرز کی اقسام  Types of Colour Monitor 
کلر مانیٹر کی لگ بھگ چار اقسام ابھی تک عام طور سے استعمال ہوتی ہیںاور ہوسکتا ہے کہ مستقبل میں اور زیادہ بھی نئے نئے مانیٹر بازار میں آجائیں۔ 
1 ) سی جی اے  CGA :
یہ کلر گرافک ایڈاپٹر Colour Grafhic Adapter  کا مخفف یعنی شارٹ فام ہے۔ اِس قسم کے ایڈاپٹر والے مانیٹر کی اِسکرین پر الفاظ ، ہندسے اور تصاویر چار مختلف رنگوں میں نظر آتے ہیں۔
2 ) ای جی اے  EGA :
یہ ’’انہانسڈ گرافک ایڈاپٹر‘‘ Enhanced Graphic Adapter کا مخفف یعنی شارٹ فارم ہے۔اِس قسم کے ایڈاپٹر والے مانیٹر کی اِسکرین پر الفاظ ، ہندسے اور تصاویر 16 مختلف رنگوں میں نظر آتے ہیں۔ 
3 ) وی جی اے  VGA :
یہ ’’ویڈیو گرافک ایڈاپٹر‘‘ Video Graphic Adapter کا مخفف یعنی شارٹ فارم ہے۔ اِس قسم کے ایڈاپٹر والے مانیٹر کی اِسکرین پر الفاظ ، ہندست اور تصاویر 256 رنگوں میں نظر آتے ہیں ۔گھریلواستعمال اور کاروباری استعمال کیلئے ’’وی جی اے‘‘ مانیٹر موزوں ہوتا ہے ۔ 
4 ) ایس وی جی اے  SVGA :
یہ سوپر ویڈیو گرافک ایڈاپٹر  Super Video Graphic Adapter  کا مخفف ہے ۔اِس قسم کے ایڈاپٹر والے مانیٹر کی اِسکرین پر الفاظ ، ہندسے اور تصاویر 16 ملین رنگوں میں نظر آتے ہیں۔ 
 ماؤس  Mouse 
ہمارے کمپیوٹر میں ’’ماؤس‘‘ انتہائی تیز رفتار اِن پُٹ ڈیوائس ہے۔ اِسے GUL ٰیعنی  Graphical User Interface  پر مبنی پروگرامز میں استعمال کیا جاتا ہے ۔ مثلاً ’’ونڈوز‘‘ اور ’’مائیکرو سافٹ آفس‘‘ وغیرہ ۔ یہ ہاتھ میں پکڑ کر کام کرنے والا آلہ ہے ۔اِس کے دو بٹن ہوتے ہیں ایک دائیاں اور دوسرا بائیاں ۔ ماؤس لمبی تار کے ذریعے سے ’’سی پی یو‘‘ سے جڑا ہوتا ہے۔ اُس کے نیچے پہلے ایک بال Ballلگا ہوتا تھا جس سے اِسکرین پر تیر کا نشان حرکت کرتا ہوا نظر آتا ہے ۔ اِس کے علاوہ آج کا ’’آپٹیکل‘‘ اور ’’وائر لیس‘‘ ماؤس کا ایجاد ہوگئے ہیں اور اُن کا استعمال زیادہ ہوگیا ہے۔ ’’آپٹیکل‘‘ ماؤس میں بال استعمال نہیں ہوتا بلکہ اُس کے نیچے سُرخ رنگ کی لائٹ ہوتی ہے ۔ ’’وائرلیس‘‘ ماؤس میں وائر نہیں ہوتا ہے بلکہ اُس کے ساتھ ایک ’’سینسر‘‘ ملتا ہے جس کو ’’سی پی یو‘‘ میں ماؤس پورٹ پر لگاتے ہیں اور پھر ماؤس کو دور رکھ کر استعمال کیا جاسکتا ہے ۔ماؤص کو ایک ہموار پٹی پر رکھا جاتا ہے جسے ’’ماؤس پیڈ‘‘ کہتے ہیں۔ ماؤس کی چار قسمیں آتی ہیں۔ 1 ) اِسٹینڈرڈ ماؤس، 2 ) اِسکرول ماؤس، 3 ) وائر لیس ماؤس، 4 ) آپٹیکل ماؤس۔  
کی بورڈ (تختۂ کلید) Keyboard 
