تازہ ترین

سنڈے مارکیٹ ہنوزسنسان | منسلک افراد کا پیٹ پالنے کیلئے نیا کام ڈھونڈ نے پر مجبور

تاریخ    14 ستمبر 2020 (30 : 12 AM)   


نیوز ڈیسک
سرینگر//کووڈ19 لاک ڈاون کے بعد اگرچہ وادی میں مشروط کاروباری سرگرمیاں بحال ہوئی ہیں  تاہم سنڈ ے مارکیٹ گذشتہ چھ ماہ سے مسلسل بند ہے اور گزشتہ 20 برسوں میں سنڈے مارکیٹ بند رہنے کا یہ سب سے طویل وقفہ ہے۔ سنڈے مارکیٹ مسلسل بند رہنے کے نتیجے میں اس مارکیٹ سے جڑے ہزاروں افراد سخت پریشان ہیں اور حکام سے اپیل کرتے ہیں کہ مارکیٹ کو دوبارہ کھولنے کی اجازت دی جائے ۔ انہوں نے کہا کہ اہل خانہ کا پیٹ پالنے کیلئے وہ اب دوسرا کام ڈھونڈ نے پر مجبور ہو گئے ۔اتوار کو سجنے والا بازار وادی کا سب سے بڑا مارکیٹ ہے جس میں ہزاروں کی تعدادمیں چھاپڑیاں اور ریڈے لگائے جاتے ہیں اور اس سنڈے مارکیٹ میں ہزاروں کی تعداد میں لوگ آکر مختلف اشیاء کی خریداری کرتے تھے ،تاہم کووڈ 19کی وجہ سے وادی میں لاک ڈاون کے بعد اگرچہ تمام کاروباری سرگرمیاں شرائط کی بنیاد پر بحال ہوئی ہیں ،تاہم سنڈے مارکیٹ بند پڑ ا ہے جس کے نتیجے میں ڈلگیٹ کے ٹی آر سی زیروبرج سے لیکر لالچوک ، مہاراجہ بازار تک علاقہ گذشتہ 5ماہ سے سنسان پڑا ہے جس کے نتیجے میں سنڈے مارکیٹ سے جڑے ہزاروں افراد جن کا اس مارکیٹ سے کاروبار جڑا ہے سخت پریشان  ہیں اور اس بات پر حیران بھی ہیں کہ اگر دیگر کاروباری سرگرمیاں دوبارہ بحال کرنے کی اجازت دی گئی ہے تاہم سنڈے مارکیٹ کو کیوں بند کردیا گیا ہے ۔ انہوںنے اس ضمن میں ڈویژنل کمشنر کشمیر اور ضلع ترقیاتی کمشنر سرینگر سے اپیل کی ہے کہ وہ اس سلسلے میں ذاتی مداخلت کرکے سنڈے مارکیٹ کو دوبارہ کھولنے کی اجازت دی جائے ۔