آسٹریلیا نے انگلینڈ کو شکست دے کر پہلی پوزیشن حاصل کی

تاریخ    10 ستمبر 2020 (00 : 02 AM)   


 ساوتھمپٹن؍ مچل مارش کی ناقابل شکست 39 رنز کی اہم ترین اننگز کی بدولت آسٹریلیا نے منگل کو تیسرے اور آخری ٹی 20 میچ میں میزبان انگلینڈ کو پانچ وکٹ سے شکست دے کر ٹی ٹوئنٹی میں نمبر ایک کی رینکنگ دوبارہ حاصل کرلی۔آسٹریلیا نے تین میچوں کی ٹی ٹوئنٹی سیریز کے آخری میچ میں انگلینڈ کو پانچ وکٹوں سے شکست دے دی۔ اس فتح نے میزبان ٹیم کو سیریز کلین سوئپ کرنے سے روک دیا۔ یہ سلسلہ 2-1 پر ختم ہوا۔آسٹریلیا نے پہلے انگلش ٹیم کو چھ وکٹ پر 145رنز کے معمولی اسکور تک محدود کردیا۔ اس کے بعد انہوں نے 19.3 اوور میں پانچ وکٹ پر 146 رنز بنائے ۔ کپتان آرون فنچ اور شان مارش نے 39۔39 رنز کی کارآمد اننگز کھیلی۔ راشد نے تین وکٹیں حاصل کیں۔ انگلینڈ کی طرف سے بیریسٹو (55) نے نصف سنچری بنائی۔ زمپا نے دو وکٹیں حاصل کیں۔اس طرح آسٹریلیا نے انگلینڈ کو تیسرے اور آخری ٹی 20 انٹرنیشنل میچ میں 5 وکٹوں سے ہرا کر خود کو وائٹ واش سے بچا لیا۔ساؤتھمپٹن میں کھیلے گئے میچ میں آسٹریلیا نے ٹاس جیت کر انگلینڈ کو بیٹنگ کی دعوت دی۔ میزبان ٹیم کے جونی بیرسٹو نے سب سے زیادہ 55 رنز بنائے جبکہ جو ڈینلی29 اور معین علی 23 رنز بنا کر نمایاں رہے ۔انگلینڈ نے مقررہ اوورز میں 6 وکٹ پر 145 رنز بنائے ۔ آسٹریلوی بالر ایڈم زمپا نے 2 کھلاڑیوں کو آؤٹ کیا۔ہدف کے تعاقب میں آسٹریلیا نے اچھا آغاز کیا اور اس کی پہلی وکٹ 31 رنز پر گری۔آسٹریلیا کے کپتان ایرن فنچ نے سب سے زیادہ 39 رنز بنائے جبکہ مچل مارش بھی 39 رنز بنا کر ناٹ آؤٹ رہے ۔146 رنز کا ہدف آسٹریلیا نے 3 گیند قبل حاصل کر کے خود کو سیریز میں وائٹ واش ہونے سے بچا لیا۔انگلینڈ کی جانب سے عادل رشید نے 3 کھلاڑیوں کو آؤٹ کیا۔واضح رہے کہ تین میچوں کی سیریز کے ابتدائی 2 میچوں میں انگلنیڈ نے آسٹریلیا کو شکست دے کر سیریز پہلے ہی اپنے نام کرلی تھی۔آسٹریلیا نے ٹاس جیت کر میزبان انگلینڈ کو پہلے بیٹنگ کی دعوت دی تو ہیزل وڈ نے بینٹن کو 4 رنز پر آؤٹ کرکے ٹیم کو پہلی کامیابی دلائی۔انگلینڈ کے جونی بیرسٹو نے اچھی بیٹنگ کا مظاہرہ کیا اور ڈیوڈ ملان کے ساتھ مل کر اسکور کو 53 رنز تک پہنچایا تاہم ملان21 رنز کی اننگز کھیلنے کے بعد آؤٹ ہوئے ۔سیم بلنگز آؤٹ ہونے والے تیسرے بلے باز تھے جنہوں نے صرف 4 رنز بنائے ، جس کے بعد معین علی بیٹنگ کے لیے آئے جبکہ بیرسٹو 94 کے اسکور پر آؤٹ ہوئے اور اس دوران نصف سنچری بھی مکمل کی اور 55 رنز کی اننگز کھیل کر پویلین لوٹے ۔ میچ میں قیادت کرنے والے معین علی 119 کے اسکور پر 23 رنز بنا کر آؤٹ ہوئے ، کرس جارڈن 4 رنز بنا کر آؤٹ ہونے والے آخری بلے باز تھے ۔انگلینڈ نے مقررہ اوورز میں 6 وکٹوں کے نقصان پر 145 رنز بنائے ۔ ڈینلے 29 اور کیورن 2 رنز بنا کر ناٹ آؤٹ رہے جبکہ آسٹریلیا کی جانب سے زمپا نے سب سے زیادہ 2 وکٹیں حاصل کیں۔ آسٹریلیا نے ہدف کے تعاقب میں 31 رنز پر پہلی وکٹ گنوائی جبکہ اسٹوئن اور فنچ نے اسکور کو 70 رنز تک پہنچایا اور اسٹوئن 26 رنز بنا کر آؤٹ ہوئے ۔ گلین میکسویل اور اسمتھ ایک مرتبہ پھر کارکردگی دکھانے میں ناکام رہے اور بالترتیب 6 اور 3 رنز بنا کر آؤٹ ہوئے ۔مچل مارش نے ذمہ دارانہ بیٹنگ کا مظاہرہ کیا اور 39 رنز بنا کر ٹیم کو فتح سے ہمکنار کیا۔انگلینڈ کی جانب سے عادل رشید نے سب سے زیادہ 4 وکٹیں حاصل کیں۔ میچ میں ذمہ دارانہ بلے بازی کرنے پر مچل مارش کو بہترین کھلاڑی قرار دیا گیا جبکہ سیریز کے بہترین کھلاڑی کا ایوارڈ جوز بٹلر کو دیا گیا۔یو این آئی 

تازہ ترین