اب ہم پہلے ’’کی بورڈ‘‘ کے بارے میں کچھ معلومات حاصل کرلیں پھر آگے بڑھیں گے۔’’کی بورڈ‘‘ یعنی تختۂ کلید ایک ایسا آلہ ہے جس کے ذریعہ کمپیوٹر کو ضروری احکامات اور ہدایات دی جاتی ہیں۔کمپیوٹر کا ’’کی بورڈ‘‘ ٹائپ رائٹر کے ’’کی بورڈ‘‘ سے تقریباً ملتا جلتا ہوتا ہے ۔ بس فرق اتنا ہے کہ کمپیوٹر کے ’’کی بورڈ‘‘ میں کچھ ’’کی‘‘ (کلید،بٹن) کا اضافہ کر دیا گیا ہے ۔ اب ہم ’’کی یا کلید‘‘ نہیں لکھیں گے بلکہ اُس کی جگہ ’’بٹن‘‘ لکھیں گے تاکہ سمجھنے میں آسانی ہو۔
1 ) ٹائپ رائٹنگ بٹن : 
’’کی بورڈ‘‘ میں یہ وہ تمام بٹن ہیں جن سے ٹائپ کیا جاتا ہے ۔اِن بٹنوں پر ’’حرف‘‘ (Alphabete ) اور ’’اعداد‘‘ (Numbers ) اور دوسرے اشارے (Punctuain Marks ) ہوتے ہیں۔جن بٹن پر انگریزی کے ’’حرف‘‘ یعنی ’’الفابیٹ‘‘ لکھے ہوتے ہیں اُن سے ہم ’’حروف‘‘ لکھ سکتے ہیں اور ’’اعداد‘‘ کی بٹن سے ’’نمبر‘‘ لکھ سکتے ہیں۔اِس کے علاوہ ہم یہ ’’حروف‘‘ اور ’’اعداد‘‘ ہر زبان میں انہیں بٹنوں کے ذریعے لکھ سکتے ہیں لیکن اُس کے لئے شرط یہ ہے کہ ہم جس زبان میں لکھنا چاہتے ہیں تو اُس زبان کا ’’سافٹ ویئر‘‘ ہمیں اپنے کمپیوٹر میں ’’انسٹال ‘‘ کرنا پڑے گا۔
2 ) فنکشن بٹن : 
یہ تمام بٹن ’’کی بورڈ‘‘ کے اوپر ایک لائن میں ہوتی ہیںاور اِن پر F1 سے لیکر F12 تک لکھا ہوتا ہے۔یہ ’’فنکشن‘‘بٹن‘‘ ہیں۔اِن کے ذریعے ہم الگ الگ ’’سافٹ ویئر‘‘ کے مطابق مختلف کام (Option ) کر سکتے ہیں۔ مثال کے طور پر اگر آپ Dos پر کام کر رہے ہیں تو آپ کے ذریعے دی گئی ’’کمانڈ‘‘ کو دوبارہ ٹائپ کرنے کے لئے F3 بٹن کا استعمال کر سکتے ہیں۔ اگر آپ ’’اردو اِن پیج‘‘ چلا رہے ہیں تو F8 بٹن دبائیں گے تو ہمارا صفحہ دوسو 200 فیصد بڑا ہوجائے گا اور اگر ہم F7 بٹن دبائیں گے توہمارا صفحہ پھر سے نارمل سائز میں آجائے گا۔
3 )’’ایرو‘‘ کرسر بٹن :
 یہ چار بٹن ایک ساتھ ہمارے ’’کی بورڈ‘‘ کے دائیں طرف نیچے ہوتی ہیں اور اِس چاروں بٹن پر اوپر، نیچے، دائیں اور بائیںکے ’’تیر‘‘ کے نشان بنے ہوتے ہیں ۔ اِ ن چاروں بٹن کے ذریعے ہم ’’کرسر‘ ‘ کو اوپر، نیچے، دائیں، بائیں Up, Down, Left, Right کر سکتے ہیں۔اِ ن چار بٹن کے اوپر ’’کرسر‘‘ کو کنٹرول کرنے کے لئے مزید چار بٹن ہمارے ’’کی بورڈ‘‘ میں ہوتے ہیںاور اِن بٹن پر PageUp - PageDown, End, Home لکھا ہوتا ہے ۔ PageUp کا معنی ہے ’’صفحہ اوپر‘‘۔ہم جس صفحہ پر کام کررہے ہیں اُس سے پہلے کاصفحہ اگر ہمیں دیکھنا ہے تو ہمیں یہ بٹن دبانا پڑے گا ۔ جب اِس بٹن کو دبائیں گے پہلے والا صفحہ ہمارے سامنے آجائے گا۔ اِسی طرح PageDown بٹن کا استعمال اگلے صفہ کو دیکھنے کے لئے استعمال کرسکتے ہیں۔ Home بٹن کا استعمال ’’کرسر‘‘ صفحہ کے اوپر شروع میں لے جانے یا پھر سطر کے شروع میں لے جانے کے لئے دبانا پڑتا ہے۔ End بٹن جب ہم دبائیں گے تو ’’کرسر‘‘ ہماری دستاویز کے آخر میں یا سطر کے آخر میں چلا جائے گا۔ 
(مضمون جاری ہے ،اگلی قسط انشاء اللہ اگلی پیر کو شائع ہوگی)